سلیم علی سلام (1868ء–1938ء) ان کو ابو علی سلام بھی کہا جاتا ہے۔ 20 ویں عیسوی صدی میں بیروت کے ایک ممتاز شخصیت تھے جو متعدد عوامی عہدوں پر فائز تھے۔جن میں بیروت سے عثمانی پارلیمنٹ میں نائب، بلدیہ بیروت کے صدر اور مسلم سوسائٹی برائے فائدہ مند ارادے (المقصد) کے صدر شامل ہے۔[2][3]

سلیم علی سلام
(عربی میں: سليم علي عبد الجليل سلام ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Salim Ali Salam portrait.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1868[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بیروت  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 1938 (69–70 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بیروت  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the Ottoman Empire.svg سلطنت عثمانیہ (1868–1918)
Flag of Kingdom of Syria (1920-03-08 to 1920-07-24).svg مملکت شام (1918–1920)
Lebanese French flag.svg عظیم لبنان (1921–1938)  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رکن مجلس مبعوثان  ویکی ڈیٹا پر (P463) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد صائب سلام،  عنبرہ سلام خالدی  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی،  عثمانی ترکی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب ایف اے ایس ٹی - آئی ڈی: http://id.worldcat.org/fast/164076 — بنام: Salīm ʻAlī Salām — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  2. Ajami، Fouad (2012-04-01). The Vanished Imam: Musa al Sadr and the Shia of Lebanon (بزبان انگریزی). Cornell University Press. صفحہ 211. ISBN 978-0-8014-6515-4. 
  3. Salam, S. (1982). Muzakkarat Salim Salam (Memoirs of Salim Salam), (H. A. Hallak, Ed.) Beirut: Dar Al Jamiiya.