شہاب الدین بن تیمیہ

امام ابن تیمیہ کے والد گرامی

شہاب الدین بن تیمیہ، پورا نام: ابو المحاسن شہاب الدین عبد الحلیم بن ابو البرکات مجد الدین عبد السلام بن عبد اللہ حرانی ہے، شیخ الاسلام ابن تیمیہ کے والد ہیں، حنبلی مذہب کے کبار علما اور ائمہ میں شمار ہوتا ہے۔

امام  ویکی ڈیٹا پر (P511) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہاب الدین بن تیمیہ
(عربی میں: عبد الحليم بن عبد السلام بن عبد الله بن تَيْمِيّةَ الحرَّاني ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1230  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
حران  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 19 مارچ 1284 (53–54 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دمشق  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مذہب اسلام
فرقہ اہل سنت
فقہی مسلک حنبلی
اولاد ابن تیمیہ  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والد مجد الدین بن تیمیہ  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ عالم،  فقیہ،  محدث،  مفسر قرآن  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان عربی  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

سوانحترميم

سنہ 627 ہجری میں حران میں پیدا ہوئے۔[1] سنہ 667 ہجری میں اپنے اہل خانہ کو لیکر حران سے تاتاریوں کے وہاں حملہ کی وجہ سے دمشق کوچ کر گئے،[2] اس وقت ان کے لڑکے ابن تیمیہ 6 سال کے تھے،[3] شہاب الدین بن تیمیہ جامع دمشق میں درس دیتے تھے اور قصاعین کے دار الحدیث کے شیخ تھے، وہیں سکونت پذیر بھی تھے، وہاں ان کی وفات کے بعد ان کے لڑکے ابن تیمیہ نے درس دیا۔

وفاتترميم

27 ذی الحجہ سنہ 682 ہجری میں وفات پائی[4] اور دمشق کے مقابر صوفیہ میں مدفون ہوئے۔[5]

حوالہ جاتترميم

  1. ذيل مرآة الزمان 4/ 185-186
  2. الدر المنضد في ذكر أصحاب الإمام أحمد.مكتبة التوبة.تحقيق د.عبدالرحمن العثيمين.(1412هـ)(1/ 476-479)
  3. البداية والنهاية.ابن كثير.دار الريان.مصر.1408هـ.(13/ 269).
  4. المقفى الكبير.العلامة أحمد بن علي المقريزي.دار الغرب الإسلامي.بيروت.(ط:1).1411هـ.(1/ 454-455).
  5. البداية والنهاية.ابن كثير.دار الريان.مصر.1408هـ.(13/ 320).