سوشیلا كاركی 13 اپریل 2016ء کو نیپال سپریم کورٹ کی خاتون چیف جسٹس کے طور پر تقرر کی گئی ہیں۔[1] وزیر اعظم کے پی اولی کی صدارت میں آئینی کونسل نے نیپال کی سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کے عہدے کے لیے ان کے نام کی سفارش کی۔[1] [3] كاركی عدلیہ میں بدعنوانی کے خلاف صفر رواداری کے لیے جانی جاتی ہیں۔

سوشیلا کارکی
نیبال کے سپریم کورٹ کی چیف جسٹس [1]
مدت منصب
13 اپریل 2016ء – 06 جون 2017ء
Fleche-defaut-droite-gris-32.png  
عزت مآب جسٹس کلیان شریشٹھ [1] Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
پیدائش 7 جون 1952 (68 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ منصف،  سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ذاتی زندگیترميم

كاركی اپنے والد کی سات اولاد میں سب سے بڑی ہے۔ ان کا تعلق کسان خاندان سے ہے۔[1] بنارس ہندو یونیورسٹی، وارانسی، بھارت میں مطالعہ کے وقت نیپال کانگریس کے مشہور نوجوان لیڈر درگا پرساد سُویدی سے ملنے کے بعد ان کی شادی درگا پرساد سُویدی سے ہوئی۔

تعلیمترميم

انہوں نے بنارس ہندو یونیورسٹی سے سیاسیات میں ایم اے کی ڈگری حاصل کی۔[4] سال 1978ء میں تریبھون یونیورسٹی سے قانون کی ڈگری حاصل کی۔[4]

کامترميم

ابتدا میں انہوں نے تدریسی کام کیا۔ 1979ء میں وہ وکالت کے پیشے میں آئیں۔ سپریم کورٹ کی چیف جسٹس تقرری ہونے سے پہلے كاركی سپریم کورٹ کی سب سے سینیر جج تھیں۔[1]22 جنوری 2009ء کو سپریم کورٹ کی عارضی جج بنیں اور 18 نومبر 2010ء کو مستقل جج بن گئیں۔[4]

حوالہ جاتترميم