ودھان پریشد

بھارت کی کچھ ریاستی مقننہ کا ایوان بالا

ودھان پریشد یا ریاستی قانون ساز کونسل بھارت کی دو ایوان والی ریاستوں میں ایوان بالا کو کہتے ہیں۔ آئین ہند کے آرٹیکل 169 ودھان پریشد کی تشکیل کی اجازت دیتا ہے۔ 2018ء تک 29 میں سے 7 ریاستوں میں ودھان پریشد تھے۔[1] ودھان پریشد کے ارکان کو مقامی حکومتیں، ریاستی قانون ساز اسمبلی، گورنر، گریجویٹ اور اساتذہ منتخب کرتے ہیں۔ وہ قانون ساز کونسل میں 6 سالہ مدت ک لیے منتخب ہوتے ہیں۔ ارکان میں سے تہائی ہر دو برسوں میں سبکدوش/ریٹائر ہوتے ہیں۔

ودھان پریشدوں کی فہرستترميم

ودھان پریشد عکس مقام/ریاستی دار الحکومت حلقوں کی تعداد حکمران جماعت
آندھرا پردیش ودھان پریشد   امراوتی 58 تیلگو دیشم پارٹی
بہار ودھان پریشد پٹنہ 75 جنتا دل
جموں و کشمیر ودھان پریشد 36 جموں و کشمیر پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی
کرناٹک ودھان پریشد   بنگلور 75 انڈین نیشنل کانگریس
مہاراشٹر ودھان پریشد 78 بھارتیہ جنتا پارٹی
تلنگانہ ودھان پریشد   حیدرآباد، دکن 40 تلنگانہ راشٹر سمیتی
اتر پردیش ودھان پریشد   لکھنؤ 100 بھارتیہ جنتا پارٹی
جملہ 462

حوالہ جاتترميم

  1. "Legislative Council in India - General Knowledge Today".