ابوزكريا المعروف الفراء نحوی علم نحو اور عربی ادب کے امام تصور کیے جاتے ہیں۔ یہ امام الکوفین اور امیر المؤمنین فی النحو کے لقب سے ملقب ہیں۔

نامترميم

پورا نام يحيى بن زياد بن عبد الله بن منظور الديلمی، مولى بنو اسد (بنو منقر) کنت أبوزكرياء، اورمعروف الفراء نحوی ہے۔

ولادتترميم

1130ھ/ 761ء میں کوفہ میں پیدا ہوئے ۔

فضل و کمالترميم

امام فراء کوفہ میں پیدا ہوئے پھر بغداد منتقل ہوئے مامون الرشید کے زمانے میں شہزادوں کی تربیت کے لیے وہاں رہے آخری ایام میں دوبارہ کوفہ آ گئے۔ لیکن وفات مکہ حج کے لیے جاتے ہوئے ہوئی علم نجوم اور علم طب کے ماہر تھے ان کا رحجان معتزلہ کی طرف ہے۔ امام ثعلب کہتے ہیں اگر فراء نہ ہوتے تو لغت کسی کو نہ سمجھ آتی۔

وفاتترميم

امام فراء کی وفات 207ھ /822ء میں حج کے لیے جاتے ہوئے ہوئی۔

تصنیفاتترميم

  • المقصور والممدود
  • المعانی اس کا نام معانی القرآن ہے۔
  • المذكر والمؤنث –
  • اللغات -
  • الفاخر - فی الأمثال۔
  • ما تلحن فيه العامة
  • آلة الكتاب
  • الأيام والليالي
  • البهي " ألفه لعبد الله بن طاہر
  • اختلاف أهل الكوفة والبصرة والشام في المصاحف
  • الجمع والتثنية في القرآن
  • الحدود " ألفه بأمر المأمون
  • مشكل اللغة [1]

حوالہ جاتترميم

  1. إرشاد الأريب 7: 276 ووفيات الأعيان 2: 228 وابن النديم، طبعة فلوجل 66 - 67 ومفتاح السعادة 1: 144 واسم جده فيه " مروان "؟ وغاية النهاية 2: 371 ونزهة الالبا 126 ومراتب النحويين 86 - 89 والآصفية 4: 648 و 178: 1Brock S. وطبقات النحاة واللغويين لابن قاضي شهبة - خ