عالیہ بھٹ

ہندوستانی اداکارہ

عالیہ بھٹ (انگریزی: Alia Bhatt) (پیدایش 15 مارچ 1993) برطانوی شہریت[4] کی حامل ہندوستانی النسل اداکارہ اور گلوکارہ ہے جو ہندی فلموں میں جلوہ گر ہوتی ہے۔تین فلم فیئر ایوارڈوں سمیت بے شمار دیگر اعزازات حاصل کرنے والی عالیہ بھٹ بھارت کی سب سے زیادہ معاوضہ لینے والی اداکارہ بھی ہے۔ فرابس انڈیا(Forbes India) کے سیلیبرٹی 100 (Celebrity 100) میں سال 2014 سے اور فرابس ایشیا (Forbes Asia ) میں سال 2017 کی مرکز اشاعت رہی۔

عالیہ بھٹ
(ہندی میں: आलिया भट्ट ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Alia Bhatt at Berlinale 2022 Ausschnitt.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 15 مارچ 1993 (29 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لندن  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the United Kingdom (3-5).svg مملکت متحدہ[2][3]  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
آنکھوں کا رنگ سیاہ  ویکی ڈیٹا پر (P1340) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بالوں کا رنگ سیاہ  ویکی ڈیٹا پر (P1884) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قد 1.55 میٹر  ویکی ڈیٹا پر (P2048) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شریک حیات رنبیر کپور (14 اپریل 2022–)  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد مہیش بھٹ  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والدہ سونی رازدان  ویکی ڈیٹا پر (P25) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بہن/بھائی
راہل بھٹ،  پوجا بھٹ  ویکی ڈیٹا پر (P3373) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی جمنابائی نرس اسکول  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ فلم اداکارہ،  گلو کارہ،  ماڈل  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان ہندی،  انگریزی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
فلم فیئر کریٹکس اعزاز برائے بہترین اداکارہ (برائے:Highway) (2015)  ویکی ڈیٹا پر (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دستخط
Alia Bhatt's signature.svg
 
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحہ  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

بھٹ خاندان میں پیدا ہونے والی عالیہ بھٹ مشہور فلمساز مہیش بھٹ اداکارہ سونی رازدان کی بیٹی ہے۔سال 1999 میں بننے والی فلم سنگھرش میں ایک بچی کے کردار سے اپنے فنی سفر کا آغاز کرنے والی عالیہ نے سال 2012 میں اپنا پہلا مرکزی کردار کرن جوہر کے ایک کمسن ڈراما سٹوڈنٹ آف دی ائیرمیں ادا کیا تھا۔اس کے بعد اس نے جوہر کے سٹوڈیو دھرما پروڈکشنز کے زیر اہتمام بننے والے بے شمار فلموں میں کام کر کے خود کو فلمی صنعت میں مستحکم کیا۔جن میں کئی ایک رومانوی فلمیں تھیں، ان میں ٹو سٹیٹس(2014)، ہمپٹی شرما کی دلہنیا (2014)، بدری ناتھ کی دلہنیا (2017) اور ڈراما ڈئیر زندگی (2017) جیسے شاہکار شامل ہیں۔ سال 2014 میں بننے والے ڈرامے ہائی وے میں ایک اغوا شدہ لڑکی کا کردار خوش اسلوبی سے نبھانے پر عالیہ نے (Filmfare Critics Award for Best Actress) کا بہترین اداکارہ کا ایوارڈ جیتا۔ اس نے اسی تقریب میں دو بار مزید بہترین اداکارہ کا ایوارڈ حاصل کیا، یہ دونوں ایوارد اسے ڈراما اڑتا پنجاب (2016) میں ایک مہاجر بہاری لڑکی کے کردار پر اور رازی (2018) میں ایک جاسوسہ کے کردار پر ادا کرنے پر دیے گئے۔ اس کے بعد اس نے ایک موسیقی ڈراما فلم گُلے بوائے(2019) میں کام کیا جو بعد ازاں ہندوستان کی نسوانی مرکزی کردار کی بڑی اور سب سے زیادہ کمائی کرنے والی فلم بن گئی۔

فلموں میں کام کرنے کے ساتھ ساتھ عالیہ نے ملبوسات اور دستی بیگوں کے کاروبار کی بنا بھی رکھی۔ اس نے چھ گانے بھی گائے جن میں " سمجھاواں ان پلگڈ" (Samjhawan Unplugged) شامل ہے، وہ سٹیج پروگراموں اور کنسرٹ ٹوورز میں بھی حصہ لیتی ہے۔

ابتدائی زندگیترميم

عالیہ 15 مارچ 1993 کو معروف فلمساز مہیش بھٹ اور اداکارہ سونی رازدان کے گھر ممبئی میں پیدا ہوئی۔[5][6]اس کے والد گجراتی ہیں[7][8] جب کہ والدہ کشمیری، جرمن نسل سے تعلق رکھتی ہیں۔ [9][10][11]فلم ڈائرکٹر نانا بھائی بھٹ عالیہ کے دادا ہیں۔ عالیہ کی ایک بڑی بہن شاہین ( پیدائش 1988) [12]اور دو سوتیلے بہن بھائی اداکارہ پوجا بھٹ اور فٹنس ٹرینر راہول بھٹ ہیں۔ اداکار عمران ہاشمی اور اور ڈائرکٹر موہت سوری عالیہ بھٹ کے چچا زاد ہیں جبکہ پرودیوسر مکیش بھٹ اس کے چچا ہیں۔[13] عالیہ نے ابتدائی تعلیم جمنا بائی نرسری اسکول ممبئی سے حاصل کی تھی۔[14] عالیہ بھٹ کی شہریت برطانوی ہے۔[15]

عالیہ نے پہلا کردار فلم سنگھرش میں ایک بچی کا ادا کیا تھا جس میں اکشے کمار اور پریٹی زینٹا مرکزی کردار نبھا رہے تھے، عالیہ نے پریٹی زینٹا کے بچپن کا کردار ادا کیا تھا۔[16]

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. بنام: Alia Bhatt — سی ایس ایف ڈی پرسن آئی ڈی: https://www.csfd.cz/tvurce/117581
  2. Why can't Alia Bhatt and Imran Khan vote? — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اگست 2017 — شائع شدہ از: دکن کرانیکل — شائع شدہ از: 3 اپریل 2014
  3. https://www.hindustantimes.com/entertainment/alia-bhatt-can-t-vote-in-2014-encourages-youth-to-cast-their-votes/story-O0cEnVn13dMi85tnQIiJmK.html — شائع شدہ از: 3 اپریل 2014
  4. Singh, Prashant (3 اپریل 2014)۔ "Alia Bhatt can't vote in 2014, encourages youth to cast their votes"۔ Hindustan Times. Archived from the original on 13 جولائی 2016. اخذکردہ بتاریخ 5 جون 2016.
  5. Sharma, Sarika (15 مارچ 2014)۔ "Alia Bhatt celebrates birthday shooting for 'Humpty Sharma Ki Dulhania'"۔ The Indian Express. Archived from the original on 15 مارچ 2014. اخذکردہ بتاریخ 15 مارچ 2014
  6. Saxena, Kashika (11 اکتوبر 2013)۔ "I am sometimes retarded, sometimes composed: Alia Bhatt"۔ The Times of India. Archived from the original on 12 جنوری 2018. اخذکردہ بتاریخ 15 مارچ 2014.
  7. Gupta, Priya (14 جنوری 2013)۔ "I have great reverence for women: Mahesh Bhatt"۔ Times of India. Archived from the original on 22 جنوری 2016. اخذکردہ بتاریخ 8 مارچ 2014.
  8. Varma, Lipika (13 اپریل 2014)۔ "State of affairs: Arjun Kapoor and Alia Bhatt"۔ Deccan Chronicle. Archived from the original on 15 اپریل 2014. اخذکردہ بتاریخ 16 اپریل 2014.
  9. Shedde, Meenakshi (17 فروری 2014)۔ "Berlin diary: Alia Bhatt's family connection to the German city"۔ Firstpost. Archived from the original on 21 فروری 2014. اخذکردہ بتاریخ 8 مارچ 2014.
  10. Dubey, Bharati (12 فروری 2014)۔ "Alia Bhatt's German roots"۔ Mid-Day. Archived from the original on 5 مارچ 2014. اخذکردہ بتاریخ 8 مارچ 2014.
  11. Dutta, Pradeep (30 جنوری 2001)۔ "I'll voice the worries of Kashmiri Pandits'"۔ Indian Express. Archived from the original on 14 اکتوبر 2013. اخذکردہ بتاریخ 8 مارچ 2014.
  12. Sharma, Neha (2 مئی 2010)۔ "Another Bhatt on the block"۔ Hindustan Times. Archived from the original on 17 مارچ 2014. اخذکردہ بتاریخ 29 مارچ 2014.
  13. Anubha Sawhney (18 جنوری 2003)۔ "The Saraansh of Mahesh Bhatt's life"۔ The Times of India. Archived from the original on 26 اکتوبر 2012. اخذکردہ بتاریخ 1 اگست 2012.
  14. "Alia bhatt lesser Known facts"۔ The Times of India. Archived from the original on 17 مارچ 2017.
  15. Singh, Prashant (3 اپریل 2014)۔ "Alia Bhatt can't vote in 2014, encourages youth to cast their votes"۔ Hindustan Times. Archived from the original on 13 جولائی 2016. اخذکردہ بتاریخ 5 جون 2016.
  16. Joshi, Sonali; Varma, Lipika (28 مئی 2012)۔ "Alia Bhatt's silver screen debut"۔ India Today. New Delhi. Archived from the original on 4 اگست 2012. اخذکردہ بتاریخ 1 اگست 2012.