حدیقہ کیانی

پاکستانی گلوکارہ

حدیقہ کیانی ایک پاکستانی گلوکار، گیت نگار اور انسانیت پسند ہے۔ جو کئی ملک و عالمی اعزازات حاصل کر چکی ہے، کیانی نے دنیا بھر میں گلوکاری ہے، کیانی رائل البرٹ ہال اور کینیڈی سینٹر میں بھی گا چکی ہے۔[3][4][5][6][7] حدیقہ کیانی ایک پاکستانی گلوگارہ ، گیت نگاراور سماجی خدمت گزار ہیں۔ انھوں نے متعدد مقامی اور بین الاقوامی ایوارڈ جیتے ہیں اور دنیا کے بہترین معزز مقامات پر پرفارم کیا ہے جن میں رائل البرٹ ہال اور کینیڈی سنٹر شامل ہیں [8] [9] [10] [11] ۔ 2006 میں حدیقہ کو پاکستان کا چوتھا بڑا شہری اعزاز تمغا امتیاز ان کی موسیقی میں خدمات پر دیا گیا [9] ۔ 2010 میں انھیں اقوام متحدہ ڈویلپمنٹ پروگرام کی گڈول سفیر بنایا گیا ، جس سے وہ پاکستان کی اقوام متحدہ میں پہلی گڈول سفیر بن گئیں [12] [13] [1] ۔ 2016 میں حدیقہ کو جنگ گروپ اخبار نے "پاکستان کی انتہائی بااثر اور طاقتور خواتین" میں اپنے پاور ایڈیشن میں شامل کیا [14] [15] ۔

حدیقہ کیانی
حدیقہ کیانی، 2016.
ذاتی معلومات
پیدائشی نامحدیقہ کیانی
پیدائش11 اگست 1974ء (عمر 46 سال)[1][2]
تعلقراولپنڈی، پنجاب، پاکستان، پاکستان
اصنافپاپ، folk
پیشےگلوکاری،گیت نگاری، انسانیت پسندی
سالہائے فعالیت1995–تاحال
ریکارڈ لیبلساؤنڈ ماسٹر، لپس میوزک، فائر ریکارڈز (پاکستان)، Hi-tech میوزک
متعلقہ کارروائیاںعرفان خان، عامر ذکی، اور عاطف اسلم

ابتدائی زندگیترميم

حدیقہ راولپنڈٰی ، پاکستان میں پیدا ہوئی اور تین بہن بھائیوں میں سب سے چھوٹی ہیں۔ والد تین سال کی عمر میں وفات پا گئے۔ والدہ خاور کیانی ، ایک شاعرہ اور گورنمنٹ گرلز اسکول کی پرنسپل تھیں۔ والدہ نے موسیقی میں دلچسپی دیکھتے ہوئے پاکستان نیشنل کونسلآف آرٹس میں داخل کروا دیا [16] ۔ موسیقی کی ابتدائی تعلیم میڈم نرگس ناہید سے حاصل کی [17] ۔ وقار النسا نون گرلز ہائی اسکول میں پڑھتے ہوئے حدیقہ نے ترکی ، اردن ، بلغاریہ ، یونان میں انٹرنیشنل چلڈرن فیسٹیول میں پاکستان کی نمائندگی کرتے ہوئے کئی میڈل جیتے اور ہزاروں کے سامنے پرفارم کیا۔ حدیقہ سہیل رانا کے بچوں کے ہفتہ وار موسیقی کے پروگرام "رنگ برنگی دنیا" کا بھی حصہ تھیں جو پی ٹی وی پر آتا تھا [18] ۔ آٹھویں جماعت میں حدیقہ راولپنڈی سے لاہور منتقل ہوئیں جہاں انھوں نے واجد علی ناشاد سے کلاسیکی تربیت لی۔ حدیقہ نے کینئرڈ کالج ویمن یونیورسٹی سے نفسیات میں بیچلر کی ڈگری لی اور گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور سے نفسیات میں ماسٹرز کی ڈگری لی [19] [20] ۔ 1990 کے آغاز میں حدیقہ نے بچوں کے موسیقی کے پروگرام "آنگن آنگن تارے" میں ساڑھے تین سال تک ہزاروں گانے امجد بوبی اور خلیل احمد کی دھنوں پر گائے۔ پی ٹی وی پر اتنی بڑی تعداد میں گانے پر انھیں "اے پلس فنکار" کا خطاب ملا جو پہلے نور جہاں ، ناہید اختر اور مہناز کو مل چکا تھا۔ حدیقہ این ٹی ایم پر ایک موسیقی چارٹس پروگرام کے لیے وی جے بھی بنیں [21] ۔ سرگم فلم میں حدیقہ نے پلے بیک سنگر کا کردار ادا کیا، اس فلم کی موسیقی عدنان سمیع خان نے دی۔ اسی سال نگار ایوارڈ کی طرف سے انھیں بہترین خاتون پلے بیگ سنگر کا ایوارڈ ملا [22] ۔

موسیقی البمترميم

1995: رازترميم

1995 میں حدیقہ کو این ٹی ایم ناظرین چوائس ایوارڈ برائے بہترین گلوکارہ ملا۔ اسی ایوارڈ شو میں نصرت فتح علی خان کو بہترین گلوکار کا ایوارڈ ملا۔ 1996 میں حدیقہ نے اپنی پہلی البم "راز" ریلیز کی جو ریڈیو پر خوب چلی اور مثبت تبصرے موصول ہوئے [23] ۔ حدیقہ ، نازیہ حسن کے بعد وہ پہلی پاپ گلوکارہ بنیں جنھوں نے اپنا البم ریلیز کیا [24] ۔ حدیقہ کا ملک کے مختلف لہجوں میں گانے کی صلاحیت نے انھیں فائدہ پہنچایا خاص طور پر فوک کشمیری گانا "مانے دی موج" بہت مشہور ہوا [25] ۔ حدیقہ نے جنوری 1997 میں برٹش نیشنل لاٹری لائیو میں بی بی سی ون میں پرفارم کیا (جسے اس وقت 1 کروڑ 66 لاکھ لوگوں نے دیکھا) [22] ۔ اس کے بعد انھوں نے بالی ساگو کے ساتھ بی بی سی اور آئی ٹی وی پر دو شو کیے اور اس کے بعد اپنے پہلے امریکی دورے پر روانہ ہوئیں۔ امریکا اور کینیڈا کے دورے میں 15 ریاستیں اور چند شہروں دورہ کیا [22] [26] ۔ اسی سال حدیقہ نے برطانیہ ، آسٹریلیا اور چین کا دورہ بھی کیا۔ 1997 میں حدیقہ نے ہیپی ویلی ریس کورس میں "ہانک کانگ جشن 97" میں حصہ لیا [22] ۔ اسی سال حدیقہ پہلی ایشیائی گلوکارہ بنیں جن کے ساتھ پیپسی کولا انٹرنیشنل نے معاہدہ کیا [27] ۔ دنیا بھر میں وہ دوسری خاتون تھیں جن کے ساتھ معاہدہ ہوا ، پہلی گلوریا ایسٹیفن تھیں [22] ۔

1998: روشنیترميم

1998 میں کے کرکٹ ورلڈ کپ 1999کا آفیشل تھیم سانگ "انتہائے شوق" گایا جسے پیپسی نے اسپانسر کیا اور حدیقہ کی والدہ نے لکھا، موسیقی نیزر لالانی نے دی۔ گانے کی ویڈیو جامی اور عمران بابر نے بنائی [28] ۔ کرکٹ ورلڈ کپ کے دوران حدیقہ نے اپنا تیسرا البم "روشنی" ریلیز کیا جس میں ایک گانا "دوپٹہ" بھی شامل تھا۔ اس گانے کی ویڈیو مشہور سائنس فکشن فلم "میٹرکس" سے متاثر ہو کر بنائی گئی۔ یہ گانا پاکستان کے بہترین 20 پاپ گانوں میں 15ویں نمبر پر ہے [29] ۔ دوپٹہ کے ساتھ حدیقہ نے "روشنی" ، "وہ کون ہے" بھی ریلیز کیے۔ اسی البم کا چھٹا گانا "بوہے باریاں" گانے "دوپٹہ" سے بھی زیادہ مقبول ہوا۔ اب تک "بوہے باریاں" حدیقہ کا سب سے مقبول گانا مانا جاتا ہے اور اسے پاکستان کے نمایاں گانوں میں شامل کیا جاتا ہے [21] ۔ حدیقہ کو 2001 میں یونی لیور نے لپٹن کے لیے برانڈ سفیر بنا دیا۔ 2002 میں یونی لیور نے سن سلک شیمپو کے لیے بھی سائن کر لیا جو نتیجہ تھا یونی لیور نیشنل سروے "پاکستان کی مقبول ترین خواتین" [30] ۔ 2000 کے عشرے میں وہ امریکا ، کینیڈا ، برطانیہ ، مڈل ایسٹ ، آسٹریلیا ، ناروے ، یونان ، بلغاریہ اور ترکی میں کنسرٹ کرتی رہیں۔

2002: رنگترميم

2002 ستمبر میں حدیقہ نے تیسرا البم "رنگ" ریلیز کیا۔ اس میں "یاد سجن" ، "رانجھاں" ، "جوگی بن کے آ" ، "ماہی" ، "ڈھولن" جیسے مقبول گانے شامل تھے [31] ۔ "جوگی بن کے آ" گانے میں حدیقہ نے روایتی جاپانی ، عرب اور قبائلی خواتن کے کردار میں گانا گایا [18]۔ اپنی گانے "ماہی" کی ویڈیو میں ایک ویمپائر کا کردار ادا کیا جس کی عاصم رضا نے ہدایت کاری کی [32] ۔ 2004 میں انڈس میوزک کی جانب سے بہترین پاپ گلوکارہ کا ایوارڈ ملا۔ عاصم اظہر نے ماہی کی ویڈیو کے لیے بہترین ویڈیو کا ایوارڈ جیتا [33] [34] ۔ رنگ البم کی ریلیز کے کئی سال بعد انڈین صوفی گائیک "ہرش دیپ کور"جوگی بن کے آ" نے انڈین ٹی وی شو پر پیش کیا [35] ۔ اس گیت کے بول حدیقہ کی والدہ شاعرہ خاور کیانی نے لکھے تھے۔

2007: رف کٹترميم

2007 میں حدیقہ نے چوتھا اسٹوڈیو البم "رف کٹ" عامر ذکی کے ساتھ مل کر ریلیز کیا۔ اس البم کے ساتھ حدیقہ پہلی پاکستانی فنکار بنیں جن کا مکمل البم انگریزی میں تھا [36] ۔ البم سے پہلے حدیقہ اور عامر نے اردو گانا "اس بار ملو" گایا جسے عامر ذکی نے لکھا۔ اس کی ویڈیو جامی نے بنائی اور اس میں حدیقہ نے پاکستان مینٹل ہسپتال میں ایک شیزوفرانک مریض کا کردار نبھایا [37] ۔ اس ویڈیو سے پاکستان موسیقی انڈسٹری نے اہم سنگ میل عبور کیا، حدیقہ اور جامی نے بہترین ویڈیو کا ایم ٹی وی پاکستان ایوارڈ جیتا ۔ 2007 اپریل میں "لونگ تھس لائی" ریلیز کیا۔ اسی ہفتہ دا نیوز نے حدیقہ کو "ہاٹ اسٹیپر آف دا ویک" کا خطاب دیا۔ اسی مضمون میں لکھا گیا کہ "جب تک حدیقہ موجود ہے ، پاکستان کی مردانہ موسیقی دنیا میں خواتین کے لیے امید موجود ہے"۔ [36] "لونگ تھس لائی" گانے کو بہترین انگریزی گانے کے لیے میوزک ایوارڈ میں 2007 میں ایوارڈ دیا گیا۔ حدیقہ کو بہترین گلوکارہ کا ایوارڈ بھی اسی شومیں دیا گیا [30] [36] ۔

2009: آسمانترميم

جون 2009 میں چوتھی البم آسمان ریلیز کی جس میں اردو ، پنجابی ، ہندکو ، پشتو اور فارسی گانے شامل تھے۔ البم میں "سوہنیا" کی ویڈیو آگ ٹاپ 10 میں شامل رہی اور اس پر آگ 10 کی جانب سے مہینے کی فنکار شیلڈ ملی [38] ۔ البم وائبز چارٹ پر پورا سال رہی اور 2009 کی بہترین البم مقبولیت اور سیل کے حساب سے قرار پائی [39] ۔ "بوہے باریاں" فروری 2010 میں ریلیز ہوا اور لاس اینجلز ٹائمز کے مطابق "پورا ملک اسے سن رہا تھا" [40] ۔ حدیقہ کے گانے "جاناں" کو بہت سے انترنیشنل گلوکاروں نے کور کیا [41] [42] خاص طور پر چینی سنگر ہو وی نے اسے جنوبی ایشیا ایکسپو 2014 میں اسے سراہا [43] [44] ۔

2017: وجدترميم

بھائی کے ساتھ مل حدیقہ نے البم "وجد" ریلیز کیا جس کے لیے لکس اسٹائل ایوارڈ کی طرف سے سال کا البم ایوارڈ ملا [45] ۔ گانوں کی ویڈیو میں حدیقہ کے اسٹائل کی وجہ سے جنریشن [46] اور بوننزا [47] جیسے برانڈ کے ساتھ علی ذیشان [48] نے تعریف کی وو ۔

پلے بیک گائیکی اور موسیقی شراکتیںترميم

1995 میں حدیقہ کیانی نے پاکستانی فلموں میں پلے بیک سنگر کے طور پر گانا شروع کیا، جس میں عدنان سمیع کی سرگم شامل تھی۔ سرگم پر انھیں نگار ایوارڈ بھی ملا۔ شعیب منصور کی بول میں بھی گانے گائے۔ چار گانوں میں سے دو عاطف اسلم کے ساتھ تھے۔ عاطف اسلم اور حدیقہ کو چار لکس ایوارڈ ملے۔ 2006 میں برطانوی پروڈیوسر خضا کے البم میں ایک گانا گایا "مہر ماہ" [49] ۔ پاکستان میں یہ گانا فوراً مقبول ہوا ، گانے پر مجموعی تاثرات مثبت رہے [50] [51] ۔ اسی گانے پر 2006 میں لکس اسٹائل ایوارڈ میں پرفارم بھی کیا [52] ۔ 2011 میں زندگی گلزار ہے کا ٹائٹل گانا علی ظفر کے ساتھ گایا [53] ، 2006 میں عاطف اسلم کے ساتھ "آس پاس" گایا [54] ۔ میں 2002 میں امریکا کیانی نے کوک سٹوڈیو کے پانچویں سیزن میں حصہ لیا کیا انہوں نے بلھے شاہ اور امیر خسرو کے کلام پر پرفارم کیا جس پر مثبت تاثرات آئے [55] [56] [57] ۔ ہم ٹی وی کے ڈرامے "اڈاری" میں عروہ حقین کے کردار کے لیے اپنی آواز مہیا کی۔ اس ڈرامے کا ٹائٹل گانا بھی حدیقہ نے گایا اور یہ میوزک چارٹس پر ٹاپ پر رہا [58] [59] [60] ۔اس ڈرامے پر پیمرا نے غیر اخلاقی سین دکھانے پر نوٹس بھی بھیجا [61] ۔ 2018 میں تین بہادر ، اینیمیشن فلم میں ٹائٹل گانا گایا ، اس فلم کو پاکستان کی پہلی اکیڈمی ایوارڈ یافتہ ہدایت کار اور پروڈیوسر شرمین عبید رائے [62] نے بنایا۔

قابل ذکر پرفارمنسترميم

18 اگست 2005 میں حدیقہ نے میٹس شیا اسٹیڈیم میں پرفارم کیا، اگست کے مہینے میں نیویارک میں پاکستان پریڈ میں بھی پرفارم کیا [63] ۔ 2006 میں حدیقہ نے چینی پریمیئر کے لیے پرفارم کیا۔ اسی مہینے میں صدر جارج واشنگٹن کے لیے بھی پرفارم کیا [64] کیا ۔ 23 نومبر 2006 کو چین میں چین کے صدر کے لیے پرفارم کیا [65] [30] ۔ 19 مئی 2007 میں حدیقہ نے ورلڈ اکنامک فورم برائے مشرق وسطی اور شمالی افریقہ میں 28 قائدین ریاست کے سامنے پرفارم کیا [66] ۔ اس کی پرفارمنس امریکی گلوکار لائنل رچی کے بعد دوسرے دن ہوئی [67] ۔ حدیقہ نے ایک عربی گانا بھی وہاں گایا جسے بعد میں پاکستان میں بھی گایا [68] ۔ اگست 2007 میں لندن ڈے پریڈ کے موقع پر پاکستان کی 60ویں تقریب آزادی کے لیے گایا جسے جیو ٹی وی نے نشر کیا [69] ۔ حدیقہ واحد گلوکارہ تھی جس نے اس دن براہ راست گایا [70] ۔ ملی نغمہ "جیوے پاکستان" علی ظفر کے ساتھ مل کر گایا [71] ۔ حدیقہ نے پاکستان میں مشہور کمپنیوں پیپسی [72] اور سام سنگ [73]کے لیے پرفارم کیا۔ بین الصوبائی کھیل پاکستان 2016 میں صدر ممنون حسین کے شروع کیے کھیلوں کے موقع پر پرفارم کیا [74] ۔ 2016 میں ترکی صدر اردوگان کے پاکستان دورے کے موقع پر حدیقہ نے تاریخی لاہور قلعہ میں عارف لوہار کے ساتھ پرفارم کیا [75] ۔ حدیقہ کی پرفارمنس مسحور کن اور بہترین تصور کی گئی [76] ۔

سماجی و فلاحی کامترميم

مارچ 2007 میں حدیقہ کیانی نے دیگر پاکستانی گلوکاروں کے ساتھ مل کر یہ گانا گایا یہ ہم نہیں۔ یہ گانا دہشت گردی کی مذمت کرتا ہے یہی وجہ ہےکہ اس گانے کو بی بی سی او فوکس [77] پر نشر کیا گیا اور بہت زیادہ ڈاؤنلوڈ ملیں [78] اگست 2010 میں انھوں نے پاکستان آرمی کیساتھ مل کر سیلاب ذدگان کی مدد کی [79] حدیقہ نے جیو ٹی وی کے فلاحی پروگرام پکار میں بھی شرکت کی [80] پاکستان آرمی کیساتھ مل کر مظفرآباد کے علاقوں کا دورہ کیا[81] [82] نوشہرہ شہر جو سیلاب سے بہت زیادہ متاثر تھا اس کا بھی دورہ کیا [83] 2015 میں انھیں پونڈذ میریکل کی نمائندے کے طورپر منتخب کیا گیا[83] [84] بعد ازاں انھوں نے پاکستان کی نامور کامیاب خواتین منیبہ مزاری،نادیہ جمیل ،ریحام خان کے ساتھ مل کر ایک کانفرنس کی جس میں کام کے دوران خواتین کو درپیش مسائل پر آواز اٹھائی گئی [85] [86] [87] وہ باقاعدگی سے ایدھی فاؤنڈیشن،ایس وایس ولیج ،یونیسف اور مسلم ہینڈذ کے ساتھ مل کر فلاحی کاموں میں حصہ لیتی ہیں [88] [89] وہ شوکت خانم ہسپتال کے لیے بھی کام کرتیں ہیں [90] [91] انھوں نے آفسم انٹرنیشنل [92] اور اقوامِ متحدہ کے لیے بھی کام کیا[93] [94]

پاکستان آئڈلترميم

پاکستان آئڈل گانے کا ایک مقابلہ ہے جو آئڈل فرنچائز کا حصہ ہےجس کی ملکیت 19 اینٹرٹینمنٹ کے پاس ہے [95]۔ یہ مقابلہ برطانوی سیریز پاپ آئڈل سے متاثر ہو کر بنا [96] ۔پاکستانی مارکیٹ کے لیے اسے جیو ٹی وی نے بنایا [97] ۔اس شو کے لیے جنون کے علی عظمت ، بشری انصاری اور حدیقہ ججب بنے [98] ۔ پہلا سیزن بہت متنازع رہا۔

اعزازاتترميم

2015 میں دا نیوز انٹرنیشنل نے حدیقہ کو پاکستان کی انتہائی بااثر اور طاقتور خواتین میں شامل کیا [99] ۔ ڈیلی ٹائمز نے ایسے پاکستانیوں کی لسٹ بنائی جو ملک کے لیے بہت فخر کا باعث بنے، حدیقہ 15ویں نمبر پر تھیں، اس لسٹ میں شرمین چنائے [100] ، ملالہ یوسفزئی [101] اور عبدالستار ایدھی [102] شامل ہیں۔ اپریل 2015 میں حدیقہ نے میوزک میلہ [103] لوٹ لیا اور امریکی ایمبسی کے تحت تین دن کا فیسٹیول منتعقد کیا گیا، "پاپ کوئین آف پاکستان" [104] نے پہلی بار قوالی گائی اور مثبت تاثر چھوڑا [105] ۔ اسی دن حدیقہ نے چھٹی البم وجد پر کام کا بھی اعلان کیا [104] [106] ۔

ذاتی زندگیترميم

حدیقہ کے اجداد کا تعلق ازمیر ترکی سے ہے۔۔ 2006ء تک کیانی پاکستان میں اپنی ماں کے ساتھ رہتی تھیں۔ اس نے ایدھی فاؤنڈیشن سے 2005ء میں زلزلے میں بچ جانے والا ایک بچہ گود لیا[107] ۔[108][109] اس کے بعد اس نے یو کے ایک افغانی تاجر سیدفریدسروری سے شادی کی۔ اور 2008ء میں اس سے طلاق لے لی[110] ۔[110]

البمترميم

اعزازات اور نامزدگیاںترميم

سال شعبہ یادہانی نتیجہ
نگار اعزاز
1995 بہترین پس پردہ گلوکارہ سرگم فاتح
وحید مراد اعزاز
1995 بہترین نئی گلوکارہ  – فاتح
بہترین گلوکارہ ٹی۔ وی۔  – فاتح
این ٹی ایم اعزازات
1995 بہترین گلوکارہ، ناظرین کی پسند نصرت فتح علی خان کو "بہترین گلوکار" اسی شو میں فاتح
پاکستان موسیقی صنعت کا اعزاز
1996 بہترین گلوکارہ  – فاتح
کثیر فروخت ہونے والا البم "راز" فاتح
پی ٹی وی اعزازات
2000 بہترین گلوکارہ  – فاتح
2010  – Honoured for contributions to پی ٹی وی گلوبل اور to Pakistani music Honoured
انڈس میوزک اعزازات
2004 بہترین گلوکارہ  – فاتح
2005 بہترین گلوکارہ  – فاتح
Women's Excellence اعزازات
2005 Excellence in Pop & Light Music  – فاتح
حکومت پاکستان
2006 تمغا امتیاز  – دیا گیا
اے آر وائی میوزک اعزازات
2008 بہترین انگریزی گانا "Living This Lie" feat. عامر ذکی فاتح
موسٹ وانٹڈ فیمیل  – فاتح
آگ ٹی وی
2009 اس ماہ کا فنکار  – فاتح
پاکستان اسٹائل اعزاز
2010 Stylish Singer Female[111]  – فاتح
ایم ٹی وی اعزازات
2009 بہترین وڈیو "اس بار ملو" (ہدایت کار جامی کو ملا) فاتح
2012 بہترین موسیقی کردار  – نامزد
سال کا بہترین گانا "دل جانیا" از شعیب منصور کی "بول فلم" نامزد
ٹی وی ون
2009 بہترین گلوکارہ  – فاتح
Brit Asia Music اعزازات[112]
2010 بہترین کردار  – نامزد
بہترین بین الاقوامی کردار  – نامزد
Indus Style اعزازات[113]
2010 Most Innovative Singer  – فاتح
Most Stylish Female Pop Singer  – فاتح
Lux Style اعزازات
2012 سال کا بہترین گانا "ہونا تھا پیار" ہمراہ۔ عاطف اسلم نامزد
بہترین اصلی ساؤنڈ ٹریک "بول" ساؤنڈ ٹریک فاتح
2013 بہترین اصلی ساؤنڈ ٹریک "زندگی گلزار ہے" (علی ظفر کو ملا) فاتح
بگ ایپل میوزک اعزازات[114]
2014 بہترین گلوکارہ پاکستان[115]  – فاتح
2015 بہترین گلوکارہ پاکستان  – فاتح
Most Popular Female Singer (International)[116] First Pakistani singer to ever be nominated in this category. نامزد
2016 بہترین گلوکارہ پاکستان[117] فاتح
پاکستان ذرائع ابلاغ اعزازات
2010 بہترین گلوکارہ  – نامزد
2014 بہترین ڈراما اصلی ساؤنڈ ٹریک "زندگی گلزار ہے" نامزد
ہم اعزازات
2014 بہترین اصلی ساؤنڈ ٹریک "زندگی گلزار ہے" فاتح[118]
انٹرنیشنل ڈائنامک وومنز اعزاز
2015 دی ڈائنامک اعزاز  – فاتح
Daily Times Pakistan[119]
2015 پرائٹ آف پاکستان  – وصول کنندہ

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب "Hadiqa Kiani's Biography". 20 جنوری 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2017. 
  2. "Hadiqa Kiani's Official Twitter". 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2017. 
  3. "Hadiqa, Aisam become UNDP's goodwill envoys". News in English. Dawn. 9 نومبر 2010. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 12 جولائی 2012. 
  4. "Pride of Pakistan:Hadiqa Kiani". Dailytimes.com.pk. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  5. "Top 10 Best Pakistani Singers". TheTopTens.com. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  6. "Top Ten Most Popular Pakistani Female Singers". Passion.Pk. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  7. Hataf Siyal. "Hadiqa Kiyani to construct 150 approx houses for flood victims - - Pakium.pk". Pakium.com. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  8. "Hadiqa, Aisam become UNDP's goodwill envoys". News in English. Dawn. 9 November 2010. اخذ شدہ بتاریخ 12 جولا‎ئی 2012. 
  9. ^ ا ب "Pride of Pakistan:Hadiqa Kiani". Dailytimes.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  10. "Top 10 Best Pakistani Singers". TheTopTens.com. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  11. "Top Ten Most Popular Pakistani Female Singers". Passion.Pk. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  12. "Hadiqa, becomes UNDP goodwill envoys". 11 نومبر 2010 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 07 دسمبر 2020. 
  13. "Aisam, Hadiqa appointed UNDP Goodwill Ambassador". Express Tribune. 8 November 2010. اخذ شدہ بتاریخ 11 نومبر 2010. 
  14. "The News Women". women.thenews.com.pk. 20 جنوری 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 08 مارچ 2016. 
  15. "TheNews e-paper [Beta Version]". e.thenews.com.pk. 12 مارچ 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 08 مارچ 2016. 
  16. "PTV Global Official Website". Global.ptv.com.pk. 05 مارچ 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  17. "An Interview With Hadiqa Kiyani". PakistaniMusic.com. 06 جنوری 2009 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  18. ^ ا ب "|\/|otherhood – Pakistan's First Parenting Magazine". Motherhood.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  19. "VC recalls famous alumni as GCU turns 150". Dailytimes.com.pk. 13 جنوری 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  20. "Famous Pop Singer from Pakistan-Hadiqa Kiyani". Pakistan 360 degrees. 2012-12-02. 23 جنوری 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  21. ^ ا ب "Hadiqa Kiani | Pakistan Idol: Jo Hai Dil Ki Awaz". Pakistan Idol. 1974-08-11. 13 جنوری 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  22. ^ ا ب پ ت ٹ "Hadiqa Kiani – Voyage to stardom in the world of music". Reviewit.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  23. "Hadiqa's rise to Glamour.". AuthorsDen.com (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 06 جنوری 2016. 
  24. "Hadiqa, Irfan Kiani release 'Jab Se Tum' – The Express Tribune". The Express Tribune (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 06 جنوری 2016. 
  25. "Instep Magazine | Fashion | Beauty | Entertainment | The News on Sunday". jang.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 06 جنوری 2016. 
  26. "@~@~ Hadiqa Kiani Interview ~@~@ [Archive] – Urdu Planet Forum -Pakistani Urdu Novels and Books| Urdu Poetry | Urdu Courses | Pakistani Recipes Forum". Urduplanet.com. 2011-12-18. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  27. "The Record Music Magazine". Therecordmag.com. 09 مارچ 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  28. "Pakipop.com> Reflection> Profile: Jamshed Mahmood". Pakipop.com. 25 ستمبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 25 ستمبر 2015. 
  29. "> Reflection> The 20 Best Pop Songs Ever". Pakipop.com. 13 جنوری 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  30. ^ ا ب پ "Hadiqa Kiyani". Pakistantimes.com. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  31. "[ViewsCraze.com Series] How Our Artists Have Evolved – Hadiqa Kiyani". Viewscraze.com. اخذ شدہ بتاریخ 25 ستمبر 2015. 
  32. "Video saved the radio star". Thefridaytimes.com. 13 جنوری 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  33. "Drumming up a Storm | Arts & Culture | Newsline". www.newslinemagazine.com. اخذ شدہ بتاریخ 13 جنوری 2016. [مردہ ربط]
  34. "How Our Artists Have Evolved – Hadiqa Kiyani". Viewscraze.com. 2006-02-21. 25 ستمبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  35. "Heer Ranjah by Harshdeep kaur". YouTube. 2014-04-20. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  36. ^ ا ب پ "INSTEP Magazine". Jang.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  37. "> Evaluation> Hadiqa Kiani & Aamir Zaki – Rough Cut". Pakipop.com. 23 نومبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  38. Sadaf Fayyaz (2009-12-29). "Koolmuzone Music Blockbusters of 2009: Top 5 Albums". Koolmuzone.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  39. "What they are . . . – latimes". Articles.latimes.com. 2009-12-23. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  40. "Hadiqa Kiani – Afghan Singer covers Hadiqa Kiani's 'Janan'". Facebook. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  41. "Janan Janan – Hadiqa Kiani (Ätio Cover) by Ätio Music | Free Listening on SoundCloud". Soundcloud.com. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  42. "Chinese singer covers Hadiqa's Pashto song – The Express Tribune". Tribune.com.pk. 2015-06-02. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  43. "Hadiqa Kiani – Chinese singer's Tribute to Hadiqa Kiani's...". Facebook. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  44. Staff، Images (2018-02-21). "Who won big at Lux Style Awards 2018?". Images (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 13 دسمبر 2018. 
  45. "Here is the list of winners for Hum Style Awards 2018 | Pakistan Today". www.pakistantoday.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 13 دسمبر 2018. 
  46. Sponsor، Images Staff | (2017-06-08). "Hadiqa Kiani oozes elegance in this TVC for Bonanza Satrangi". Images (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 13 دسمبر 2018. 
  47. "Hadiqa Kiani's rendition of 'Chaap Tilak' teems with colours". Something Haute (بزبان انگریزی). 2017-07-28. اخذ شدہ بتاریخ 13 دسمبر 2018. 
  48. Mohsin Javaid (2010-04-23). "Hadiqa Kiyani Pakistani Female Pop Singer | Persons & Personalities". Guidepk.info. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  49. "Instep Today: Why Musicians Don't Release Singles". Koolmuzone.pk. 2009-09-07. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  50. "INSTEP Magazine". Jang.com.pk. 09 مئی 2007 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  51. "Lux Style Awards 2006". Facebook. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  52. "Zindagi Gulzar Hai OST by Hadiqa Kiani Full (Title Song) – HumTv Drama – - Video Dailymotion". Dailymotion.com. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  53. "Mere aas paas- by atif aslam and hadiqa kiyani. – Video Dailymotion". Dailymotion.com. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  54. Farooq، Aisha (2015-10-22). "12 Coke Studio Pakistan must watch Songs". DESIblitz.com. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  55. "The-News-International-Latest-News-Breaking-Pakistan-News". Thenews.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  56. Ilyas، Alina (2012-06-22). "The good, the bad and the ugly of Coke Studio episode 3 – The Express Tribune Blog". Blogs.tribune.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  57. Haider، Sadaf (22 June 2016). "Udaari is proof: A TV drama doesn't need helpless women to be a hit". 
  58. Naqvi، Ahmer (30 May 2016). "Pop goes the silver screen! How musicians in Pakistan found their niche in cinema - again". 
  59. "Udaari's OST Topping Charts". 26 May 2016. 
  60. "PEMRA issues show-cause notice to Udaari - The Express Tribune". 13 May 2016. 
  61. Crilly، Rob (2012-02-27). "Oscars 2012: Pakistan celebrates first Oscars win". Daily Telegraph (بزبان انگریزی). ISSN 0307-1235. اخذ شدہ بتاریخ 13 دسمبر 2018. 
  62. "ARTSEDGE: Gift of the Indus – Arts of Pakistan – Music". Artsedge.kennedy-center.org. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  63. "Hadiqa kiani". Find My Hero. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  64. "Royal couple meet youths, launch business scheme – Newspaper". Dawn.com. 2006-10-31. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  65. "World Economic Forum on the Middle East and North Africa | World Economic Forum – World Economic Forum on the Middle East and North Africa". Weforum.org. 2013-05-26. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  66. "The Best Ever Pakistani Music Collection!: 07/16/09". Musicfaheem.blogspot.com. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  67. "Hadiqa kiani Arabic song "Ah we Nos"". YouTube. 2008-03-01. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  68. "Associated Press Of Pakistan ( Pakistan's Premier NEWS Agency ) – Festival to Mark 60 years of Pakistan Independence". App.com.pk. 28 ستمبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  69. "INSTEP Magazine". Jang.com.pk. 24 اگست 2007 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  70. "Jeevey Pakistan by Hadiqa Kiani & Ali Zafar: LIVE". YouTube. 2010-08-13. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  71. "Going green with the chaand sitare - The Express Tribune". 11 August 2015. 
  72. "Samsung Electronics Pakistan introduces new lineup of QLED TV - Technology - Dunya News". 
  73. "First inter-provincial games begin with opening ceremony in Islamabad - Sports - Dunya News". 
  74. "Hadiqa Kiani aims to revive bygone Mehndi traditions with latest video - The Express Tribune". 24 January 2017. 
  75. "Turkish President expresses gratitude over CM Punjab's hospitality - Pakistan - Dunya News". 
  76. "Reporter's Notebook: A Different Kind of Terror Tune". Fox News. 2007-08-08. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  77. "Yeh Hum Naheen Foundation". Insight on Conflict. 2015-12-12. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  78. "TheNews International Pakistan – Breaking News, World, Business, Sports, Entertainment". old.thenews.com.pk. 17 نومبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 21 اکتوبر 2015. 
  79. "Celebs on their mission". Daily Mail News. 03 ستمبر 2010 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 17 نومبر 2010. 
  80. "Pak celebs continue to help". Karachi Digest. 02 اکتوبر 2010 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 13 نومبر 2010. 
  81. Syed، Madeeha. "Hadiqa Kiani for UN". Dawn. اخذ شدہ بتاریخ 17 نومبر 2010. 
  82. "Oxfam Blog". 12 جون 2011 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 01 دسمبر 2010. 
  83. ^ ا ب "TheNews Weekly Magazine – Instep Today". Magazine.thenews.com.pk. 25 ستمبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  84. "Nutshell Forum – Official". Facebook. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  85. "Reham urges women to connect to fellow leaders". Dailytimes.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  86. Correspondent، Our (2015-05-24). "Reham says strong support system key to confidence – The Express Tribune". Tribune.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  87. "UNICEF Pakistan – Media centre – Pakistan celebrates World Polio Day". Unicef.org. 2012-10-24. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  88. "Hadiqa charges up anti-polio drive – Newspaper". Dawn.com. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  89. "Charitable fundraising event with Hadiqa Kiyani at Karachi". Shaukatkhanum.org.pk. 17 نومبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 21 اکتوبر 2015. 
  90. "corporate corner". The Nation. اخذ شدہ بتاریخ 21 اکتوبر 2015. 
  91. "Global celebrities wear green scarves in solidarity with Afghan women". Oxfam International. اخذ شدہ بتاریخ 21 اکتوبر 2015. 
  92. "Marc-André Franche on Twitter: "Thank you to the wonderful & talented @Hadiqa_Kiani for being @UNDP_Pakistan good will ambassador & promoting voter education, part women"". Twitter. 2015-11-15. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  93. "National Goodwill Ambassadors". UNDP in Pakistan. اخذ شدہ بتاریخ 21 اکتوبر 2015. 
  94. "Speakers". Tedxkinnaird.org. 2014-06-20. 22 دسمبر 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  95. "Pakistan Idol talent show is broadcast for first time". بی بی سی نیوز. BBC. 6 December 2013. اخذ شدہ بتاریخ 24 دسمبر 2013. 
  96. "Music reality show 'Pakistan Idol' starts on Geo Entertainment today". دی نیوز. اخبارات کا جنگ گروہ. 6 December 2013. اخذ شدہ بتاریخ 31 دسمبر 2013. 
  97. "The three legendary judges in Pakistan Idol from pmm.net.pk | Pakistan Idol: Jo Hai Dil Ki Awaz". Pakistan Idol. 2013-11-30. 13 جنوری 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  98. "The News Women". women.thenews.com.pk. 20 جنوری 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 07 دسمبر 2020. 
  99. "Pride of Pakistan —Sharmeen Obaid-Chinoy". Dailytimes.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  100. "Pride of Pakistan : MALALA YOUSAFZAI". Dailytimes.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  101. "Pride of Pakistan:Abdul sattar edhi". Dailytimes.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  102. "Music Mela — a feast for music lovers – Pakistan". Dawn.com. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  103. "Hadiqa Kiyani to launch new music album". Hipinpakistan.com. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  104. ^ ا ب "MUsic Mela 2015 End with High Hopes". Youthtimes.com.pk. 2015-12-15. 13 جنوری 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  105. "The-News-International-Latest-News-Breaking-Pakistan-News". Thenews.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  106. "Interview: Hadiqa Kiyani | Arts & Culture | Newsline". Newslinemagazine.com. 2005-12-06. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  107. "Resham helps deserted child – The Express Tribune". Tribune.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  108. "Interview: Hadiqa Kiyani | Arts & Culture | Newsline". Newslinemagazine.com. 2005-12-06. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  109. "Resham helps deserted child – دی ایکسپریس ٹریبیون". Tribune.com.pk. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  110. ^ ا ب "Pakistani Singeer Hadiqa Kiyani's Biography". Topstars.com.pk. 2014-06-11. 13 جنوری 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  111. Qamar، Saadia (2010-10-21). "When the stars start to shine". Tribune.com.pk. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2015. 
  112. "Brit Asia TV Music اعزازات 2010 Official Nominees". Awazfm.co.uk. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 اکتوبر 2015. 
  113. "HADIQA KIANI: Hadiqa Kiani Wins Another اعزاز! INDUS STYLE اعزازات!". HADIQA KIANI. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 اکتوبر 2015. 
  114. "Atif Aslam, Hadiqa nominated in Big ایپل میوزک اعزازات". bitLanders. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 اکتوبر 2015. 
  115. "TheNews Weekly Magazine". magazine.thenews.com.pk. 13 جنوری 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 اکتوبر 2015. 
  116. "Mondanite | Haifa Wehbe Showing Yousra Some Love!". Mondanite.net. 06 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 اکتوبر 2015. 
  117. "بگ ایپل میوزک اعزازات: Dubai 2016 – PhaserMag" (بزبان انگریزی). 2016-05-11. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 جون 2016. 
  118. https://web.facebook.com/udaariofficial/photos/a.1706399849574912.1073741828.1697035420511355/1731029667111930/?type=3&theater
  119. "Pride of Pakistan:Hadiqa Kiani". DailyTimes. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 18 اکتوبر 2015.