سیف ابن عمر السعیدی التیمی ((وفات 180ھ - سنہ 796ء)[1] اسلامی عہد زریں میں مؤرخ اور اطلاعات کے مرتب تھے جو کوفہ میں رہتے تھے۔ سیف ابن عمر نے 'کتاب الفتاح الکبیر و الریدہ' لکھا جو کتاب ابن جریر طبری کا اصل ذریعہ ہے فتنۂ ارتداد کی جنگیں اور ابتدائی اسلامی فتوحات کے لئے۔ اس کتاب میں ابتدائی مسلم لشکروں اور حکومت کے ڈھانچے کے بارے میں بھی اہم معلومات موجود ہیں۔ شمس الدین ذہبی کے مطابق، سیف کا انتقال ہارون الرشید (170ھ-193ھ/786ء-809ء) کے دور میں ہوا۔[2]

سیف ابن عمر
معلومات شخصیت
پیدائش 8ویں صدی  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کوفہ  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 796 (45–46 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بغداد  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ مصنف،  مؤرخ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

زندگیترميم

سیف کے بارے میں بہت کم معلومات ہیں، سوائے اس کے کہ وہ کوفہ میں رہتے تھے اور بنو تمیم قبیلے سے تھے۔[2]

سیف کے بیان سے اعتمادترميم

بنو تمیم کی قبائلی روایات سے ان کی روایات متاثر ہیں۔[2] تاہم، سیف نے ایسے روایات بھی اکٹھے کیے جو دوسرے قبائل کو اجاگر کرتے ہیں۔[2]

حوالہ جاتترميم

  1. "Sayf bin 'Umar سيف بن عمر التميمي". muslimscholars.info. 
  2. ^ ا ب پ ت The encyclopaedia of Islam. Gibb, H. A. R. (Hamilton Alexander Rosskeen)، 1895-1971.، Bearman, P. J. (Peri J.) (ایڈیشن New edition). Leiden: Brill Academic Publishers. 1960–2009. صفحات 102–103. ISBN 90-04-16121-X. OCLC 399624.