ابن الوردی (پیدائش: 689ھ/1290ء- وفات: 749ھ/ مارچ 1349ء) چودہویں صدی کے مسلمان جغرافیہ دان اور مؤرخ تھے۔

ابن الوردی
(عربی میں: عُمر بن مُظفَّر بن عُمر بن مُحمَّد بن الوردي المعرّي الكندي ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1290  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
معرۃ النعمان  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات فروری 1349 (58–59 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
حلب  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات طاعون  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات طبعی موت  ویکی ڈیٹا پر (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ جغرافیہ دان،  شاعر،  ادیب،  مؤرخ،  مصنف،  فقیہ،  ماہر نباتیات،  ماہر حیوانیات  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان عربی  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل فقہ،  نحو،  تاریخ اسلام،  عربی شاعری،  نباتیات،  حیوانیات،  جغرافیہ  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

نام اور نسبترميم

ابن الوردی کا نام عمر ابن مظفر ہے جبکہ نسب یوں ہے: عمر بن مظفر بن عمر بن محمد ابن ابی الفوارس، ابو حفص، زين الدين ابن الوردی المعرّی الكندی المعروف بہ ابن الوردی۔

پیدائشترميم

ابن الوردی کا خانہ کعبہ کا بنایا ہوا نقشہ - غالباً 1340ء

وفاتترميم

ابن الوردی کا انتقال مرض طاعون سے ماہِ ذوالحجہ 749ھ/ مارچ 1349ء میں حلب شہر میں ہوا۔

تصانیفترميم

خريدة العجائب وفريدة الغرائبترميم

اس کام کے ساتھ دنیا کا ایک رنگین نقشہ اور کعبہ کی تصویر منسلک تھی۔ یہ اس زمانے میں عرب دنیا کی جغرافیائی معلومات کا نچوڑ ہے۔ اس میں دنیا کے موسم، پہاڑوں، حیوانات و نباتات، آبادی، طرز زندگی، رائج الوقت ریاستیں اور ان کی حکومتوں کے حالات مذکور ہیں جیسا کہ دنیا کے مختلف حصوں میں فردًا فردًا اس زمانے میں تھے۔ مصنف سلاو لوگوں اور ان کی طرز زندگی بیان کرتا ہے اور یہ ذکر کرتا ہے کہ المہدویہ میں فاطمی خاندان سکونت پزیر تھا۔ اس وجہ سے یہ کتاب قاہرہ شہر سے پرانی جسے فاطمیوں نے 969ء میں قائم کیا تھا۔ ابن الوردی اپنی کتاب المسعودی میں اس کتاب کا حوالہ دیتا ہے۔

تاریخ ابن الوردیترميم

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. تأريخ الأدب العربي، الجُزء الثالث — اخذ شدہ بتاریخ: 10 جنوری 2021 — سے آرکائیو اصل فی 10 جنوری 2021 — صفحہ: 766-772 — شائع شدہ از: 27 جنوری 2016