جوتے

جوتا پاپوش کو کہتے ہیں یعنی انسان اپنے پاؤں کو اس سے ڈھانپتا ہے۔ مختلف ثقافتوں میں اس کی کئی شکلیں ہیں۔ انسانی مختلف ضرورتوں کے اعتبار سے اس کی متعدد اقسام ہیں۔ سیاہ جوتا نہ پہننا چاہیے. کیونکہ یہ غم و رنج کا باعث ہوتا ہے. جوتے کا سب سے عمدہ رنگ زرد اور اس کے بعد سفید ہے. حضرت امام جعفر صادق سے منقول ہے کہ جو آدمی زرد جوتا پہنے ہمیشہ خوش حال رہے گا جب تک کہ وہ جوتا پرانا ہو اور پھٹ جائے. سفید جوتا کے بارے میں حضرت صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کا ارشاد ہے کہ وہ پرانا نہ ہونے پائے گا کہ کچھ مال اس کے ہاتھ لگے.[1]

استعمالاتترميم

  • بچوں کا جوتا (اسم) bootie
  • جوتا (اسم) boot, chaussure, shoe
  • جوتا پوش (اسم) galosh
  • جوتی (اسم) mule, shoe, slipper
  • جوتی پر مارنا (فعل) despise
  • جوتی چکنا (فعل) fawn, slaver
  • فوجی جوتا (اسم) jackboot
  • پاپوش (اسم) chaussure, shoe

نگارخانہترميم

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. تحفتہ العوام مقبول جدید، صفحہ 289