بشر الخصاونہ(انگریزی: Bisher Al-Khasawneh) اردن کے سیاست دان اور سفارت کار ہیں۔ وہ شاہی ہاشمی دربار میں عبد اللہ دوم کے مشیر خاص برائے مواصلات و تعاون ہیں۔[4][5] وہ 2017ء سے 2018ء کے درمیان میں وزیر برائے قانونی امور [6] اور 2016ء2016 اور 2017ء کے درمیان میں وزیر خارجہ رہے۔[7] الخصاونہ مصر ، فرانس [8] ، کینیا ، ایتھوپیا ، افریقی اتحاد ، عرب لیگ اور یونیسکو میں اردن کے سفیر رہ چکے ہیں۔ وہ اردن کے کوآرڈینیٹر جنرل، ڈائریکٹر برائے امن اور مذاکرات بیورو کے عہدہ پر بھی فائز رہ چکے ہیں۔[9]

بشر الخصاونہ
(عربی میں: بشر الخصاونة ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Bisher Al-Khasawneh (cropped).jpg
 

مناصب
وزیر اعظم اردن   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آغاز منصب
7 اکتوبر 2020 
معلومات شخصیت
پیدائش 27 جنوری 1969 (52 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
نیویارک شہر  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Jordan.svg اردن  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
زوجہ رنا سلطان[2]  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد ہانی، زین، اور نور۔
عملی زندگی
مادر علمی لندن اسکول آف اکنامکس[3]  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ سرکاری ملازم،  سفارت کار،  سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

تعلیمترميم

عہدےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. https://petra.gov.jo/Include/InnerPage.jsp?ID=53522&lang=ar&name=local_news
  2. https://www.layalina.com/%D9%85%D9%86-%D9%87%D9%8A-%D8%B1%D9%86%D8%A7-%D8%B3%D9%84%D8%B7%D8%A7%D9%86-%D8%B2%D9%88%D8%AC%D8%A9-%D8%B1%D8%A6%D9%8A%D8%B3-%D8%A7%D9%84%D9%88%D8%B2%D8%B1%D8%A7%D8%A1-%D8%A7%D9%84%D8%A3%D8%B1%D8%AF%D9%86%D9%8A-%D8%A7%D9%84%D8%AC%D8%AF%D9%8A%D8%AF%D8%9F-377167.html
  3. http://etheses.lse.ac.uk/2131 — اخذ شدہ بتاریخ: 20 اگست 2021
  4. petra.gov.jo۔
  5. Jordan embassy us۔
  6. worldscience forum آرکائیو شدہ [Date missing] بذریعہ 2017.worldscienceforum.org [Error: unknown archive URL]۔
  7. "Cabinet reshuffle sees 5 new ministers in, 7 out". Jordan Times. اخذ شدہ بتاریخ 03 جون 2019. 
  8. petra jordan۔
  9. The External Dimension of EU Justice and Home Affairs.
  10. Jordan times.