یمن میں ایک آزادی پسند تحریک شروع ہوئی ہے، جسے حوثی تحریک یا انصار اللہ کا نام دیا گیا ہے۔ یہ زیدی شیعوں کی ایک جماعت ہے۔

یمن میں حوثی بغاوت
سلسلہ the Yemeni Crisis

حوثیوں کا گروہ حوثی (اگست 2009)
تاریخ18 جون 2004 – 6 فروری 2015
(لوا خطا ماڈیول:Age میں 521 سطر پر: attempt to concatenate local 'last' (a nil value)۔)
مقامNorthern یمن and صوبہ جیزان, سعودی عرب
نتیجہ

Houthi victory in North Yemen; Conflict escalates into a یمنی خانہ جنگی (2015–تاحال) with a Saudi-led foreign intervention[12]

مُحارِب

 یمن

 سعودی عرب
Supported by:
 اردن[2][3]
Supported by:
 المغرب[4]

 ریاستہائے متحدہ[5][6][7][8]

حوثی (Ansar Allah)
 یمن (pro-Saleh forces)
Allegedly Supported by:

 ایران[9][10]

Ansar al-Sharia

کمان دار اور رہنما

یمن کا پرچم عبد ربہ منصور ہادی
(2012–2015)
یمن کا پرچم علی عبداللہ صالح
(2004–2012)
یمن کا پرچم Mohammed Basindawa
(2011–2014)
یمن کا پرچم Ali Mohsen al-Ahmar
(2004–2014)[20]
یمن کا پرچم Ali Muhammad Mujawar
(2007–2011)
یمن کا پرچم Abdul Qadir Bajamal
(2001–2007)
یمن کا پرچم Ahmed Saleh
(2000–2012)
یمن کا پرچم Yahya Saleh
(2001–2012)
یمن کا پرچم Amr Ali al-Uuzali [21]
یمن کا پرچم Ali al-Ameri [22]
یمن کا پرچم Ahmed Bawazeir  [22]
سعودی عرب کا پرچم Khalid bin Sultan
(2011–2013)

سعودی عرب کا پرچم Saleh Al-Muhaya
(2009–2011)

عبدالملک حوثی[23]
حسین بدر الدین الحوثی 
Yahya al-Houthi
Muhammad al-Houthi
Abdul-Karim al-Houthi
Abdullah al-Ruzami جنگی قیدی3
Abu Ali al-Hakem
Yusuf al-Madani 
Taha al-Madani
ابو حیدر 
Abbas Aidah 
Mohammad Abd al-Salam
Ali al-Qantawi 
Fares Mana'a4[15]


یمن کا پرچم علی عبداللہ صالح (alleged since 2014)
یمن کا پرچم Ahmed Saleh (alleged since 2014)

یمن کا پرچم Yahya Saleh(alleged since 2014)
ناصر عبد الکریم الوحیشی 
Qasim al-Raymi
Nasser al-Ansi 
Ibrahim al-Rubaish 
Khalid Batarfi
Harith bin Ghazi al-Nadhari 
طاقت

Yemen:
30,000 soldiers in-theatre[24]
66,700 total[25]
27,000 tribal fighters[26]
سعودی عرب:
100,000 deployed[27]

199,500 total[25]

حوثی
2,000 (2004)[28]
10,000 (2009)[29]

100,000 (2011)[30][31]
-
ہلاکتیں اور نقصانات

یمن:
1,000–1,300 killed
6,000 wounded[32][33][34]
(یمنی دعویٰ)
2,600–3,000 ہلاک
8,000 wounded[35]
(Independent estimates)
495 captured
(all released)[35][36][37][38]
سعودی عرب:
133 لڑائی میں مقتول[39][40]
470 WIA[40]

6 MIA/جنگی قیدی[39]

3,700–5,500 rebels and civilians killed[35] (including 187 children)[41]

3,000 arrested[42]
-

کل متاثرین:
Hundreds to thousands killed (humanitarian organizations), 25,000 (Houthi sources)[43]
2,000 Sa'dah residents handicapped[44]
250,000 Yemenis displaced[45]

1.منصبِ جامع Ali Mohsen al-Ahmar in charge of Yemeni operations against the Houthis until 2011 when he deserted.
2.شیخ Badreddin al-Houthi died of natural causes in November 2010
3.شیخ Abdullah al-Ruzami turned himself in to authorities in 2005, but was later released

4.شیخ Farris Mana'a was a government ally until his arrest in 2010, after which he endorsed the Houthis and was appointed to head their administration.

یمن کی صورت حال ترمیم

اس تنازع نے پورے یمن کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے۔ ایک طرف حکومت اور دوسرے طرف حوثی باغی متحاربین ہیں۔ صورت حال اس وقت مزید کشیدہ ہو گئی جب حوثیوں نے یمن کے دار الحکومت صنعاء پر قبضہ کر لیا۔ یمنی صدر اپنی جان بچاتے ہوئے جنوبی یمن بھاگ گئے اور وہاں عدن کو یمن کا دار الحکومت بنانے کا اعلان کر دیا گیا۔ یوں ملک دو حصوں میں تقسیم ہوا اور ساتھ ہی ساتھ مزید چھوٹے گروہ بھی ابھر آئے، جنھوں نے مزید مختلف علاقوں پرقبضہ کر لیا۔ یمن درحقیقت اس وقت تین چار حصوں میں تقسیم ہے اور دن بہ دن فرقہ وارانہ تنازع بے گناہ لوگوں کی جان لے رہا ہے اور ہزاروں لوگ معذور ہو چکے ہیں۔

سعودیہ کا رد عمل ترمیم

اس تنازع میں حوثیوں کے خلاف سعودی عرب سمیت مختلف اسلامی ممالک کا اتحاد بنا، یہاں تک کہ پاکستان کو بھی اس میں شریک ہونے کی دعوت دی گئی۔[46]

ایران کا رد عمل ترمیم

دوسری طرف حوثیوں کے حمایت میں ایران کھل کر میدان میں اترا اور ساتھ ہی ساتھ حزب اللہ نے بھی حوثیوں کی مدد کی۔[47] ایران کے دفتر خارجہ نے سعودی عرب کو براہ راست تنبیہ کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب اس لڑائی میں اپنے افعال کو روکے ورنہ سعودی عرب بھی اس جنگ کے اثرات سے بچ نہیں سکے گا۔[48]

پاکستان کا رد عمل ترمیم

سعودی عرب نے پاکستان کو کہا کہ وہ اس آپریشن میں ان کا ساتھ دے۔اس کے رد عمل میں پاکستانی وزیر دفاع نے کہا کہ پاکستان دو مسلمانوں کے درمیان جنگ میں صلح کرنے کے لیے کام کرے گا اور پاکستان ہر گز نہیں چاہتا کہ مسلم ممالک میں فساد ہو۔[49]

حوالہ جات ترمیم

  1. "Government reinforces army to eradicate Houthis"۔ ReliefWeb۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 اکتوبر 2014 
  2. "Jordanian commandos join war on Houthi fighters"۔ Press TV۔ 21 November 2009۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2009 
  3. "Saudis 'in a panic mode' as Shi'ite rebels move North from Yemen"۔ Worldtribune.com۔ 4 December 2009۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 اکتوبر 2013 
  4. Pedro Canales (3 December 2009)۔ "Marruecos y Jordania envían tropas de élite para ayudar a los saudíes en Yemen"۔ El Imparcial (بزبان الإسبانية)۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2009 
  5. "US 'sends special forces to Yemen' amid crisis"۔ Press TV۔ 14 December 2009۔ 01 نومبر 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 اکتوبر 2013 
  6. "Yemen seeks US help to quash Houthis"۔ Ahlul Bayt News Agency۔ 11 November 2009۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 31 اکتوبر 2013 
  7. #3558 - Houthi TV Airs Footage of US Military Plane in Yemeni Airbase MEMRI
  8. "Houthi victories in Yemen make Saudi Arabia nervous"۔ Al Monitor۔ 15 October 2014۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  9. Martin Reardon (30 September 2014)۔ "Saudi Arabia, Iran and the 'Great Game' in Yemen"۔ Al Jazeera۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  10. "Houthis accuse Yemen's president of arming Al-Qaeda"۔ 08 فروری 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  11. "How al Qaeda's biggest enemy took over Yemen (and why the U.S. government is unlikely to support them)"۔ The Intercept۔ 22 January 2015۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جنوری 2015 
  12. "Insurgents take control of Yemeni city"۔ Financial Times۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 اکتوبر 2014 
  13. Yemen Post Staff (27 March 2011)۔ "Houthi Group Appoints Arms Dealer as Governor of Sa'ada province"۔ Yemen Post۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  14. ^ ا ب "آرکائیو کاپی"۔ 31 مارچ 2011 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ March 28, 2011 
  15. The Muslim News Yemen after Saleh: A future fraught with violence آرکائیو شدہ (Date missing) بذریعہ muslimnews.co.uk (Error: unknown archive URL)، جمعہ 27 مئی 2011.
  16. "Bombings in Yemeni Mosques Kill More Than 130"۔ نیو یارک ٹائمز۔ 20 March 2015۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  17. "Yemen: A country contested"۔ Al Jazeera۔ 24 March 2015۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  18. "Military Operation in Yemen"۔ Sputnik News۔ 27 March 2015۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 فروری 2016 
  19. "Yemen revolutionaries celebrate deal with government"۔ Press TV۔ 2014-09-22۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  20. ^ ا ب "Ambush kills 3 Yemeni soldiers, 2 top officers"۔ PressTV۔ 3 November 2009۔ 24 دسمبر 2014 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  21. "Yemen: Houthi leader hails 'revolution'"۔ BBC News۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 اکتوبر 2014 
  22. ^ ا ب Center for Strategic and International Studies [1.pdf The Middle East Military Balance] آرکائیو شدہ (Date missing) بذریعہ csis.org (Error: unknown archive URL), 2005.
  23. Regime and Periphery in Northern Yemen: The Huthi Phenomenon - Barak A. Salmoni, Bryce Loidolt, Madeleine Wells - Google Boeken۔ Books.google.nl۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 اکتوبر 2014 
  24. "Tracker: Saudi Arabia's Military Operations Along Yemeni Border - Critical Threats"۔ Criticalthreats.org۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 اکتوبر 2014 
  25. Hakim Almasmari (10 April 2010)۔ "Thousands Expected to die in 2010 in Fight against Al-Qaeda"۔ Yemen Post۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  26. "Peninsula on the brink"۔ Ahram.org.eg۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 اکتوبر 2014 
  27. CNN Medics: Militants raid Yemen town, killing dozens, November 27, 2011.
  28. Houthis Kill 24 in North Yemen, 27 November 2011.
  29. "Yemeni Authorities Set Conditions for Ending Military Operations in Sa'ada- Yemen Post English Newspaper Online"۔ Yemen Post۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 09 نومبر 2009 
  30. Ahmed Al-Haj (19 February 2007)۔ "Clashes in Yemen Kill More Than 100"۔ Fox News۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2009 
  31. "Yemeni military battles Shi'ite rebels"۔ The Age۔ Melbourne۔ 20 March 2007۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 دسمبر 2009 
  32. ^ ا ب پ
  33. "Shiite rebels release 180 Yemen prisoners"۔ ABC News۔ 2010-03-18۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولا‎ئی 2010 
  34. Thomson Reuters Foundation۔ "Thomson Reuters Foundation"۔ alertnet.org۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  35. "آرکائیو کاپی"۔ 29 اپریل 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ July 29, 2010 
  36. ^ ا ب
  37. ^ ا ب "Heavy Saudi casualties in war with Houthis"۔ Press TV۔ 2009-12-22۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 دسمبر 2009 
  38. "187 children killed in Yemen war, report says"۔ 11 جون 2011 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  39. Barak A. Salmoni, Bryce Loidolt, and Madeleine Wells (2010)۔ "Regime and Periphery in Northern Yemen: The Huthi Phenomenon" (PDF)۔ RAND National Defense Research Institute۔ 07 جنوری 2019 میں page xv اصل تحقق من قيمة |url= (معاونت) (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 ستمبر 2020 
  40. Regime and Periphery in Northern Yemen: The Huthi Phenomenon - Barak A. Salmoni, Bryce Loidolt, Madeleine Wells - Google Boeken۔ Books.google.nl۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 اکتوبر 2014 
  41. "Salafist, Houthi sectarian rift threatens to engulf fragile state of Yemen"۔ The Daily Star Newspaper۔ 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 17 اکتوبر 2014 
  42. "Yemen: Relative calm in Sa'ada, Amran and Al-Jawf" (PDF)۔ 26 اپریل 2020 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2015 
  43. http://www.business-standard.com/article/news-ians/pakistan-examining-saudi-request-to-join-yemen-operation-115032600569_1.html
  44. http://english.alarabiya.net/en/News/middle-east/2015/03/26/Iran-backed-Houthis-loot-secret-U-S-espionage-files-report.html
  45. http://www.aljazeera.com/news/2015/03/iran-warns-bloodshed-saudi-led-forces-bomb-yemen-150326103728438.html
  46. http://twocircles.net/2015mar27/1427450083.html#.VRV_gPmUfyM