دیر پاکستان کا ایک خوبصورت کوہستانہ خطہ ہے جو شمالی-مشرقی پاکستان میں چترال اور پشاور کے درمیان سوات کے پاس پڑتا ہے۔ دیر میں کو گندھارا تاریخی حیثیت بھی حاصل ہے جس کے ثبوت دیر عجائب گھر میں موجود ہیں۔ دیر پاکستان میں ضم ہونے سے پہلے ایک نوابی ریاست تھی جو ریاست دیر کے نام سے جانی جاتی تھی پھر جب پاکستان میں شامل ہوئی تو دیر کے پورے ریاست یا خطے کو پختونخوا کا ضلع بنایا گیا جو بعد میں 1992 میں مزید دو ضلع میں تقسیم ہوا ایک دیر زیریں اور دوسرا دیر بالا۔

Dir or Deer
دیر
قدرتی خطہ
وادئ کمراٹ
وادئ کمراٹ
مُلکFlag of Pakistan.svg پاکستان
رقبہ
 • کل5,282 کلو میٹر2 (2,039 مربع میل)
آبادی (1998)
 • کل1,373,710
زبان
 • اکثریتی زبانپشتو
منطقۂ وقتپاکستان کا معیاری وقت
بڑے قصبےتیمرگرہ اوردیر قصبہ
دیر بالا میں جانبازبانڈہ
عشیرئی درہ
دیر زیریں میں ایک ندی
وادئ میدان،دیر زیریں
موسم بہار کے دوران وادی میدان،لوئر دیر

نامترميم

دیر کا نام اصل میں دیر قصبہ کی وجہ سے پڑا۔ یہ قصبہ دیر ریاست کا دارلحکومت تھا اور ایک چھوٹا سا شہر تھا جو آج بھی دیر بالا کا ضلعی ہیڈکوارٹر ہے۔

مزید دیکھیےترميم