ابراہیم محمد بن علی کے بڑے بیٹے اور خلیفہ ابو العباس السفاح کے بڑے بھائی تھے۔ خاندان عباس نے اُموی حکومت کے خلاف جو خفیہ تحریک چلارکھی تھی۔ امام محمد کی وفات کے بعد ابراہیم اس تحریک کے قائد بنے۔ ان کا مرکز بحیرہ مردار کے جنوب میں واقع مقام حمیمہ تھا۔ اس خفیہ تحریک کے زیر اثر اُمویوں کے خلاف بغاوت کا آغاز ہوا تو ابراہیم۔ مروان ثانی کے حکم سے گرفتار کر لیے گئے اور پابجولاں حراں لائے گئے۔ یہیں قید میں وفات پائی۔ ان کی وفات کے کچھ ہی عرصہ بعد اموی خلافت کا تختہ الٹ گیا اور ان کے بھائی ابوالعباس سفاح نے عباسی سلطنت کی بنیاد رکھی۔

ابراہیم بن محمد بن علی
(عربی میں: ابراهيم بن محمد بن علي بن عبدالله ابن العباس بن عبد المطلب)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 701ء [1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
حمیمہ   ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات سنہ 749ء (47–48 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت سلطنت امویہ   ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تعداد اولاد
والد محمد بن علی بن عبد اللہ   ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بہن/بھائی
خاندان خلیفہ خلافت عباسیہ (بغداد)   ویکی ڈیٹا پر (P53) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ امام ،  انقلابی   ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان عربی   ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی   ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

حوالہ جات

ترمیم
  1. ^ ا ب پ ت مکمل کام یہاں دستیاب ہے: https://archive.org/details/ZIR2002ARAR — مصنف: خیر الدین زرکلی — عنوان : الأعلام —  : اشاعت 15 — جلد: 1 — صفحہ: 59

مزید دیکھیے

ترمیم