"اسلام میں تعدد ازواج" کے نسخوں کے درمیان فرق

م
خودکار: درستی ربط از ہندومت > ہندو مت (بدرخواست صارف:BukhariSaeed)
م (خودکار: اضافہ زمرہ جات : + زمرہ:اسلام میں شادی)
م (خودکار: درستی ربط از ہندومت > ہندو مت (بدرخواست صارف:BukhariSaeed))
 
== تعدد ازواج مذاہب عالم میں ==
[[زرتشت|زرتشتیوں]] اور [[مسیحیت|عیسائیوں]] میں تعدد ازدواج بہر صورت ممنوع ہے۔ قدیم [[ہندومتہندو مت|ہندو]] راجاؤں کی ایک سے زیادہ بیویاں ہوتی تھیں۔ لیکن عام [[ہندومتہندو مت|ہندو]] مرد بیوی کے [[بانجھ]] یا دائم المرض ہونے کی صورت میں دوسری شادی کر سکتا تھا۔ قدیم [[یہودی]] سماج میں تعدد ازدواج کا رواج تھا لیکن اب ناپید ہے۔ البتہ [[اسلام]] نے فطرت کو مدنظر رکھتے ہوئے ایک سے زیادہ نکاح کرنے کی اجازت دی ہے تاکہ عورت کو تحفظ حاصل ہو۔ جس سے محبت ہے زناکاری میں نہ پڑ جائے یا اس کی خواہش پوری ہو جائے لیکن اس کو محدود کر دیا…صرف چار میں۔ بشرطیکہ سب کے ساتھ مساوی سلوک کیا جائے۔
 
ارشادِ [[اللہ|رب العزت]] ہے: