حبیب الرحمن الاعظمی

حبیب الرحمن اعظمی: (جولائی 1900ء - وفات 17 مارچ 1992ء) ایک بھارتی محدث اور مسلمان عالم تھےـ

حبیب الرحمن الاعظمی
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1901  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مئو ناتھ بھنجن
وفات 17 مارچ 1992 (90–91 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مئو ناتھ بھنجن
قومیت ہندوستانی
مذہب اسلام
عملی زندگی
مادر علمی دارالعلوم مئو
پیشہ محدث  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
P literature.svg باب ادب

سوانحترميم

حبیب الرحمن اعظمی کی ولادت مئو ناتھ بھنجن، اترپردیش میں ہوئی۔ آپ کے والد محمد صابر بن عنایت اللہ، اشرف علی تھانوی کے مریدین میں تھےـ

تعلیم و تربیتترميم

ابتدائی کتابیں اپنے والد ماجد سے پڑھیں۔ ابوالحسن عراقی مئوی سے آپ نے شرح جامی اور دوسری کتابیں پڑھیں۔[1]

تصانیفترميم

حبیب الرحمن اعظمی کی تصانیف[2]

  • 'نصرۃالحدیث - منکرین حدیث کے دعاوی و دلائل کا مدلل و مفصل احتساب۔
  • رکعاتِ تراویح

تراویح کی رکعتوں)کی تحقیق۔

  • اعیان الحجاج - مشاہیر اسلام کے حج کے بصیرت افروز حالات و واقعات۔
  • دست کار اہل شرف - دستکار علما و صالحین کے حالات و واقعات۔
  • رہبرِ حجّاج (حجّاج کے لیے مختصر اور مفید معلومات اور اہل علم کے لیے تحقیقی مضامین کا مجموعہ)
  • ایثارِ آخرت ( حضرت عبداللہ بن المبارک کی تصنیف کا عمدہ اور سلیس ترجمہ)
  • مقالات ابوالمآثر

حوالہ جاتترميم

  1. اعیان الحجاج ج2، ص285
  2. مجلہ المآثر