اَوَنی چَتُرویدی بھارت کی پہلی خاتون لڑاکا پائلٹوں میں سے ایک ہے۔[1] وہ ریوا ضلع سے ہے جو مدھیہ پردیش میں ہے۔ انہیں اپنی دو ساتھيوں - موہن سنگھ اور بھاونا کنٹھ کے کے ساتھ پہلی بار لڑاکا پائلٹ قرار دیا گیا تھا۔ ان تینوں کو جون 2016ء میں بھارتی فضائیہ کے لڑاکا سکواڈرن میں شامل کیا گیا۔ انہیں باضابطہ طور پر اس وقت کے وزیر دفاع منوہر پاریکر طرف کمیشن میں شامل کیا گیا تھا۔[2]

ابتدائی زندگی اور تعلیمترميم

22-سالہ چترویدی نے اپنی مکمل تربیت حیدرآباد کی ایئر فورس اکیڈمی سے لی۔ انہوں نے اپنی اسکول کی تعلیم ديولینڈ سے کی جو مدھیہ پردیش کے شہڈول ضلع میں واقع ایک چھوٹا سا شہر ہے۔[3] انہوں نے 2014 میں اپنی گریجویشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں ونستھلي یونیورسٹی، راجستھان سے کرتے ہوئے بھارتی فضائیہ کے امتحان کو بھی کامیاب کیا۔

ان کے والد پارلیمانی حکومت میں ایک ایگزیکٹو انجینئر اور ماں ایک گھریلو خاتون ہیں۔ چترویدی کو ٹینس کھیلنا اور پینٹنگ کرنا پسند ہے۔ انہیں اپنے خاندان کے فوجی حکام کی طرف سے حوصلہ افزائی حاصل ہوئی تھی۔ ان کے کالج فلائنگ کلب سے کچھ گھنٹے کی پرواز کا تجربہ حاصل ہوا جس نے انہیں بھارتی فضائیہ میں شامل ہونے کے لیے خاص طور حوصلہ افزائی کی تھی۔

کیریئرترميم

اپنی تربیت کا ایک سال مکمل کرنے کے بعد وہ جون میں لڑاکا پائلٹ بنی۔ کرناٹک سے ملحقہ بیدر سے ان کی تربیت کے تیسرے مرحلے کو مکمل کرنے کے بعد وہ لڑاکا جیٹ طیاروں جیسے کہ سکھوئی اور تیجس اڑانے کی اہل ہو گئی ہے۔

حوالہ جاتترميم

  1. "Avani, Bhawana, Mohana become IAF's first women fighter pilots - Times of India". The Times of India. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 09 دسمبر 2016.  الوسيط |work= و |newspaper= تكرر أكثر من مرة (معاونت); الوسيط |accessdate= و |access-date= تكرر أكثر من مرة (معاونت)
  2. Krishnamoorthy، Suresh. "First batch of three female fighter pilots commissioned". The Hindu. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 09 دسمبر 2016.  الوسيط |work= و |newspaper= تكرر أكثر من مرة (معاونت); الوسيط |accessdate= و |access-date= تكرر أكثر من مرة (معاونت)
  3. "MP girl Avani Chaturvedi to be one amongst India's first three women fighter pilots". اخذ شدہ بتاریخ 09 دسمبر 2016.