شوکت سبزواری

اردو ماہرِ لسانیات، محقق، نقاد، شاعر

ڈاکٹر شوکت سبزواری (پیدائش: 13 اکتوبر، 1908ء - وفات: 19 مارچ، 1973ء) پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو کے ممتاز ماہرِ لسانیات، نقاد، محقق اور شاعر تھے جو اپنی کتابوں اردو لسانیات، اردو قواعد اور اُردو زبان کا اِرتقا کی وجہ سے دنیائے اردو میں شہرت رکھتے ہیں۔

ڈاکٹر شوکت سبزواری
Dr. Shaukat Sabzwari
پیدائشسید شوکت علی
13 اکتوبر 1908(1908-10-13)
میرٹھ، برطانوی ہندوستان
وفات19 مارچ 1973(1973-30-19) (عمر  64 سال)
کراچی، پاکستان
قلمی نامشوکت سبزواری
پیشہماہرِ لسانیات، نقاد، محقق، شاعر
زباناردو
نسلمہاجر قوم
شہریتFlag of پاکستانپاکستانی
تعلیمایم اے (اردو)، ایم اے (عربی)، ایم اے (فارسی)، پی ایچ ڈی (اردو لسانیات)
اصنافلسانیات، تحقیق، شاعری، تنقید
نمایاں کاماردو لسانیات
اردو قواعد
اُردو زبان کا اِرتقا
داستانِ زبانِ اردو

حالات زندگیترميم

ڈاکٹر شوکت سبزواری 13 اکتوبر، 1908ء کو میرٹھ، برطانوی ہندوستان میں پیدا ہوئے۔ ان کا اصل سید شوکت علی تھا[1][2]۔ انہوں نے فارسی، عربی اور اردو میں ایم اے اور بعد ازاں اردو لسانیات میں پی ایچ ڈی کی۔ تقسیم ہند کے بعد پہلے ڈھاکہ یونیورسٹی میں صدر شعبہ اردو و فارسی کے فرائض انجام دیے، اس کے بعد کراچی میں ترقی اردو بورڈ (موجودہ اردو لغت بورڈ) کے مدیر اور پھر مدیرِ اعلیٰ رہے۔[1]

تصانیفترميم

  • اردو لسانیات
  • اُردو زبان کا اِرتقا
  • اردو قواعد
  • داستانِ زبانِ اردو
  • غالب-فکر وفن
  • نئی پُرانی قدریں
  • فلسفہ کلام ِغالب

وفاتترميم

ڈاکٹر شوکت سبزواری 19 مارچ، 1973ء کو کراچی، پاکستان میں انتقال کر گئے اور پاپوش نگر قبرستان میں سپردِ خاک ہوئے۔[1][2]

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب پ ص 371، پاکستان کرونیکل، عقیل عباس جعفری، ورثہ / فضلی سنز، کراچی، 2010ء
  2. ^ ا ب ڈاکٹر شوکت سبزواری،سوانح و تصانیف ویب، پاکستان