ضلع اورکزئی (سابقہ نام اورکزئی ایجنسی) خیبر پختونخوا کا ایک ضلع ہے۔

ضلع
خیبر پختونخوا
خیبر پختونخوا
ملکپاکستان
قیام30 نومبر 1973
ہیڈکوارٹرضلع ہنگو
تحصیل4
رقبہ
 • کل1,800 کلومیٹر2 (700 میل مربع)
آبادی
 • کل450,000
 • کثافت250/کلومیٹر2 (650/میل مربع)
منطقۂ وقتپاکستان کا معیاری وقت (UTC+5)
اہم زبان (زبانیں)پشتو, انگریزی

جون 2016ء کے مطابق یہاں کا موجودہ پولیٹیکل ایجنٹ مسٹر زبیر خان تھا۔ اپر اورکزئی کا اے پی اے مسٹر اقبال وزیر اور اسماعیل زئی تحصیل کا پولیٹیکل نائب تحصیلدار جناب خائستہ اکبر تھا،

اورکزئی ایجنسی میں اورکزئی قبیلے کے بڑی قومیں علی خیل، ماموزئی، ربیعہ خیل، آخیل، مشتی، شیخان، مامازئی، فیروز خیل، اتمان خیل، ستوری خیل اور سپائے وغیرہ آباد ہیں۔ اورکزئی ایجنسی میں دو سب ڈویژن ہیں اپر اورکزئی ایجنسی اور لوئر اورکزئی ایجنسی۔ اپر اورکزئی میں اپر تحصیل اور اسماعیل زئی تحصیل جبکہ لوئراورکزئی میں لوئر اور سنٹرل تحصیل شامل ہیں۔

اورکزئی قبیلہ کل ملا کر 18 اقوام پر مشتمل ہے۔ مذکورہ بالا اقوام کے علاوہ اس قبیلے میں، انڈ خیل اور علی شیر زئی وغیرہ شامل ہیں۔

اورکزئی ضلع کے مشرق میں ضلع کوہاٹ اور درہ آدم خیل، جنوب میں ضلع کوہاٹ اور ضلع ہنگو، مغرب میں کرم ایجنسی اور شمال میں خیبر ایجنسی واقع ہیں۔

لوگوں کی مادری زبان سو فیصد پشتو ہے۔ یعنی تمام باشندے پشتو زبان بولتے ہیں۔ نو جوان نسل تعلیم کی دلدادہ ہے، اس لیے ملک کے مختلف حصوں میں تعلیم حاصل کرنے میں مصروف ہے۔ ضلع اورکزئی ایک سرسبز اور خوبصورت علاقہ ہے جس میں دو دریا دریائے مستورہ اور خانکی توئی شامل ہیں بہتے ہیں۔یہ سطح سمندر سے اونچائی پر ہے جہاں کا موسم اکثر اوقات ٹہنڈا رہتا ہے اور جنوری اور فروری کے مہینوں میں برفباری بھی ہوتی ہے۔یہ علاقہ سیاخت کے لیے بہت مشہور ہے۔سیاحتی مقامات میں فیروزخیل، کلایہ،نناور غار،جبر غاخی،سمپوگ، خاتنگو spring،سمانہ قلعہ وغیرہ بہت مشہور ہیں ۔

اورکزئی ضلع کا بیشتر علاقہ پہاڑی ہے، جہاں پر گھنے جنگلات پائے جاتے ہیں، پہاڑوں میں اکثر مقامات جن میں وام پانڑہ شیخان، چھپرمشتی اور ڈولی بر محمد خیل وغیرہ شامل ہیں میں کوئلے کے ذخیرے پائے جاتے ہیں۔ اس کے علاوہ دیگر معدنیات بھی موجود ہیں۔

اورکزئی ضلع میں میدانی علاقہ بھی ہے جہاں پر لوگ کھیتی باڑی کرتے ہیں اور یہ پیشہ لوگوں کی آمدن کا ایک اہم ذریعہ ہے۔ اس کے علاوہ لوگوں کی ایک کثیر تعداد بیرون ملک مقیم ہے، چونکہ یہاں پر روزگار کے مواقع بہت کم ہیں اس لیے یہ لوگ بیرون سے پیسے بھیجتے ہیں اور اپنے بسر اوقات کرتے ہیں۔

اہم مقامات اور بازاروں میں غلجو بازار جو اپر سب ڈویژن کا صدر مقام ہے اور اپر اورکزئی کے تمام ہیڈکوارٹر، نادرا آفس اور ہسپتال وغیرہ اسی میں واقع ہیں .، سمانہ جو ایک تفریحی مقام ہے اور انگریزوں کے دور کا قلعہ بهی یہاں پر ہے اور لوگ سیر و تفریح کے لیے دوسرے ضلعوں سے یہاں کا رخ کرتے ہیں۔ ڈبوری، پہاڑوں کے درمیان ایک حسین اور دلفریب مقام اور بازار، مشتی میلہ، جنت نظیر مقام اور پہاڑوں کے درمیان ایک پرکشش بازار، کلایہ اور جلکہ میلہ جوڑواں بازار جن کے درمیان میں ایک توئی بہتی ہوئی علاقے کا حسن بڑھاتی ہے لوئر سب ڈویژن کے ہیڈ کوارٹرز اور نادرا آفس وغیرہ یہاں واقع ہیں ' . اس کے علاوہ خادیزئی، سانگهڑا اور انجانی قابل ذکر ہیں۔ مشتی میلہ کے مقام پر ضلعی ھیڈ کوارٹر ھسپتال بھی واقع ہے جہاں پر اورکزئی اور خیبر کے دور افتادہ علاقے میدان کے لوگ علاج معالجے کے لیے تشریف لاتے ہیں ۔

تمام تر علاقے کا موسم ٹھنڈا رہتا ہے اور جنوری اور فروری کے مہینوں میں برفباری ہوتی ہے جبکہ گرمی کا موسم خوشگوار رہتا ہے۔

اورکزئی ضلع کا ایک سیکشن بلند خیل یہاں سے کئی کلومیٹر دور ضلع ہنگو کے اس پار ٹل شہر کے جنوب میں واقع ہے۔ اس کے شمال اور مشرق میں ضلع ہنگو، مغرب میں کرم ایجنسی اور جنوب میں شمالی وزیرستان ایجنسی واقع ہے۔ اس سیکشن میں آباد بلند خیل ایک بنگش قبیلہ ہے۔

حوالہ جات

ترمیم