ہنری روپرٹ جیمز چارلووڈ (پیدائش: 19 دسمبر 1846ء ہورشام، سسیکس) | (وفات: 6 جون 1888ء سکاربورو، یارکشائر) 1877ء میں آسٹریلیا کے خلاف کھیلے گئے پہلے دو ٹیسٹ میچوں میں انگلینڈ کے لیے پیشہ ورانہ طور پر ابتدائی کھلاڑیوں میں شامل تھے اس نے 1865ء سے 1882ء تک سسیکس کے لیے اپنے جوہر آزمائے۔

ہنری چارلووڈ
Harry Charlwood.png
چارلووڈ 1876ء میں
ذاتی معلومات
مکمل نامہنری روپرٹ جیمز چارلووڈ
پیدائش19 دسمبر 1846(1846-12-19)
ہورشام، سسیکس، انگلینڈ
وفات6 جون 1888(1888-60-60) (عمر  41 سال)
سکاربرو، شمالی یارکشائر, یارکشائر, انگلینڈ
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیانڈر آرم گیند باز
تعلقاتچارلس چارل ووڈ (بھائی)
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 2)15 مارچ 1877  بمقابلہ  آسٹریلیا
آخری ٹیسٹ4 اپریل 1877  بمقابلہ  آسٹریلیا
ملکی کرکٹ
عرصہٹیمیں
1865–1882سسیکس کاؤنٹی کرکٹ کلب
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ فرسٹ کلاس
میچ 2 197
رنز بنائے 63 7,017
بیٹنگ اوسط 15.75 21.19
100s/50s 0/0 5/33
ٹاپ اسکور 36 155
گیندیں کرائیں 0 128
وکٹ 4
بولنگ اوسط 22.25
اننگز میں 5 وکٹ
میچ میں 10 وکٹ
بہترین بولنگ 2/12
کیچ/سٹمپ 0/– 89/–
ماخذ: CricketArchive، 26 دسمبر 2009

زندگی اور کیریئرترميم

ہیری چارلووڈ ایک ٹاپ آرڈر بلے باز اور کبھی کبھار لاب باؤلر تھے جو کلب کے لیے کمزور دور میں سسیکس کے سرکردہ کھلاڑیوں میں سے ایک تھے[1] فرسٹ کلاس کرکٹ میں ان کا سب سے زیادہ اسکور پلیئرز آف دی ساؤتھ کے لیے 1869ء میں جنٹلمین آف دی ساؤتھ کے خلاف 155 تھا۔ سسیکس کے لیے ان کا سب سے زیادہ اسکور 1876ء میں کینٹ کے خلاف فتح کے وقت 123 تھا، جب دونوں طرف سے کوئی بھی 50 تک نہیں پہنچا تھا۔ 1866ء اور 1880ء کے درمیان یونائیٹڈ ساؤتھ آف انگلینڈ الیون کے لیے بہت سے چھوٹے میچ کھیلے[2] چارلووڈ نے آسٹریلیا کے پہلے کرکٹ دورے پر جیمز للی وائٹ کی ٹیم کے ساتھ دورہ کیا جس میں ٹیسٹ میچ بھی شامل تھے۔ آسٹریلیا نے پہلے ٹیسٹ میں ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔ جب انگلینڈ نے بیٹنگ کی تو وہ ہیری جپ (ناٹ آؤٹ 16) کے ساتھ شامل ہوئے جب انگلینڈ کا 1 وکٹ پر 23 رنز تھا۔ اس نے اور جوپ نے دوسری وکٹ کے لیے 56 رنز بنائے جو کہ ٹیسٹ میں انگلینڈ کی پہلی 50 رنز کی شراکت ہے۔ چارلووڈ نے 36 رنز بنائے جو کہ میچ کی چوتھی سب سے بڑی اننگز تھی[3] انہوں نے دوسری اننگز میں مزید 13 کا اضافہ کیا، صرف کیریئر میں 50 رنز بنانے والے تیسرے ٹیسٹ بلے باز بننے سے محروم رہے۔ جب انگلش ٹیم نے پہلے ٹیسٹ سے عین قبل نیوزی لینڈ کا دورہ کیا تو چارلووڈ نے ویلنگٹن کے خلاف میچ میں سب سے زیادہ سکور بنانے کے لیے ایک مقامی جیولر کی طرف سے تیار کردہ گرین اسٹون لاکٹ جیتا۔ اس نے 56 رنز بنائے۔ اس میچ میں کوئی اور بھی 25 سے تجاوز نہیں کر سکا۔ اس نے پچھلے میچ میں بھی سب سے زیادہ اسکور کیا تھا، آکلینڈ کے خلاف، "سائنسی کرکٹ کا سب سے شاندار مظاہرہ" میں 65 رنز بنائے جب کہ کوئی اور 44 سے زیادہ نہیں بنا۔ للی وائٹ الیون نے دونوں میچ ایک اننگز سے جیتے . چارلووڈ اس دورے کے بعد کم کامیاب رہا، حس میں وہ شاذ و نادر ہی 50 تک پہنچ گیا[4]

کیرئیر کا اختتامترميم

اس کا فرسٹ کلاس کیریئر شادی کے بعد ختم ہو گیا اور وہ ڈربی شائر اور پھر اسکاربورو میں رہنے لگا، جہاں وہ بیل ہوٹل کا مالک مکان تھا[5]

انتقالترميم

ہنری روپرٹ جیمز چارلووڈ 6 جون، 1888ء سکاربورو، یارکشائر، میں محض 41 سال 170 دن کے عمر گزار پایا۔[6]

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم