قبیلہ لاوی یا قبیلہ لیوی (Tribe of Levi) بنی اسرائیل کے بارہ قبائل میں سے ایک ہے۔موسیٰ و ہارون نبی اسی قبیلہ سے تعلق رکھتے تھے۔ جس وجہ سے اس قبیلہ کو خاص عزت ملی۔[1][2] بائبل کے مطابق خود لاوی پر ان کے باپ یعقوب نبی نے لعنت کی تھی،[3] جس وجہ سے یہ قبیلہ لعنتی ٹھہرایا جاتا رہا، مگر پھر کوہ سیناء پر لاویوں کو جب خدا کے انتظام میں اہم ذمہ داریاں تفویض ہوئیں،[4] تو اس وقت یہ مان لیا گیا کہ خدا کی لعنت، خدا کی رحمت سے بدل گئی ہے۔[5]

ابتداترميم

تورات کے مطابق قبیلہ لاوی کی اولاد پر مشتمل ہے جو یعقوب علیہ السلام اور لیاہ کے تیسرے بیٹے تھے۔[6]

بائبل میںترميم

 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
لاوی
 
 
 
Melcha
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
Gershon
 
Kohath
 
Merari
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
یوکابد
 
 
 
Amram
 
Izhar
 
حبرون
 
Uzziel
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
مریم
 
ہارون
 
موسی
 
 

تقررترميم

 
بنی اسرائیل کے بارہ قبائل

تنظیمترميم

لاویوں کے تین درجے تھے۔

  • ہارون اور ان کے بیٹوں کا پہلا درجہ تھا، یہی کاہن تھے۔ کاہن قہات کے خاندان سے تعلق رکھتے تھے۔
  • دومیانی درجہ میں وہ قہتاتی شامل تھے جو ہارون کے خاندان سے نہیں تھے۔ انہیں یہ استحقاق دیا گیا کہ وہ خیمہ اجتماع کے سب سے پاک حصے کی نگہبانی کریں۔[7]
  • تیسرا درجہ جیرسونیوں اور مراریوں پر مشتمل تھا۔ ان کے ذمہ کم اہمیت کے کام تھے۔[8]

کاہن اور لاویترميم

موسوی شریعت میں کاہنوں اور عام لاویوں میں امتیاز کیا گیا ہے۔[9]

  • کاہنوں کے لیے ضروری ہے کہ وہ ہارون کے خاندان سے ہوں جب کہ لاوی کے قبیلہ کے سب لوگ ہی لاوی کہلاتے تھے، ہر ایک کاہن لاوی ہوتا تھا، لیکن ہر ایک لاوی کاہن ہی ہو۔ یہ ضروری نہیں۔
  • کاہن خدا کے لیے مخصوص کیے جاتے تھے۔[10][11] جبکہ لاوی پاک کیے جاتے تھے۔[12]
  • لاوی ہارون اور اس کے بیٹوں کے خدمتگار سمجھے جاتے تھے[13]

حوالہ جاتترميم

  1. کتاب خروج، 2:1-10، 6:14-27
  2. کتاب گنتی، 26:59
  3. کتاب پیدائش، 49:5-7
  4. کتاب پیدائش، 32:25-29
  5. کتاب استثنا، 33:8-11
  6. کتاب پیدائش، 29:34، 35:23
  7. کتاب پیدائش، 3:27-32، 4:4-15، 7:9
  8. کتاب گنتی، 3:21-26، 33-36
  9. ایف ایس خیراللہ (مسیحی)، قاموس الکتاب، صفحہ 854، طبع 2005، مسیحی اشاعت خانہ، لاہور۔
  10. کتاب خروج، 29:1-37
  11. کتاب احبار، باب8
  12. کتاب گنتی 8:5-22
  13. ۔کتاب گنتی، 3:5-13، 8:19، 18:1-7