ایڈورڈ جیمز ہیوز (17 اگست 1930 – 28 اکتوبر 1998) ایک انگریزی شاعر، مترجم، اور بچوں کے مصنف تھے۔ ناقدین اکثر انہیں اپنی نسل کے بہترین شاعروں میں سے ایک شمار کرتے ہیں [12] اور بیسویں صدی کے عظیم ترین ادیبوں میں سے گردانتے ہیں۔ [13] وہ 1984 میں ملک الشعرا مقرر ہوئے اور اپنی موت تک اس عہدے پر فائز رہے۔ 2008 میں ٹائمز نے "1945 کے بعد سے 50 عظیم برطانوی مصنفین " کی فہرست میں ہیوز کو چوتھے نمبر پر رکھا۔ [14]

ٹیڈ ہیوز
آرڈر آف میرٹ  ویکی ڈیٹا پر (P1035) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

معلومات شخصیت
پیدائش 17 اگست 1930[1][2][3][4][5][6][7]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 28 اکتوبر 1998 (68 سال)[1][2][3][4][5][6][7]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لندن  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات قولن سرطان،  دورۂ قلب  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات طبعی موت  ویکی ڈیٹا پر (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت
زوجہ سلویا پلاتھ (16 جون 1956–11 فروری 1963)[8]  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد فریڈا ہیوز،  نکولس ہیوز  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی پیمبروک (1951–)
یونیورسٹی آف میساچوسٹس ایمہرسٹ  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تخصص تعلیم آثاریات اور بشریات  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ شاعر[9]،  مترجم،  ناول نگار،  ڈراما نگار[9]،  منجم،  سائنس فکشن مصنف[10]،  مصنف،  بچوں کے مصنف،  مصنف[8][9]  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان انگریزی[11]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ملازمت یونیورسٹی آف میساچوسٹس ایمہرسٹ[8]  ویکی ڈیٹا پر (P108) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحات  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ہیوز کی جائے پیدائش Mytholmroyd ، Yorkshire میں

کیریئرترميم

سلویا پلاتھ کی موتترميم

1970-1998ترميم

ٹیڈ ہیوز آرون سینٹر، لمب بینک - 18ویں صدی کا مل مالک کا گھر، جو کبھی ہیوز کا گھر تھا
کالڈر ویلی میں لمب بینک

کامترميم

 
ریجینلڈ گرے (2004)، بینک فیلڈ میوزیم ، ہیلی فیکس کے ذریعہ ٹیڈ ہیوز کو خراج تحسین

ترجمہترميم

یادگاری اور وراثتترميم

محفوظ شدہ دستاویزاتترميم

ٹیڈ ہیوز ایوارڈترميم

ٹیڈ ہیوز سوسائٹیترميم

ٹیڈ ہیوز پیپر ٹریلترميم

ایلمیٹ ٹرسٹترميم

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب ربط : https://d-nb.info/gnd/11855459X  — اخذ شدہ بتاریخ: 27 اپریل 2014 — اجازت نامہ: CC0
  2. ^ ا ب http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11907956n — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  3. ^ ا ب دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Ted-Hughes — بنام: Ted Hughes — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  4. ^ ا ب ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w62n549k — بنام: Ted Hughes — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  5. ^ ا ب فائنڈ اے گریو میموریل شناخت کنندہ: https://www.findagrave.com/memorial/8473123 — بنام: Ted Hughes — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  6. ^ ا ب Internet Speculative Fiction Database author ID: http://www.isfdb.org/cgi-bin/ea.cgi?1742 — بنام: Ted Hughes — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  7. ^ ا ب Babelio author ID: https://www.babelio.com/auteur/wd/32916 — بنام: Ted Hughes — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  8. ^ ا ب پ اوکسفرڈ بائیوگرافی انڈیکس نمبر: https://doi.org/10.1093/ref:odnb/71121 — عنوان : Oxford Dictionary of National Biography — ناشر: اوکسفرڈ یونیورسٹی پریس
  9. https://cs.isabart.org/person/61839 — اخذ شدہ بتاریخ: 1 اپریل 2021
  10. The Encyclopedia of Science Fiction ID: https://www.sf-encyclopedia.com/entry/hughes_ted — عنوان : The Encyclopedia of Science FictionISBN 978-0-246-11020-6
  11. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11907956n — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  12. "Philip Hensher reviews Collected Works of Ted Hughes, plus other reviews". April 2004. 22 فروری 2004 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  13. Bate، Jonathan (2015). Ted Hughes: The Unauthorised Life. HarperCollins. ISBN 978-0-0081-182-28. 23 جنوری 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 16 جنوری 2016. 
  14. "The 50 greatest British writers since 1945". The Times. 5 January 2008. اخذ شدہ بتاریخ 01 فروری 2010.  (رکنیت درکار)