نورِعثمانیہ مسجد (Nuruosmaniye Mosque) (ترکی زبان: Nuruosmaniye Camii) ترکی کے شہر استنبول کے ضلع فاتح میں واقع ایک 18 ویں صدی کی ایک عثمانی مسجد ہے۔ سن 2016 میں اسے ترکی میں عالمی ثقافتی ورثہ مقامات کی عارضی فہرست میں شامل کیا گیا تھا۔[1]

نورعثمانیہ مسجد
Nuruosmaniye Mosque
Nuruosmaniye Mosque Mars 2013.jpg
نورعثمانیہ مسجد
بنیادی معلومات
متناسقات41°00′37″N 28°58′14″E / 41.010234°N 28.970540°E / 41.010234; 28.970540
مذہبی انتساباسلام
ملکترکی
تعمیراتی تفصیلات
معمارمصطفی آغا، سیمون کالفا
نوعیتِ تعمیرمسجد
طرز تعمیرعثمانی باروک فن تعمیر
سنگ بنیاد1749
سنہ تکمیل1755
تفصیلات
انتہائی بلندی43.50 m [1]
گنبد کا قطر (داخلی)25 m [2]
مینار2
مینار کی بلندی60 m?

یہ مسجد استنبول کے مشہور گرینڈ بازار کے مشرق میں واقع ہے ، یہ مسجد نور عثمانیہ کلیہ کا حصہ ہے جس میں ایک مسجد ، مدرسہ ، کچن ، مقبرہ ، لائبریری اور سبیل (واٹر فاؤنٹین) ہے۔ نور عثمانیہ کلیہ کی تعمیر کا آغاز سلطان محمود اول (1730-1754) کی حکومت کے دوران 1749 میں ہوا تھا اور اس کے بھائی اور جانشین سلطان عثمان سوم (1754-1757) نے 1755 میں مکمل کیا تھا۔ نور عثمانیہ کا نام ، قرآن پاک کی ایک آیت سے ماخوذ ہے "خدا آسمانوں اور زمین کا نور ہے" ، جو مسجد کے گنبد کے اندر لکھا ہوا ہے۔ اگرچہ معمار کی شناخت کے بارے میں کچھ تنازعہ موجود ہے ، اس پر اتفاق کیا گیا کہ معمار شمعون کلفا تھا جو یونانی نژاد تھا۔[1]

فن تعمیرترميم

اسے استنبول کی سات پہاڑیوں میں سے ایک پر تعمیر شدہ عثمانی باروق طرز کی مساجد کی ایک بہترین مثال میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔ اس کا آغاز سلطان محمود اول کے حکم سے ہوا جس کی ابتداء 1748 میں ہوئی تھی۔

نماز کا ہال ایک گنبد سے ڈکھا ہوا ہے جس کا احاطہ 25 میٹر اور بلندی 43.50 میٹر ہے۔ اس کلیہ میں دو مینار ہیں اور ہر ایک میں دو بالکونیاں ہیں۔ مسجد کا صحن گھوڑے کے نعل کی شکل میں تیار کیا گیا ہے ، جو اس وقت عثمانیوں کی مساجد کے لئے منفرد ہے۔ پچھلے باغ میں ایک مقبرہ ہے جو سلطان عثمان سوم کی والدہ شہسوار سلطان کے لئے تعمیر کیا گیا تھا ، جس میں شاہی کنبہ کے دوسرے افراد بھی مدفون ہیں۔

تصاویرترميم

  1. ^ ا ب یونیسکو، یونیسکو (13 اپریل 2016). "Nuruosmaniye Complex - UNESCO World Heritage Centre". Nuruosmaniye Complex - UNESCO World Heritage Centre. اخذ شدہ بتاریخ 27 اپریل 2020.