امام بدرالدین عینی (پیدائش: 30 جولائی 1361ء— وفات: 14 دسمبر 1451ء) فقہ حنفی کے بہت بڑے شارح اور فقیہ ہیں۔

بدرالدین عینی
(عربی میں: بدر الدين العيني ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
معلومات شخصیت
پیدائش 21 جولا‎ئی 1361[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
غازی عینتاب  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 28 دسمبر 1451 (90 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قاہرہ  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Egypt.svg مصر[2]  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ الٰہیات دان،  قاضی  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی[1]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
P islam.svg باب اسلام

ولادتترميم

نصف ماہِ رمضان 762ھ میں مصر میں پیدا ہوئے

نام و نسبترميم

پورا نام محمود بن احمد بن موسیٰ بن احمد بن حسین بن یوسف بن محمود عینی: بدرالدین لقب اور قاضی القضاۃ خطاب تھا: مؤرخ، علامہ،اور بڑے محدثين۔ میں شمار کیے جاتے ہیں حلب سے تعلق تھا جبکہ ان کی ولادت عين تاب میں ہوئی اسی کی طرف نسبت سے عینی کہلاتے ہیں زیادہ مدت حلب میں رہے مصر ،دمشق اوربیت المقدس میں رہے

علمی خدماتترميم

علامہ عینی نے فقہ جمال یوسف ملطی اور علاء سیرافی سے حاصل کی اور حدیث کو شیخ زین الدین عراقی اور شیخ تقی الدین سے سنا اور نحو واصول فقہ اور معانی کو علامہ جبرمل بن صالح بغدادی سے اخذ کیا، 787ھ کو قاہرہ میں تشریف لائے اور پہلے پہل آپ کو ظاہریہ میں تصرف و ظائف کی خدمت سپرد ہوئی پھر کئی دفعہ تدابیر امور کا عہدہ آپ کو ملا اور قضاء مذہب امام ابو حنیفہ کی آپ کے سپرد ہوئی۔ آپ نے جامع ازہر کے پاس ایک مدرسہ بنوایا اور اپنے کتب خانہ کو اس میں وقف کر دیا۔

تصنیفاتترميم

  • عمدة القاري في شرح البخاري 11 جلدیں
  • مغانی الاخيار فی رجال معانی الآثار
  • العلم الهيب في شرح الكلم الطيب
  • عقد الجمان في تاريخ أهل الزمان
  • تاريخ البدر في أوصاف أهل العصر
  • مباني الأخبار في شرح معاني الآثار
  • نخب الأفكار فی تنقيح مباني الأخبار آٹھ جلد
  • البنايۃ فی شرح الهدايۃ 6 جلدیں فقہ حنفی
  • رمز الحقائق شرح الكنز، فقه
  • الدرر الزاهرة فی شرح البحار الزاخرة فقه
  • المسائل البدريۃ فقه،
  • السيف المهند فی سيرة الملك المؤيدابى النصر شيخ
  • منحۃ السلوك في شرح تحفۃ الملوك
  • المقاصد النحويۃ
  • فرائد القلائد
  • طبقات الشعراء
  • سيرة الملك الاشرف
  • الروض الزاهر - فی سيرة الملك الظاهر
  • الجوهرة السنيۃ في تاريخ الدولة المؤيديۃ -
  • المقدمۃ السوادنيہ فی الاكام الدينيہ
  • شرح سنن ابى داود -
  • تاريخ الأكاسرة

وفاتترميم

علامہ عینی کی وفات منگل بار 4 ذی الحجہ855ھ بمطابق1451ء 28 دسمبر کو قاہرہ میں ہوئی[3]

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب پ http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb146288725 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: Bibliothèque nationale de France — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  2. https://libris.kb.se/katalogisering/pm133qv701k7nqd — اخذ شدہ بتاریخ: 24 اگست 2018 — شائع شدہ از: 18 ستمبر 2012
  3. «الاعلام» خیر الدین زركلی