دار العلوم رحیمیہ

کشمیر کی ایک اسلامی یونیورسٹی

دار العلوم رحمیہ ایک اسلامی مدرسہ ہے جو کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ میں واقع ہےـ یہ مدرسہ 1979ء میں دار العلوم دیوبند کے فاضل رحمت اللہ میر قاسمی نے قائم کیا تھا۔[1][2][3]ـ یہ مدرسہ وادی کشمیر کا سب سے بڑا مدرسہ مانا جاتا ہےـ۔[4] [5]

دار العلوم رحیمیہ
قسماسلامی یونیورسٹی
قیام1979 (43 برس قبل) (1979)
بانیرحمت اللہ میر قاسمی
مقامبانڈی پورہ، ، بھارت
ویب سائٹwww.raheemiyyah.com

تاریخترميم

دار العلوم رحیمیہ کو 1979 میں رحمت اللہ میر قاسمی قائم کیاـ۔[6][4]

اساتذہترميم

  • مفتی نذیر احمد قاسمی، مفتی اعظم دار العلوم رحیمیہ،[7] آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے تاسیسی رکن ہیں۔ کشمیر عظمی کے جمعہ والے جریدے میں ان کے مسائل کا مستقل ایک کالم شایع ہوتا ہےـ۔[8][9]
  • مفتی محمد اسحاق نازکی،[10] آپ مشہور کتاب ہمارے پیارے مکی آقا کے مصنف ہیں۔[11]

حوالہ جاتترميم

  1. Muhammad Amin Malik (22 June 2016). "Remembering Kausar Sahib (RA)". Rising Kashmir. 10 اپریل 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2020. 
  2. Shujaat Bukhari (12 May 2016). "Don't Make Kashmir a Battleground for Islamic Schools of Thought". The Citizen. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2020. 
  3. "An Islamic University". گریٹر کشمیر. 14 March 2015. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2020. 
  4. ^ ا ب "Places of Interest". bandipore.nic.in. ضلع بانڈی پورہ administration. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2020. 
  5. Nisar Ahmad Dharma (2 May 2019). "Jammu and Kashmir's visually impaired bereft of pension, unsupported by government and unloved by families". فرسٹ پوسٹ. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2020. 
  6. Yoginder Sikand (29 July 2007). "Kashmir's Largest Madrasa: Dar ul-Uloom Raheemiyyah". ٹو سرکلز. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2020. 
  7. "Mufti Nazir for social reformist groups". گریٹر کشمیر. 14 March 2015. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2020. 
  8. Aftab Ghazi Qasmi؛ Abdul Haseeb Qasmi. Fuzala-e-Deoband Ki Fiqhi Khidmat (Fiqhi Services of the Graduates of Deoband) (بزبان Urdu) (ایڈیشن February 2011). دیوبند: Kutub Khana Naimia. صفحات 420–421. 
  9. "8 February 2019 issue of Kashmir Uzma". گریٹر کشمیر. Kashmir Uzma. 8 February 2019. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2020. 
  10. M Saleem Pandit (31 October 2017). "Kashmiri fatwa allows remarriage of women with missing husbands". دی ٹائمز آف انڈیا. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2020. 
  11. "Offcie Memo of Director School Education Kashmir" (PDF). dsek.nic.in. Government of Jammu and Kashmir. 11 January 2019. اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2020.