وقار یوسف عظیمی معروف قلم کار، صحافی، روحانی دانشور اور ماہنامہ روحانی ڈائجسٹ کے مدیر، پاکستان کے معروف صوفی بزرگ حضرت خواجہ شمس الدین عظیمی کے صاحبزادے ہیں۔ وقار یوسف عظیمی کی تحریروں میں روحانی علوم، سیرت النبیﷺ، تصوف، طب، مابعد النفسیات، روحانی علاج، عمرانیات جیسے موضوعات شامل ہیں۔ آپ1981ء سے شعبۂ طب اور صحافت سے وابستہ ہیں۔ آپ روحانی ڈائجسٹ کے مدیر اور دیگر کئی کتابوں کے مصنف ہیں۔

وقار یوسف عظیمی
معلومات شخصیت
پیدائش 9 اکتوبر ، 1958ء
کراچی، پاکستان
قومیت پاکستانی
عملی زندگی
دور 1958ءتاحال
صنف اسلام ، روحانیت ، تصوف
موضوعات تصوف ، بین المذاہب رواداری ، خدمت خلق ، روحانی علوم کا فروغ ، روحانی و معاشرتی اقدار
ادبی تحریک سلسلۂ عظیمیہ، آل پاکستان نیوز پیپر سوسائٹی، کونسل آف پاکستان نیوز پیپر ایڈیٹرز
کارہائے نمایاں ماہنامہ روحانی ڈائجسٹ کا کالم روحانی ڈاک ، روزنامہ جنگ سنڈے میگزین کا کالم روشن راستہ ،کتاب معلم (جلد اول) ، صفہ (احادیث کا مجموعہ) ، نظرِ بد اور شر سے حفاظت
ویب سائٹ
ویب سائٹ www.azeemiasilsila.org
dr-waqar-yousuf-azeemi.blogspot.com
P literature.svg باب ادب

1986ء سے آپ پاکستان کے کثیر الاشاعت اخبار روزنامہ جنگ کے کالم نگار ہیں، سال 2016 اور 2017 میں ڈاکٹر وقار یوسف عظیمی کے کالم بعنوان حقوق العوام اور روشن راستہ روزنامہ ایکسپریس میں شایع ہوئے۔اس کے بعد آپ کی تحریریں دوبارہ روزنامہ جنگ میں شایع ہونے لگیں۔ آپ کی تحریریں پاکستان کے دیگر اخبارات و رسائل میں بھی شائع ہوئی ہیں۔ ڈاکٹر وقار یوسف عظیمی پاکستانی اخبارات کی تنظٰیم آل پاکستان نیوز پیپر سوسائٹی (APNS) اور ایڈیٹر کی تنظٰیم کونسل آف پاکستان نیوز پیپرز ایڈیٹر (CPNE) میں کئی مرتبہ عہدوں پر منتخب ہوئے ہیں۔[1]

حالاتِ زندگیترميم

وقار یوسف عظیمی کی ولادت 9 اکتوبر 1958ء میں کراچی میں ہوئی۔ آپ نے گریجویشن کراچی یونیورسٹی سے کیا اور ہمدرد کالج سے طب کی ڈگری حاصل کی۔ حال ہی میں کراچی یونیورسٹی سے پی ایچ۔ ڈی کی ڈگری حاصل کی۔ ڈاکٹر وقار یوسف عظیمی 1981ء سے صحافت سے وابستہ ہیں۔ روحانی ڈائجسٹ کی ادارت کے علاوہ روزنامہ جنگ کے ادارتی صفحہ پر 1986ء سے کالم نگاری بھی جاری ہے۔ پاکستان میں اخبارات و رجرائد کی تنظیم آل پاکستان نیوز پیپرز سوسائٹی ( اے پی این ایس) اور ایڈیٹرز کی تنظیم کونسل آف پاکستان نیوز پیپر ایڈیٹرز (سی پی این ای) میں بھی مختلف اہم ذمہ داریوں پر کام کرنے کا موقع ملا۔ متعدد بار آل پاکستان نیوز پیپرز سوسائٹی کے جوائنٹ سیکریٹری اور فنانس سیکریٹری کی حیثیت سے خدمات سر انجام دیں۔ [2] اس کے علاوہ آپ کنوینئر پریا ڈیکل کمیٹی اور کنوینئر ڈیویلپمنٹ اینڈ پروگرام کمیٹی اور کونسل آف پاکستان نیوز پیپر ایڈیٹرز (سی پی این ای) کے نائب صدر بھی رہ چکے ہیں۔

بحیثیت مصنفترميم

بحیثیت مصنف ڈاکٹر وقار یوسف عظیمی کی کئی کتب منظر عام پر آچکی ہیں۔ جن میں معلم (نماز کی کتاب)، صفہ (احادیث کا مجموعہ)، حق الیقین، نظر بد اور شر سے حفاظت شامل ہیں۔ علاوہ ازیں آپ نے سلسلۂ عظیمیہ کے امام قلندربابا اولیاءؒ کی شان میں مختلف شعرا کی جانب سے لکھی گئی کئی مناقب کا ایک مجموعہ بھی ترتیب دیکر شائع کیا ہے۔

ڈاکٹر وقار یوسف عظیمی ماہانہ روحانی ڈائجسٹ کے ایڈیٹر ہیں۔ اس رسالہ میں آپ کے مستقل مضامین میں اداریہ حق الیقین اور لوگوں کے مسائل جوابات پر مبنی کالم روحانی ڈاک شامل اشاعت ہوتے ہیں۔ آپ کے فکری کالم اور تجزیاتی مضامین روزنامہ جنگ[3]، روزنامہ ایکسپریس[4]، دی نیوز، نیشن، قومی اخبار کراچی، روزنامہ اساس راولپنڈی، روزنامہ تجارت لاہور، ہفت روزہ عزم لاہور اور دیگر کئی اخبارات میں شائع ہوتے رہے ہیں۔ روزنانہ جنگ کے ادارتی صفحہ پر بھی حالات ِ حاضرہ پر مضامین شائع ہوتے رہے ہیں۔

دیکھیے ڈاکٹر وقار یوسف عظیمی کے کالم کی فہرست برائے روزنامہ جنگ۔ بیرونی روابط

دیکھیے ڈاکٹر وقار یوسف عظیمی کے مضامین کی فہرست برائے ماہنامہ روحانی ڈائجسٹ۔ بیرونی روابط

خدمت خلق کے مشن کے تحت لوگوں کے روحانی، معاشی، تعلیمی، خانگی، ازدواجی وغیرہ مسائل کے حل کے لیے روزنامہ جنگ سنڈے میگزین میں آ پ کاکالم ’’روشن راستہ‘‘ مقبول ہوا۔ روحانی ڈائجسٹ میں کالم ’’روحانی ڈاک‘‘ اسی جذبۂ خدمت خلق کا مظہر ہے۔ جس میں لوگوں کے مسائل اور بیماریوں کا روحانی علاج پیش کیاجاتاہے۔ خدمت کا یہ سلسلہ تاحال جاری ہے۔

تصانیفترميم

وقاریوسف عظیمی کی پہلی کتاب ہے معلم (جلد اول) ارکان اسلام پر ایک تربیتی کورس کا درجہ رکھتی ہے۔ جس میں انہوں نے عام انداز سے ہٹ کر ارکان اسلام کی تفہیم کی ہے۔ عبادات کے عمومی تشریعی طریقے کی بجائے انہوں نے پہلے ایک مسلمان گھرانے کا ماحول پیدا کیا ہے اور ماں باپ اور بچوں کے لیے ایک ایسی فضا بنائی ہے جس میں دینی احکام کے مصالح اور مقاصد کو سمجھنے کا ذہن بن جاتاہے اور پھر کتاب میں تفصیل کے ساتھ اسلامی عبادات کی مقصدیت پر روشنی ڈالی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ سرورِ عالم ﷺ کی سیرت طیبہ کی جھلکیاں بھی اس میں نظر آتی ہیں اور قاری ارکان اسلام کی حکمتوں سے مانوس ہوتاچلا جاتاہے۔ مکالماتی اسلوب میں حکیم وقاریوسف عظیمی نے سلیس وسادہ زبان میں یہ کتاب لکھی ہے کہ قاری کی دلچسپی آخر تک قائم رہتی ہے اور اس کا ذہن دینی مصالح کو قبول کرتاجاتاہے

کتاب حق الیقین اصلاح معاشرہ اور بیداریٔ شعور کے ضمن میں ماہنامہ روحانی ڈائجسٹ میں شایع ہونے والے آپ کے کالم کا مجموعہ ہے۔ اس کتاب میں مصنف نے خیالی تجریدی یا فلسفیانہ فضا سے ہٹ کر زمانہ ٔ حال کی روز مرہ زندگی اور مسائل کو سامنے رکھا ہے۔ مسلم معاشرے میں مغرب سے مرعوبیت یا مغلوبیت کے اسباب۔ انفرادی اور اجتماعی فکر کی اصلاح۔ ردّ عمل کی بجائے عمل کی نفسیات پر توجہ۔ معاشرے کی تبدیلی کے لیے اجتماعی جدوجہد کی ضرورت۔ دعاؤں کی قبولیت اور عدم قبولیت۔ ہمارے معاشرتی روّیے اور اُن کے سُدھار کے طریقے۔ خواتین کے حقوق۔ عمل اور نیت۔ اولاد کی صحیح پرورش اور تربیت، مذہب اور سائنس۔ یہ وہ چند موضوعات ہیں جن پر ’’حق الیقین‘‘ میں زور دیا گیا ہے۔ طرزِ تحریر شگفتہ، زبان سادہ اور دل نشین، استدلال روز مرہ کی زندگی اور حالیہ تاریخ سے بھی پیش کیے گئے ہیں۔

کتاب نظرِ بد اور شر سے حفاظت میں ڈاکٹر وقار یوسف عظیمی نے نظرِ بد ،حسد ،جادو اوردیگر ماورائی اسباب کی وجہ سے پیدا ہونے والے مسائل ومشکلات کا جائزہ لیاہے۔ منفی اثرات کی وجہ سے صحت کی خرابی ،تعلیم کے حصول میں مشکلات ،لڑکیوں اورلڑکوں کے رشتوں میں رکاوٹیں، میاں بیوی کے درمیان تعلقات کی خرابی، کارروبار، ملازمت میں مشکلات، رہائشی یا کاروباری مقامات میں جنات کے اثرات یا دیگر وجوہات سے بھاری پن جیسے موضوعات پر روشنی ڈالی گئی ہے۔ ان مسائل ،ومشکلات سے نجات کے لیے دعائیں تجویز کی گئی ہیں۔

اس کے علاوہ سلسلۂ عظیمیہ کے امام حضرت قلندربابا اولیاءؒ کی تعلیمات، فکر اور سیرت پر ملک کے معروف شعرا کے مناقب پر مبنی کتاب بحضور قلندربابااولیاء مرتب کرنے کی سعادت بھی حاصل کی ہے۔

بحیثیت اسکالرترميم

ڈاکٹر وقار یوسف عظیمی پچیس سال سے زائد عرصے سے طب یونانی، روحانی علاج، مراقبہ،کلرتھراپی کے ذریعہ علاج معالجے کے شعبے سے وابستہ ہیں۔ خدمت خلق کے مشن کے تحت لوگوں کے روحانی، معاشی، تعلیمی، خانگی، ازدواجی وغیرہ مسائل کے حل کے لیے روزنامہ جنگ سنڈے میگزین میں آپ کاکالم روشن راستہ مقبول عام ہے۔ اس کے علاوہ روحانی ڈائجسٹ میں کالم روحانی ڈاک اسی جذبۂ خدمت خلق کا مظہر ہے، اس کے علاوہ ریڈیو اورٹیلی ویژن کے مختلف چیلنز پر آپ کے پروگرام نشر ہوتے رہتے ہیں۔

کراچی میں ریڈیو چینل ایف ایم 101 سے ہر ہفتہ مسائل اور بیماریوں کے روحانی علاج پر مبنی پروگرام مشورہ یہ ہے اور اسلامی تعلیمات کی روشنی میں مختلف معاملات پر تقاریر پروگرام شمع ہدایت میں پیش کی جاتی رہی ہیں۔ ٹی وی چینلز لبیک، ہم اور رنگ ٹی وی سے مختلف موضوعات پر آپ کے پروگرامز نشر ہوئے۔ اس کے علاوہ جیو ٹی وی پر پروگرام کلینک آن لائن اوررنگ ٹی وی پر خواب اور تعبیر کے نام سے ایک سلسلہ وار پروگرام پیش کیا گیا۔ لبیک ٹی وی پر روحانی مشوروں پر مبنی پروگرام روحانی علاجاور اپنا چینل پر تہاڈے مسائل انہاں داں حل کے نام سے ہفتہ وار پروگرام پیش کیا گیا۔ اس کے علاوہ ہم ٹی وی، پی ٹی وی، سماء ٹی وی اور کیپیٹل ٹی وی پر مختلف موضوعات ٹالک شوز میں بطور مہمان بھی شریک رہے ہیں۔

علاوہ ازیں آپ نے مختلف تعلیمی اداروں میں تصوف اور ذیلی موضوعات پر لیکچر بھی دیے ہیں۔ مختلف سیمنار ،ورکشاپ میں آپ نے شرکت کی ہے۔

حوالہ جاتترميم

  1. ڈاکٹر وقار یوسف عظیمی (جنوری 2007ء). سلسلۂ عظیمیہ اور اس کی علمی و سماجی خدمات کا تحقیقی جائزہ. مکتبہ روحانی ڈائجسٹ. صفحہ 227. 
  2. "آل پاکستان نیوز پیپرز سوسائٹی". APNS. 26 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  3. "روزنامہ جنگ". Daily Jang. 26 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  4. "روزنامہ ایکسپریس". Daily Express. 26 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 

بیرونی روابطترميم