سنجیو شرما (پیدائش: 25 اگست 1965ء) ایک سابق بھارتی کرکٹ کھلاڑی کاروباری شخصیت اور کرکٹ کوچ ہیں جنھوں نے 1988ء سے 1997ء تک دو ٹیسٹ میچ اور 23 ایک روزہ بین الاقوامی میچ کھیلے۔

سنجیو شرما
Sanjeev Sharma1
ذاتی معلومات
پیدائش (1965-08-25) 25 اگست 1965 (عمر 58 برس)[1]
دہلی
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیدائیں ہاتھ کا میڈیم گیند باز
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 184)02 دسمبر 1988  بمقابلہ  نیوزی لینڈ
آخری ٹیسٹ26 جولائی 1990  بمقابلہ  انگلینڈ
پہلا ایک روزہ (کیپ 65)2 جنوری 1988  بمقابلہ  ویسٹ انڈیز
آخری ایک روزہ20 جولائی 1990  بمقابلہ  انگلینڈ
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ ایک روزہ فرسٹ کلاس لسٹ اے
میچ 2 23 89 61
رنز بنائے 56 80 2,785 573
بیٹنگ اوسط 28.00 10.00 36.16 26.04
100s/50s 0/0 0/0 3/16 0/2
ٹاپ اسکور 38 28 117 58
گیندیں کرائیں 4,140 2,979 14,982 2,602
وکٹ 6 22 41 47
بالنگ اوسط 41.16 36.95 43.80 43.80
اننگز میں 5 وکٹ 0 3 8 0
میچ میں 10 وکٹ 0 0 0 0
بہترین بولنگ 2/37 5/26 8/76 5/26
کیچ/سٹمپ 11/0 27/0 39/0 16/0
ماخذ: ای ایس پی این کرک انفو، 9 مارچ 2019

کیریئر

ترمیم

دائیں ہاتھ کے میڈیم تیز گیند باز کے طور پر، وہ 80ء کی دہائی میں کپل دیو کے ابتدائی شراکت داروں کے طور پر آزمائے جانے والے کئی گیند بازوں میں سے ایک تھے۔ انھوں نے89-1988ء میں نیوزی لینڈ کے خلاف اپنے ٹیسٹ ڈیبیو پر دم کو چمکانے کے ساتھ ایک متاثر کن آغاز کیا اور 37 رنز کے عوض تین وکٹوں کے ساتھ ختم کیا۔ انھوں نے 1989ء میں ویسٹ انڈیز کا دورہ کیا۔ تقریباً 20 سال پر محیط کیریئر کے بعد، انھوں نے نومبر 2004ء ءمیں مسابقتی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا۔ 1991ء میں رانجی ٹرافی کے دوران دہلی کے کرنیل سنگھ اسٹیڈیم میں پہلی اننگز میں 117 ناٹ آؤٹ اور دوسری اننگز میں 55 ناٹ آؤٹ اترپردیش کے خلاف ان کی بہترین بلے بازی ہے۔ اس بیٹنگ پرفارمنس پر انھیں مین آف دی میچ سے نوازا گیا۔ اگست 2019ء میں، انھیں سینئر اروناچل پردیش کرکٹ ٹیم کا کوچ مقرر کیا گیا۔ [2] ان دنوں وہ دہلی میں یوکلین کی فرنچائز چلانے میں اپنا وقت گزارتے ہیں۔ یوکلین ہندوستان کی سب سے بڑی لانڈری اور ڈرائی کلیننگ چین ہے جو فرنچائز ماڈل پر کام کرتی ہے۔

مزید دیکھیے

ترمیم

حوالہ جات

ترمیم
  1. Sanjeev Sharma
  2. "BCCI eases entry for new domestic teams as logistical challenges emerge"۔ ESPN Cricinfo۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 اگست 2018