دشمن (انگریزی: Enemy) ایک شخص یا گروہ ہے جس کے بارے یہ خیال ہے کہ وہ جان بوجھ کر بد خواہ ہے یا دھمکیاں دیتا ہے۔ دشمن کے تصور کا مشاہدہ "اشخاص اور برادریوں، دونوں کے لیے بنیادی طور پر دیکھا گیا ہے۔" [1] "دشمن " کی اصطلاح ایک سماجی خاصا ہے جو کسی کو دھمکی کا سبب بناتی ہے۔[2] دشمن ہونے کی کیفیت کو دشمنی، عداوت اور مخاصمت کہا جاتا ہے۔

جنگ کے موقع پر ڈچ کشتیاں ایک منفی موقف یا دشمنی کا اظہار کرتی ہیں۔

دشمن کی جائدادترميم

دشمن کی جائداد کئی ملکوں میں ترک وطن کر کے کسی دشمن ملک میں پناہ لینے والے شخس یا پھر ملک کے مفاد کے خلاف کام کرنے والے شخس کی جائداد کو کہا جاتا ہے۔ بھارت میں ’دشمن کی جائیداد‘ سے متعلق ترمیم شدہ آرڈیننس 2016ء کو صدر جمہوریہ کی منظوری ملنے کے بعد تقریبا 2050 املاک کا مالکانہ حق اب حکومت ہند کو حاصل ہو گیا ہے۔ 1968ء کے ’دشمن کی جائیداد قانون‘ کے مطابق ایسی کسی جائیداد کی سرپرست حکومت ہوتی ہے۔ اتر پردیش کے راجہ محمود آباد کے نام سے معروف محمد امير محمد خان کے علاوہ وہ ہندوستانی شہری جن کے رشتے دار تقسیم ہند کے بعد یا پھر 1965ء یا 1971ء کی جنگ کے بعد بھارت چھوڑ کر پاکستان کے شہری بن گئے تھے، ان کی جائیداد ’دشمن کی جائیداد‘ کے زمرے میں آ گئی ہے۔[3]


مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. Mortimer Ostow, Spirit, Mind, & Brain: A Psychoanalytic Examination of Spirituality and Religion (2007), p. 73.
  2. Martha L. Cottam, Beth Dietz-Uhler, Elena Mastors, Introduction to Political Psychology (2009), p. 54.
  3. ’دشمن‘ کی جائیداد کی مالک اب بھارتی حکومت