میر اکبر علی خان سکندر جاہ، آصف جاہ سوم

میر اکبر علی خان یا آصف جاہ سوم (پیدائش: 11 نومبر 1768ء – وفات: 21 مئی 1829ء) ریاست حیدرآباد کا چھٹا نظام تھا جس نے 1803ء سے 1829ء تک حکمرانی کی۔

میر اکبر علی خان سکندر جاہ، آصف جاہ سوم
Sikandar Jah.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 11 نومبر 1768  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
حیدرآباد  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 21 مئی 1829 (61 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
حیدرآباد  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدفن خلد آباد،  مکہ مسجد  ویکی ڈیٹا پر (P119) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Asafia flag of Hyderabad State.svg ریاست حیدرآباد  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد ناصر الدولہ  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد علی خان آصف جاہ ثانی  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ مقتدر اعلیٰ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں


منیر الملک بہادر، سکندر جاہ کے عہدِ حکومت میں ریاست حیدرآباد کا وزیر اعظم۔

سوانحترميم

سکندر جاہ کی پیدائش 11 نومبر 1768ء کو چومحلہ محل، حیدرآباد دکن میں ہوئی۔ سکندر جاہ کے والد نظام علی خان آصف جاہ ثانی اور والدہ تہنیت النساء بیگم تھیں۔

ازدواجترميم

سکندر جاہ کی شادی جہاں پرور بیگم صاحبہ سے مئی 1800ء میں ہوئی جو حاجی بیگم کے نام سے مشہور تھی۔دوسری بیوی فضیلت النساء بیگم تھی جنہیں چاندنی بیگم بھی کہا جاتا تھا۔

عہد حکومتترميم

سکندر جاہ کے عہدِ حکومت میں سکندر آباد میں برٹش راج کے ابتدائی چھاؤنی بنائی گئی لیکن سکندر آباد کے علاوہ انگریزوں کو حیدرآباد، دکن میں عام گھومنے پھرنے کی اجازت نہیں تھی۔ سکندر جاہ کے دور میں اُس کا بیٹا صمصام الدولہ میر بشیر الدین علی خان اُس کے بھائی ناصر الدولہ کا دفاعی مشیر تھا۔ سکندر جاہ نے اپنے عہد میں ایسٹ انڈیا کمپنی کے ساتھ کوئی سیاسی معاہدہ نہیں کیا۔

وفاتترميم

سکندر جاہ کی وفات 61 سال کی عمر میں 21 مئی 1829ء کو چومحلہ محل، حیدرآباد دکن میں ہوئی۔

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم