پرتھوی راج چوہان

سلاطین دہلی سے قبل آخری ہندو راجہ

دہلی اور اجمیر کا آخری ہندو راجہ جو رائے پتھورا گجر کے نام سے بھی مشہور ہے۔ اس کی بہادری کے کارنامے شمالی ہندوستان میں مشہور ہیں۔ اس نے اپنے ہمسایہ راجپوت حکمرانوں کے ساتھ کئی جنگیں لڑیں۔ جے چند والیء قنوج کی لڑکی سنجوگتا اور پرتھوی راج چوہان آپس میں بےحد محبت کرتے تھے، اس وجہ سے پرتھوی نے سنجوگتا کو سوئمبر سے اٹھا کر اس کے ساتھ شادی کرلی۔ اس پر اس کی جے چند سے دشمنی ہو گئی تھی۔ 1191ء میں اس نے محمد غوری کو ترائن (تراوڑی) کے میدان میں شکست دی۔ لیکن 1192ء میں سلطان محمد غوری کے دوسرے حملے میں اسے بری طرح شکست ہوئی اور وہ پکڑا گیا۔[2] اس کی آنکھوں کو جلتے لوہے سے ضائع کرنے کے بعد اسے قتل کر دیا گیا۔[3]

پرتھوی راج چوہان
Prithvi Raj Chauhan (Edited).jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1149  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اجمیر  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 1192 (42–43 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تراوری  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد نسل
دیگر معلومات
پیشہ سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ترچھا متن

حوالہ جاتترميم

  1. https://pantheon.world/profile/person/Prithviraj_Chauhan — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  2. The State at War in South Asia – Pradeep Barua – Google Books
  3. History of India and Indian National Movement BY D.S RAJ