جڑانوالہ صوبہ پنجاب کا ایک شہر ہے جو فیصل آباد سے تقریباً 35کلومیٹر پر واقع ہے۔ یہ فیصل آباد کی مشہور اور سب سے بڑی تحصیل ہے۔ اس کا شمار پاکستان کے بڑی تحصیلوں میں ہوتا ہے۔۔ یہ شہر تقریبا 400 سال پرانا ہے۔

جڑانوالہ
(انگریزی میں: Jaranwala ویکی ڈیٹا پر (P1448) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Jnw chowk1.jpg
 

انتظامی تقسیم
ملک Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P17) کی خاصیت میں تبدیلی کریں[1]
تقسیم اعلیٰ ضلع فیصل آباد  ویکی ڈیٹا پر (P131) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جغرافیائی خصوصیات
متناسقات 31°20′00″N 73°26′00″E / 31.333333333333°N 73.433333333333°E / 31.333333333333; 73.433333333333  ویکی ڈیٹا پر (P625) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بلندی 184 میٹر  ویکی ڈیٹا پر (P2044) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آبادی
کل آبادی 127973 (2017)  ویکی ڈیٹا پر (P1082) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مزید معلومات
فون کوڈ 041  ویکی ڈیٹا پر (P473) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قابل ذکر
باضابطہ ویب سائٹ باضابطہ ویب سائٹ  ویکی ڈیٹا پر (P856) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جیو رمز 1176106  ویکی ڈیٹا پر (P1566) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

مشہور ٹاؤنزترميم

2005ء میں ملک کے دوسرے بڑے شہروں کی طرح فیصل آباد میں بھی سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ نظام لاگو کیا گیا، جس کے مطابق اسے 8 مختلف ٹاؤن میں تقسیم کر دیا گیا۔ ماضی کی تحصیلیں بھی اس نئے نظام کے تحت ٹاؤن کا درجہ پا گئیں۔[2] جڑانوالہ ٹاؤن بھی ان آٹھ ٹاؤنز میں سے ایک ہے۔ اس میں 57 یونین کونسلیں ہیں۔ اس شہر کی مشہور ٹاؤنز میں منڈی روڑالہ، کھرڑیانوالہ، ستیانہ، لنڈیانوالہ اور منڈی بچیانہ شامل ہیں۔

گورنمنٹ ڈگری کالج جڑانوالہ فار بوائز رقبہ کے لحاظ سے پنجاب کا سب سے بڑا کالج ہے جو کہ 48 ایکڑ پر محیط ہے.

جڑانوالہ کے مشہور سیاستدانوں میں میاں غلام باری جو کہ قائد اعظم محمد علی جناح کے ساتھ تھے، رائے عارف وزیر ریلوے، چوہدری وصی ظفر وزیر قانون، رائے حیدر علی مشیر وزیراعلیٰ اور چوہدری ظہیر الدین وزیر پراسیکیوشن رہ چکے ہیں.

تقریبا چار سو سال پرانا یہ شہر نہروں کے بیچ آباد ہے۔ شہر کی تاریخ ایک دروازے پہ درج ہے جسے پاکستانی گیٹ کہا جاتا ہے۔ پرانی نشانیوں میں ایک جیوٹ مل ہے اور ایک جامع مسجد، مل ویران ہو چکی ہے اور مسجد آباد۔

اس سے بھی پہلے شہر میں تین مندر ہوا کرتے تھے۔ دو مندر تو ڈھے گئے جب کہ ایک مندر اب بھی باقی ہے، جس کے تہہ خانے میں نقاشی کا بہت عمدہ کام کیا گیا ہے۔ نیشنل بنک کے سامنے واقع یہ مندر ابھی بھی دیکھنے والوں کے لئے کھلا ہے مگر سفر شرط ہے۔ کہیں کہیں ڈھونڈھنے سے کچھ برجیاں بھی نظر آتی ہیں۔

مندروں کے علاوہ یہاں ایک مڑھی ہوا کرتی تھی جو اب کالج بن گئی ہے۔ شہر میں بسنے والوں کی بڑی تعداد اب ملک سے باہر بستی ہے۔ یہ بیرون ملک مقیم کچھ تو پاکستانی ہیں اور کچھ ہندوستانی جن کے آباؤ اجداد اپنے وقت کی اس مشہور غلہ منڈی میں رہا کرتے تھے۔

آصف علی آصف محکمہ صحت میں پنجاب ہیلتھ ریفارمز میں مینجر کے عہدے پر فائز ہیں.

پنجاب لوک بولی میلہترميم

نومبر 2008ء میں جڑانوالہ میں پنجاب لوک بولی میلہ لگا جس میں پنجاب کے روایتی کھیلوں اور پنجابی لوک ورثے کی نمائش کا اہتمام کیا گیا۔ جرانوالہ ٹاؤن کا رقبہ 1,770.04 مربع کیلومیٹر ہے اور اس کی مجموعی آبادی 1,186,514 افراد پر مشتمل ہے۔

تعلیمی ادارےترميم

 گورنمنٹ اسلامیہ ہاہی سکول جڑانوالہ

گورنمنٹ کالج آف کامرس جڑانوالہ

ڈویژنل پبلک سکول جڑانوالہ

ہاہرسیکنڈری سکول آف اکسیلنٹس جڑانوالہ گورنمنٹ وکیشنل کالج جڑانوالہ وکیشنل کالج جڑانوالہ برائے خواتین پنجاب کالج کنال روڈ جڑانوالہ دی ایجوکیٹرز سکول نیو سٹی جڑانوالہ

نزدیکی شہرترميم

نقشہ فیصل آباد سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ
 

مزید دیکھیےترميم

بیرونی روابطترميم

تصاویرترميم

بیرونی روابطترميم

حوالہ جاتترميم

  1.    "صفحہ جڑانوالہ في GeoNames ID". GeoNames ID. اخذ شدہ بتاریخ 7 جولا‎ئی 2020ء. 
  2. شماریات از موقع حکومت فیصل آباد