دریائے کانگو (سابقہ دریائے زائر) مغربی و وسطی افریقہ کا سب سے بڑا دریا ہے۔ اس کی کل لمبائی 4374 کلومیٹر (2718 میل) ہے اس طرح یہ دریائے نیل کے بعد افریقہ کا دوسرا سب سے لمبا دریا ہے۔ کانگو اور اس کے معاون دریا ایمیزن کے بعد دنیا کے دوسرے سب سے بڑے برساتی جنگل سے گزرتے ہیں۔

دریائے کانگو
 

انتظامی تقسیم
ملک انگولا
جمہوری جمہوریہ کانگو
جمہوریہ کانگو
زیمبیا   ویکی ڈیٹا پر (P17) کی خاصیت میں تبدیلی کریں[1]
تقسیم اعلیٰ زیریں-کانگو   ویکی ڈیٹا پر (P131) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جغرافیائی خصوصیات
متناسقات 6°04′30″S 12°27′00″E / 6.075°S 12.45°E / -6.075; 12.45   ویکی ڈیٹا پر (P625) کی خاصیت میں تبدیلی کریں[2]
بلندی
قابل ذکر
جیو رمز 2241717،  اور7731920  ویکی ڈیٹا پر (P1566) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
  ویکی ڈیٹا پر (P935) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Map
دریائے کانگو

کانگو کے دریائی طاس کا بیشتر حصہ کیونکہ خط استوا پر یا اس کے نیچے واقع ہے اس لیے اس کا بہاؤ مستقل ہے اور ہر وقت اس کے معاون دریاؤں میں سے کم از کم ایک دریا پر بارش ضرور ہوتی رہتی ہے۔ کانگو کا نام دریا کے دہانے پر قائم قدیم سلطنت کانگو کے نام پر رکھا گیا ہے۔ دریا کے کناروں پر واقع جمہوریہ کانگو اور عوامی جمہوریہ کانگو دونوں کے نام بھی اسی پر رکھے گئے ہیں۔ 1971ء سے 1997ء تک زائر کی حکومت اسے دریائے زائر کہتی تھی۔

کانگو کا منبع عظیم وادی شق کے مشرقی حصوں کے پہاڑوں کے علاوہ جھیل ٹانگانیکا اور جھیل ایمویرو بھی ہے۔

یہ دریا برقابی توانائی (انگریزی: Hydroelectric Power) کی بھی بے پناہ صلاحیتیں رکھتا ہے اور ان صلاحیتوں کا اظہار انگا بند ہیں۔ جنوبی افریقا کے سرکاری ادارے ایسکوم نے انگا کی بجلی پیدا کرنے کی صلاحیتوں میں اضافے کے لیے ایک تجویز پیش کی ہے جس کے تحت موجودہ بندوں میں بہتری اور نئے برقابی بند کی تعمیر کے ذریعے اس سے 40 گیگاواٹ تک بجلی پیدا کی جا سکے گی جو چین کے تین گھاٹی بند سے دو گنا زیادہ ہے۔

حوالہ جات ترمیم

  1.    "صفحہ دریائے کانگو في GeoNames ID"۔ GeoNames ID۔ اخذ شدہ بتاریخ 4 اپریل 2024ء 
  2.     "صفحہ دریائے کانگو في خريطة الشارع المفتوحة"۔ OpenStreetMap۔ اخذ شدہ بتاریخ 4 اپریل 2024ء