ایلیاہ یا اِلیاس (عبرانی: אֱלִיָּהוּ ؛ مطلب ”یہوواہ میرا خدا ہے “) کا ایک عظیم نبی تھا۔ ،[3] اُس نے کئی معجزات کیے، اُس نے بیوہ کے لڑکے کو زندہ کیا۔[4] قحط کی پیشینگوئی کی اور بعل کے پجاریوں سے مقابلہ کیا۔[5] وہ اخی اب بادشاہ کے ڈر سے حورب کے پہاڑ پر بھاگ گیا۔[6] خدا نے اُسے حکم دیا کہ حزائیل کو ارام کا اور یاہو کو اِسرائیل کا بادشاہ اور الیشع کو نبی ہونے کے لیے مسح کرے۔[7] اس نے الیشع کو نبی ہونے کے لیے بلایا۔[8] اُس نے اخی اب اور ایزبل پر لعنت کی۔[9] اور اخزیاہ کو موت کے بارے میں آگاہ کیا۔[10] وہ بگولے میں آسمان میں اُٹھالیا گیا۔[11] یوحنا بپتسمہ دینے والے کو بھی ایلیاہ کہا گیا ہے۔[12] جب پہاڑ پر مسیح کی صورت بدلی تو ایلیاہ بھی وہاں پر ظاہر ہوا۔[13]

ایلیاہ
(عبرانی میں: אליהו ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Iliya prorok ikona Pskov.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 904 ق م[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تشبی  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 850 ق م[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اریحا  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت مملکت اسرائیل  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
تلمیذ خاص الیشع[2]  ویکی ڈیٹا پر (P802) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ واعظ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان توراتی عبرانی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب http://timeline.biblehistory.com/event/elijah
  2. باب: 6
  3. 1 سلاطین 17:1
  4. 1 سلاطین 24–17:13
  5. 1 سلاطین باب 18
  6. 1 سلاطین 9–19:1
  7. 1 سلاطین 18–19:9
  8. 1 سلاطین 31–19:19
  9. 1 سلاطین 24–21:17
  10. 2 سلاطین 17–1:1
  11. 2 سلاطین 11–2:1
  12. متی 11:14 / 13–17:10 ؛ لوقا 1:17
  13. متی 4–17:3 ؛ مرقس 5–9:4 ؛ لوقا 33–9:30