بیخود بدایونی

انیسویں صدی کے اواخر اور بیسویں صدی کے ابتدائی عشروں کے مشہور اردو شاعر جنہوں نے اپنا تخلص بیخود بدایونی اختیار کیا اور اردو شاعری کو ایک نئی

بیخود بدایونی (پیدائش:17 ستمبر 1857ء— وفات:10 نومبر 1912ء) انیسویں صدی کے اختتام اور بیسویں صدی کے ابتدائی عشروں کے نمایاں شاعر تھے۔ان کا حقیقی نام مولوی عبد الحئی تھا۔ ان کے والد کا نام مولوی غلام رسول تھا۔ ان کا تعلق بدایوں (اترپردیش) , بھارت سے تھا۔ ان کی پیدائش 17ستمبر 1857ء کو بدایوں میں ہوئی تھی جب کہ ان کی وفات نومبر 1912ء میں اسی جگہ ہوئی تھی۔ وہ مولانا الطاف حسین حالی کے شاگرد تھے۔

بیخود بدایونی
معلومات شخصیت
پیدائش 17 ستمبر 1857ء  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بدایوں  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 10 نومبر 1912ء (55 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بدایوں  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ شاعر  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

شاعری کا نمونہ ترمیم

پردے سے پُچھتے ہو ترا دل کہاں ہے اب
پہلو میں میرے آؤ تو کہدوں یہاں ہے اب[1]

حوالہ جات ترمیم