میوات کے خانزادہ

(ریاست میوات سے رجوع مکرر)

میوات کے خانزادہ راجپوتانہ کے سرداروں کا ایک میواتی راجپوت خاندان تھا جن کا دارالحکومت الور میں تھا ۔ خانزادے مسلمان راجپوت تھے جو راجہ سونپر پال کی اولاد تھے اور وہ ایک جدون میواتی راجپوت تھے جنہوں نے ہندوستان میں دہلی سلطنت کے زمانے میں فیروز شاہ تغلق کی دعوت پر اسلام قبول کیا تھا خانزادہ حسن خان میواتی خانزادہ راجپوت سلسلہ کا آخری شاہ میوات تھا جس نے کنواہہ کے میدان میں آخر تک ہندوستان کی آزادی کی لڑائ لڑتے ہوۓ 1527ء کو شہادت پائ۔ [1]

Khanzadas of Mewat
1372–1527
دارالحکومتالور
مذہب
حکومتTributary to the سلطنت دہلی
راجا 
• 1372
Raja Nahar Khan (first)
• 1527
Hasan Khan Mewati (last)
تاریخی دورقرون وسطی کا ہندوستان
• 
1372
• 
1527

میوات ایک وسیع رقبے پر پھیلا ہوا تھا ، اس میں ضلع الور میں تحصیل ہتھن ، نوہ ضلع ، تجارا ، گڑگاؤں، کشن گڑھ باس ، رام گڑھ ، لکشمنگڑھ تحصیل اراولی رینج اور راجستھان کے بھرت پور ضلع میں پہاڑی ، نگر ، کمان تحصیل اور اترپردیش کے ضلع متھراکا کچھ حصہ شامل تھا۔ ۔

تاریخترميم

1372 میں ، فیروز شاہ تغلق نے راجہ ناہر خان ، (جو پہلے راجہ سونپر پال کے نام سے جانا جاتا تھا ، کوٹلہ تیجارا کے) کو میوات کی سرداری عطا کی ۔ راجہ ناہر خان نے میوات میں موروثی طرز عمل قائم کیا اور ولی میوات کے لقب کا اعلان کیا۔ بعد میں ان کی اولادوں نے میوات میں اپنی خود مختاری کی تصدیق کردی۔ انہوں نے 1527 تک میوات پر حکومت کی۔

 
شہر سے الور قلعے کا دور نظارہ
 
بالا کوئلہ سے الور شہر کا نظارہ۔

زوالترميم

میوات کا آخری خانزادہ راجپوت حکمران حسن خان میواتی تھا ، جو خانوا کی جنگ میں فوت ہوا۔ اس جنگ کے بعد ، میوات کو مغل سلطنت میں ضم کر دیا گیا اور خانزادے مغل اشرافیہ کا حصہ بن گئے۔ اگلی صدیوں میں ، خانزادوں نے معاشرتی تنہائی سے بچنے کیلئے میوات کی دوسری برادریوں سے شادیاں کیں جو کہ راجپوت نسل کے مقامی مسلمان مذہب تھے۔ یہ بین شادی اس وجہ سے ہوئی ہے کہ بھرت پور میں جاٹوں کے اضافے سے خانزادوں کی معاشرتی سلامتی کو خطرہ تھا۔ [2]

میوات کے حکمرانترميم

میوات ریاست کے خانزادہ راجپوت میواتی حکمرانوں نے " ولی میوات " کا لقب اختیار کیا۔ بعد میں یہ عنوان 1505 میں حسن خان میواتی کے ذریعہ " شاہ میوات " رکھ دیا گیا۔

نسب
میوات ریاست کے حکمران راج کریں
پہلا راجہ نہر خان میواتی ، fka راجہ سونپر پال - میوات ریاست کے بانی اور خانزادہ راجپوتوں کے پیشوا 1372–1402
دوسرا راجہ خانزادہ بہادر خان میواتی ۔1406 میں بہادر پور کی بنیاد رکھی۔ 1402–1412
تیسری راجہ خانزادہ اکلیم خان میواتی 1412–1417
چوتھا راجہ خانزادہ فیروز خان میواتی نے - 1419 میں فیروز پور جھیرکا کی بنیاد رکھی۔ 1417–1422
5 ویں راجہ خانزادہ جلال خان میواتی 1422–1443
6 ویں راجہ خانزادہ احمد خان میواتی 1443–1468
ساتویں راجہ خانزادہ زکریا خان میواتی 1468–1485
آٹھویں راجہ خانزادہ علاوال خان میواتی - انسانی قربانی کے عمل کو روکنے کے لئے نیکمبھ راجپوتس سے بالا کوئلہ جیت گیا۔ 1485-1504
9 ویں راجہ خانزادہ حسن خان میواتی ۔ میوات کا آخری خانزادہ راجپوت حکمران۔ 1504–1527

یہ بھی دیکھیںترميم

حوالہ جاتترميم

  1. Bharadwaj، Suraj (2016). State Formation in Mewat Relationship of the Khanzadas with the Delhi Sultanate, the Mughal State, and Other Regional Potentates. Oxford University Press. صفحہ 11. اخذ شدہ بتاریخ 24 اکتوبر 2019. 
  2. Vijaya Ramaswamy (5 July 2017). Migrations in Medieval and Early Colonial India. Taylor & Francis. صفحات 113–114. ISBN 978-1-351-55825-9. 

3. توزک بابری از ظہیرالدین بابر بادشاہ ،

4. تاریخ شاہی از احمد یادگار،

5. آئین اکبری از علامی ابو الفضل،

6. منتخب التواریخ از ملا عبد القادر بدایونی،

7۔ طبقات اکبری از نظام الدین بخشی،

8۔ مرقع میوات از شرف الدین شرف سانٹھاواڑی،

9. ارژنگ تجارہ از مخدوم محمد شیخ