سلطانہ کا خواب (ناول)

سلطانہ کا خواب 1905ء کا نسوانی یوٹوپیائی ناول ہے جو بیگم رقیہ سخاوت نے لکھا، رقتیہ سخاوت ایک مسلمان نسوانیت پسند، مصنفہ اور بنگال کی سماجی اصلاح پسند تھیں۔[2][3] یہ اس ہی سال میں چینائی کے انگریزی سہ ماہی جریدے دا انڈیں لیڈیز میگزین میں چھپا تھا۔[4][ا]

سلطانہ کا خواب (ناول)
(انگریزی میں: Sultana's Dream ویکی ڈیٹا پر (P1476) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مصنف بیگم رقیہ سخاوت  ویکی ڈیٹا پر (P50) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اصل زبان انگریزی[1]  ویکی ڈیٹا پر (P407) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ادبی صنف سائنسی قصص،  افسانہ  ویکی ڈیٹا پر (P136) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ اشاعت 1905[1]  ویکی ڈیٹا پر (P577) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

مزید دیکھیےترميم

ملاحظاتترميم

  1. سلطانہ سلطان کی تانیث ہے، جو ایک لقب ہے۔[5]

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب https://digital.library.upenn.edu/women/sultana/dream/dream.html
  2. "Sultana's Dream". Feminist Press. 23 ستمبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 1 جون 2015. 
  3. D. Bandyopadhyay. "স্বপনচারিনী: চিনিতে পারিনি? (Dream-Lady: Can't I Re-Cognize? (Begum Rokeya's Sultana's Dream))". academia.edu. 
  4. Rafia Zakaria. "The manless world of Rokeya Sakhawat Hossain". Dawn. اخذ شدہ بتاریخ 1 جون 2015. 

بیرونی روابطترميم