گرو ارجن دیو

سکھ مت کے پانچویں گرو جنہوں نے 1581ء سے 1606ء تک گوریائی کی۔

گرو ارجن دیو سکھوں کے پانچویں گرو، گرو رام داس کے بیٹے تھے۔ بعض روایات کے مطابق شہنشاہ اکبر نے انھیں شرفِ باریابی بخشا۔ شہزادہ خسرو نے اپنے باپ شہنشاہ جہانگیر کے خلاف بغاوت کی تو گرو ارجن دیو نے خسرو کی حمایت کی۔ خسرو کی گرفتاری کے بعد اس کے ساتھیوں پر شاہی عتاب نازل ہوا۔ ارجن دیو کو قلعہ لاہور میں قید کر دیا گیا۔ یہیں ان کا انتقال ہوا۔ قلعہ لاہور کے قریب گوردوارہ ڈیرہ صاحب انہی کی یاد میں تعمیر کیا گیا۔ سکھ مذہب کے پانچویں گُرو 15 اپریل 1560 کو گوئندوال میں پیدا ہوئے۔ وہ گُرو رام داس اور بی بی بھانی کے سب سے چھوٹے بیٹے تھے۔ بی بی بھانی گُرو امر داس کی بیٹی تھیں۔ یکم ستمبر 1581 کو گُرو کے منصب پر فائز ہوئے۔ ان کے عہد میں امرتسر کی تعمیر مکمل ہوئی۔ ترن تارن اور کرتار پور بھی انھوں نے بسائے۔ گرنتھ کو اکٹھا کرنا ان کا عظیم کارنامہ تھا۔ انھوں نے سکھ مذہب کے پرچار کے لیے مسند بنائے، لنگر خانوں اور گردواروں کے انتظام و انصرام کے لیے سکھوں پر دسواں ٹیکس نافذ کیا۔ 30 مئی 1606 کو انھیں لاہور میں جہانگیر نے قتل کروادیا۔

گرو ارجن دیو
 

معلومات شخصیت
پیدائش 15 اپریل 1563ء  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
گوندول  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 30 مئی 1606ء (43 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لاہور  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات سزائے موت  ویکی ڈیٹا پر (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد گرو ہرگوبند  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد گرو رام داس  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ مذہبی رہنما،  مصنف  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

زندگی ترمیم

شری گُرو ارجن دیو جی 19 بیساکھ 1620(15 اپریل 1563) کو چوتھے گُرو گُرو رام داس کے ہاں بی بی بھانی جی کی کوکھ سے گوئندوال میں پیدا ہوئے۔[2] بچپن کے ابتدائی 11 برس اپنے نانا شری گُرو امرداس جی کے زیر سایہ گزارے اور ان سے گور مکھی کی اعلیٰ مہارت حاصل کی، دیوناگری گاؤں کے دھرم شالہ سے سیکھی۔ سنسکرت میں آپ کے استاد پنڈت بینی تھے۔ گنت کا علم ماما موہری جی سے حاصل کیا۔ آپ کے ماموں بابا موہن جی نے آپ کو مراقبہ کی تعلیم دی۔ شری گُرو امرداس جی کا وقت وداع قریب ہوا تو تیسرے گُرو صاحب نے یکم ستمبر 1574 کو چوتھے گُرو رام داس جی کو گُرو مسند عنایت کی ، بابا بڈھا جی نے گُرو تلک کی رسم ادا کی ، اسی دن سری گُرو امرداس جی اس جہان فانی سے کوچ کر گئے۔ اس کے بعد سال 1574 میں ہی سری گُرو رام داس اپنے تینوں بیٹوں پرتھی چند، سری مہاں دیوا تے سری گُرو ارجن دیو جی کو لے کر گورو کے چک یعنی امرتسر آگئے؛ اولین سیوا جو گُرو امرداس جی کے وقت سے چل رہی تھی اور جس شیشم کے درخت کے نیچے گُرو جی سیوا کروایا کرتے تھے وہاں اب گردوارہ ٹاہلی صاحب ہے۔ ٹاہلی پنجابی میں شیشم کو کہتے ہیں۔

مزید دیکھیے ترمیم

حوالہ جات ترمیم

  1. دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Arjan — بنام: Arjan — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  2. Hew Mcleod (1997)۔ Sikhism۔ London: Penguin vBooks۔ صفحہ: 28۔ ISBN 0-14-025260-6