عمارہ بن حزم غزوہ بدر میں شامل انصاری صحابی ہیں۔

عمارہ بن حزم
معلومات شخصیت

نام نسبترميم

عمارہ نام، سلسلۂ نسب یہ ہے،عمارہ بن حزم بن زید بن لوذان بن عمرو بن عبد عوف بن غنم بن مالک بن نجار، والدہ کا نام خالدہ تھا اور انس بن سنان بن وہب بن لوذان کی بیٹی تھیں۔

اسلامترميم

لیلۃ العقبہ میں 70 انصار کے ساتھ بیعت کی۔

مؤخاتترميم

محرز بن نضلہ سے اخوت ہوئی۔

غزواتترميم

غزوہ بدر، غزوہ احد، غزوہ خندق اور تمام غزوات میں شریک ہوئے،فتح مکہ میں بنو مالک بن نجار کا علم انہی کے پاس تھا۔

وفاتترميم

مرتدین کے جہاد میں خالد بن ولید کے ہمراہ تھے،مسیلمہ کذاب کی جنگ میں جسے یوم یمامہ کہتے ہیں،شہادت حاصل کی۔[1][2]

اولادترميم

مالک نام ایک لڑکا چھوڑا ،جس پرنسل منقطع ہو گئی۔

فضل وکمالترميم

زیاد بن نعیم نے ان سے چند حدیثیں روایت کی ہیں،جھاڑپھونک کا منتر جانتے تھے، آنحضرتﷺ نے فرمایا ذرا مجھ کو تو سناؤ، چونکہ شرک کے الفاظ سے خالی تھا، اس لیے آپ نے اجازت دی،چنانچہ ان کے خاندان میں عرصہ تک وہ منتر منتقل ہوتا رہا اورلوگ اس سے فائدہ اٹھاتے رہے۔

حوالہ جاتترميم

  1. اسد الغابہ جلد 3 صفحہ 635 حصہ ہفتم مؤلف: ابو الحسن عز الدين ابن الاثير ،ناشر: المیزان ناشران و تاجران کتب لاہور
  2. اصحاب بدر، صفحہ 181، قاضی محمد سلیمان منصور پوری، مکتبہ اسلامیہ اردو بازار لاہور