شجاع اللہ

پاکستانی مصور

استاد شجاع اللہ (پیدائش: 1912ء - وفات: 20 اپریل، 1980ء) پاکستان کے مشہور مصور اور جامعہ پنجاب کے فائن آرٹس ڈیپارٹمنٹ اور نیشنل کالج آف آرٹس میں استاد تھے۔ وہ منی ایچر پینٹنگز میں تخصیص رکھتے تھے۔

استاد شجاع اللہ
معلومات شخصیت
پیدائش 1912ء
الور، برطانوی ہندوستان
وفات اپریل 20، 1980(1980-04-20)ء
لاہور، پاکستان
قومیت Flag of پاکستانپاکستانی
عملی زندگی
پیشہ مصور  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ شہرت مصوری
صنف منی ایچر پینٹنگز

حالات زندگیترميم

استاد شجاع اللہ 1912ء کوالور، برطانوی ہندوستان میں پیدا ہوئے جہاں ان کے بزرگ دہلی سے آکر آباد ہوئے تھے۔ استاد شجاع اللہ کے والد بھی ایک اچھے مصور تھے جنہوں نے شجاع اللہ کو منی ایچر پینٹنگ بنانے کے ساتھ اس پینٹنگ کے لیے خصوصی کاغذ، جسے وصلی کہا جاتا ہے تیار کرنے کی بھی تربیت دی۔[1]

تقسیم ہند کے بعد استاد شجاع اللہ پاکستان آ گئے اور پہلے راولپنڈی اور پھر لاہور میں سکونت پزیر ہوئے۔ استاد شجاع اللہ تقریباً 20برس تک جامعہ پنجاب کے شعبہ فائن آرٹس اور نیشنل کالج آف آرٹس سے وابستہ رہے۔[1]

استاد شجاع اللہ منی ایچر پینٹنگ کے مختلف اسالیب کے جنہیں کانگڑا، راجپوت، دکنی اور مغل کے نام سے یاد کیا جاتا ہے ماہر تھے۔ وہ حاجی محمد شریف کے بعد منی ایچر پینٹنگ کے سب سے بڑے مصور تسلیم کیے جاتے ہیں۔[1]

وفاتترميم

استاد شجاع اللہ 20 اپریل، 1980ء کو لاہور، پاکستان میں وفات پا گئے ۔[1]

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب پ ت ص 493، پاکستان کرونیکل، عقیل عباس جعفری، ورثہ / فضلی سنز، کراچی، 2010ء