کوسے بحر مصطفی پاشا

عثمانی وزیراعظم (پاشا)

کوسےبحر مصطفیٰ پاشا یا ( کوسے باھر مصطفیٰ پاشا) عثمانی وزیر اعظم تھے۔ ان کے لقب کوسے کا مطلب"بغیر ڈاڑھی والے" ہے۔ وہ اپنے آبائی شہر چورلو کی وجہ سے چورلولو بحرمصطفی پاشا کے نام سے مشہور تھے۔ وزیراعظم بننے سے پہلے سے وہ شاہی اصطبلوں کے نگران تھے۔

کوسے بحر مصطفی پاشا
عثمانی وزیراعظم
مدت منصب
12 جولائی 1752 – 17 فروری 1755
حکمران محمود اول-عثمان ثالث
Fleche-defaut-droite-gris-32.png دیوتتار محمد پاشا
حاکم اوغلو علی پاشا Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
عثمانی وزیراعظم
مدت منصب
1 اپریل 1756 – 3 دسمبر 1756
حکمران عثمان ثالث
Fleche-defaut-droite-gris-32.png یرمیسیکز زادہ محمد سعید پاشا
کوجا راغب پاشا Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
عثمانی وزیراعظم
مدت منصب
1 نومبر 1763 – 30 مارچ 1765
حکمران مصطفی ثالث
Fleche-defaut-droite-gris-32.png توکی حمزہ حمید پاشا
محسن زادہ محمد پاشا Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش 18ویں صدی  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات سنہ 1765 (14–15 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the Ottoman Empire (1844–1922).svg سلطنت عثمانیہ  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مذہب اسلام
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

پہلی مدتترميم

سلطان محمود اول نے انہیں 1 جولائی 1752 کو وزیر اعظم مقرر کیا تھا۔ لیکن 14 دسمبر 1974 کو سلطان کا انتقال ہوگیا۔ نئے سلطان عثمان ثالث نے کوسے بحر مصطفیٰ پاشا کو 17 فروری 1755 کو عہدے سے برطرف کردیا۔ اس کو میڈیلی ( لیسبوس ، اب ایک یونانی جزیرہ) میں جلاوطن کردیا گیا بعد میں اسے موریا (اب یونان کا حصہ ) منتقل کردیا گیا۔ [1]

دوسری مدتترميم

وزیر اعظم کی حیثیت سے ان کی دوسری میعاد کافی مختصر تھی۔ انہیں 30 اپریل 1756 کو مقرر کیا گیا اور 3 دسمبر 1756 کو انہیں برخاست کردیا گیا ۔ انہیں روڈس (اب ایک یونانی جزیرے) پر جلاوطن کردیا گیا لیکن نئے وزیر اعظم کوجا راغب پاشا، کوسے بحر مصطفی پاشا کے دوست تھے۔ انہوں نے اسے میڈیلی اور ایغریبوز( ایوبویا ، اب ایک یونانی جزیرہ) میں مختلف عہدوں پر تعینات کیا۔ 11 جون 1758 کو انہیں مصر کا والی مقرر کیا گیا ، اس عہدے پر وہ سن 1762 تک برقرار رہے۔ اگرچہ پھر انہیں حلب (اب شام میں ) کی گورنری کے عہدے پر مقرر کیا گیا لیکن انہوں نے حلب جانے سے انکار کردیا۔ [1]

تیسری مدتترميم

وزیر اعظم کی حیثیت سے ان کی آخری مدت مصطفی ثالث کے دور میں 1 نومبر 1763 کو شروع ہوئی۔ تاہم ان پر بدعنوانی کا الزام لگایا گیا۔ اس وجہ سے انہیں 30 مارچ 1765 کو برطرف کردیا گیا تھا۔ اگلے ہی ماہ اس کو میڈیلی میں پھانسی دے دی گئی۔ [1]

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب پ Ayhan Buz:Osmanlı Sadrazamları, آئی ایس بی این 978-975-254-278-5, p.239–242