محمد اکرم ندوی

بھارتی مسلمان عالم دین

محمد اکرم ندوی (پ 1964م) عالم اسلام کے مشہور محقق عالم۔ بھارت کے شمالی صوبہ اترپردیش کے شہر جونپور میں ولادت ہوئی۔ دار العلوم ندوۃ العلماء سے اعلی اسلامی تعلیم سے فراغت کے بعد چند سال اسی ادارہ میں قیام پزیر رہے۔ بعد ازاں جامعہ آکسفورڈ کے شعبہ دراسات اسلامیہ سے وابستہ ہوئے۔ تا حال ایک محقق کی حیثیت سے اسی ادارہ میں قیام پزیر ہے۔

مولانا محمد اکرم ندوی
Dr Akram Nadwi.jpg

معلومات شخصیت
پیدائش 1382 ھ / 1964 م
جون پور, اترپردیش، بھارت
رہائش اوکسفرڈ  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of India.svg بھارت  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مذہب اسلام
عملی زندگی
پیشہ محقق، عالم، مصنف، مدرس،

نسب و خاندانترميم

تعلیمترميم

محمد اکرم ندوی نے دار العلوم ندوۃ العلماء سے 1980 میں عالمیت اور 1982 میں تخصص فی الحدیث کی تکمیل کی۔ اور عالم اسلام کے اہم ترین علما کرام مولانا ابوالحسن علی ندوی، شیخ عبد الفتاح ابوغدہ اور شیخ یوسف القرضاوی سے حدیث کی اجازت حاصل کی۔
جامعہ لکھنؤ سے معیشت سیاسی (political economy) میں فاضل (بی۔ اے) اور عربی زبان و ادب میں ماہر (ایم۔ اے) اور بعد ازیں 2002 علمائی (ڈاکٹریٹ) کی سند حاصل کی۔

تصانیفترميم

محمد اکرم ندوی حدیث، فقہ، علم اسماء الرجال اور صرف و نحو کے موضوعات پر 25 کتابیں تصنیف و ترجمہ کر چکے ہیں۔ جن میں مشہور ترین کتابیں حسب ذیل ہیں:

  • شيخ الإسلام إبن تيمية وتأثيره في آسيا الجنوبية از خلیق احمد نظامی، تعریب محمد اکرم ندوی
  • نفحات الهند واليمن بأسانيد الشيخ أبي الحسن
  • أصول الشاشي : مختصر في أصول الفقه الإسلامي
  • كفاية الراوي عن العلامة الشيخ يوسف القرضاوي
  • شبلي النعماني: علامة الهند الأديب والمؤرخ الناقد الأريب
  • السيد سليمان الندوي ؛: أمير علما الهند في عصره، وشيخ الندويين
  • بستان المحدثين في بيان كتب الحديث وأصحابها الغر الميامين از شاہ عبدالعزیز محدث دہلوی، تعریب محمد اکرم ندوی
  • أبو الحسن الندوي : العالم المربّي والداعية الحكيم، 1333-1420 هـ / 1914-1999م

ابھی حال ہی میں محدثات کے نام سے 40 جلدوں میں ایک کتاب مرتب کی ہے، جس میں 8000 سے زائد محدثات کے تراجم و تذکرے موجود ہیں۔[1][2]

بیرونی روابطترميم

ندوی فاؤنڈیشن

حوالہ جاتترميم