ایڈورڈ گبن (پیدائش: 27 اپریل، 1737ء – انتقال: 16 جنوری 1794ء) ایک انگریز مؤرخ،مستشرق اور رکن پارلیمان تھے۔ گبن کو جدید تاریخ نگاری کا بانی کہا جاتا ہے۔

ایڈورڈ گبن
(انگریزی میں: Edward Gibbon ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Edward Emily Gibbon.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 27 اپریل 1737[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پٹنی[2][3]  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 16 جنوری 1794 (57 سال)[1][4][5][6][7][8][9]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لندن[10]  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات ورمِ صفاق  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدفن انگلستان  ویکی ڈیٹا پر (P119) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات طبعی موت  ویکی ڈیٹا پر (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش پٹنی[11]  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Great Britain (1707–1800).svg مملکت برطانیہ عظمی  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت وگ  ویکی ڈیٹا پر (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رکن رائل سوسائٹی  ویکی ڈیٹا پر (P463) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی میگڈالن کالج[11]
ویسٹمنسٹر اسکول[11]  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ مؤرخ[12][13]،  سیاست دان،  کلاسیکی عالم  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان فرانسیسی،  انگریزی[14]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل تاریخ  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کارہائے نمایاں تاریخِ زوال و سقوطِ سلطنتِ روما  ویکی ڈیٹا پر (P800) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دستخط
Edward Gibbon signature EMWEA.png
 
ایڈورڈ گبن

کتبترميم

اس کی سب سے اہم تصنیف انحطاط و زوال سلطنت روما (The History of the Decline and Fall of the Roman Empire) سن 1776ء سے 1788ء کے درمیان میں چھ جلدوں میں شائع ہوئی۔ "تاریخ" (The History) اپنے نثر کے اعلیٰ معیار اور غیر معمولیت، بنیادی ماخذ کے استعمال اور مذہب پر کھلی تنقید کے باعث مشہور ہے۔ لیکن گبن کیونکہ عربی سے نابلد تھا اس لیے اسلام و پیغمبر اسلام کے بارے دیگر مستشرقین کے مواد کو ہی سچ سمجھ کر شاملِ کتاب کر لیا۔

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب مصنف: Andrew Bell — عنوان : Encyclopædia Britannica — جلد: 22 — ناشر: Encyclopædia Britannica Inc.
  2. http://writersalmanac.publicradio.org/index.php?date=2001/04/27
  3. http://www.historyorb.com/people/edward-gibbon
  4. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11904825c — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: Bibliothèque nationale de France — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  5. دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Edward-Gibbon — بنام: Edward Gibbon — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  6. ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w6bc40vf — بنام: Edward Gibbon — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  7. فائنڈ اے گریو میموریل شناخت کنندہ: https://www.findagrave.com/cgi-bin/fg.cgi?page=gr&GRid=10453968 — بنام: Edward Gibbon — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  8. دا پیرایج پرسن آئی ڈی: https://wikidata-externalid-url.toolforge.org/?p=4638&url_prefix=http://www.thepeerage.com/&id=p190.htm#i1896 — بنام: Edward Gibbon — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — مصنف: Darryl Roger Lundy — خالق: Darryl Roger Lundy
  9. Internet Speculative Fiction Database author ID: http://www.isfdb.org/cgi-bin/ea.cgi?206309 — بنام: Edward Gibbon — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  10. مدیر: الیکزینڈر پروکورو — عنوان : Большая советская энциклопедия — اشاعت سوم — باب: Гиббон Эдуард — ناشر: Great Russian Entsiklopedia, JSC
  11. ^ ا ب http://www.historyofparliamentonline.org/volume/1754-1790/member/gibbon-edward-1737-94
  12. http://www.nytimes.com/2007/05/09/arts/09iht-IDSIDE12.1.5638194.html
  13. http://www.nytimes.com/2007/05/13/books/review/Isaacson-t.html
  14. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11904825c — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: Bibliothèque nationale de France — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ