جامعہ حفصہ، اسلام آباد

جامعہ حفصہ ( جامعة حفصة ) پاکستان کے دار الحکومت اسلام آباد کی لال مسجد مسجد سے متصل ایک مدرسہ ہے۔ مسجد اور مدرسہ کی نگرانی مولوی عبدالعزیز غازی کرتے ہیں۔ مدرسہ مسجد، دو بھائیوں مولانا عبدالعزیز اور عبدالرشید غازی کی ملکیت تھی۔ لال مسجد آپریشن کے نتیجے میں بڑے بھائی عبد العزیز کو گرفتار کر لیا گیا اور چھوٹے بھائی عبدالرشید غازی مارے گئے۔[1]

Jamia Hafsa
Jamia Hafsa
بنیادی معلومات
مذہبی انتسابسنی اسلام
رسمدیوبندی
ملکپاکستان
سربراہیمولانا عبدالعزیز غازی
تعمیراتی تفصیلات
سنہ تکمیلConstructed – 1992
Rebuilt– 2010
اصل کمپاؤنڈ کو 2007 میں مسمار کر دیا گیا۔

تاریخ

ترمیم

جامعہ حفصہ، خواتین کا اسلامی مدرسہ 1992 میں جامعہ العلوم الاسلامیہ الفریدیہ کی ایک شاخ کے طور پر قائم کیا گیا تھا جسے فریدیہ یونیورسٹی کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ ان اسکولوں کی بنیاد مولانا عبداللہ غازی نے 1992 میں رکھی تھی، جو اکتوبر 1998 میں نامعلوم مسلح افراد کے ہاتھوں قتل ہونے تک چانسلر رہے۔ اس اسکول کی قیادت اب مولانا عبدالعزیز غازی کر رہے ہیں۔ لال مسجد آپریشن کے بعد اس وقت کی حکومت نے اسکول کو مسمار کر دیا۔ تب سے یہ اسکول اسلام آباد کے سیکٹر G-7 میں دوبارہ تعمیر کیا گیا ہے۔

مزید دیکھیے

ترمیم

حوالہ جات

ترمیم
  1. Kalbe Ali (2019-03-23)۔ "Maulana Abdul Aziz dodges ICT admin, delivers sermon at Lal Masjid"۔ DAWN.COM (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 نومبر 2020 

بیرونی روابط

ترمیم