منگولوں کے ایک قبیلے تاتامنگو سے منسوب، جو شمال مشرقی گوبی واقع وسط ایشیا کے رہنے والے تھے۔ رفتہ رفتہ یہ نام عام منگول قبیلوں کے لیے جن میں چنگیز خان کا قبیلہ بھی شامل ہے، استعمال ہونے لگا۔ ان کا وطن آج کل ترکستان کہا جاتا ہے اور اس کے نواحی علاقے جن پر تاتاریوں نے قبضہ جما لیا تھا۔ تارتری کہلاتے تھے۔ تاتاریوں کی اکثریت آج کل روس اور سائبیریا میں آباد ہے۔ ان لوگوں کو تیرہویں صدی کے منگول حملہ آوروں کی اولاد سمجھا جاتا ہے۔ روس، ایران اور افغانستان کی سرحدیں جہاں آکر ملتی ہیں۔ وہاں تاتاریوں کی کثیر تعداد آباد ہے۔ یہ لوگ مذہباً مسلمان ہیں۔

تاتاری
Tatars
татарлар، tatarlar
کل آبادی
ت 6.8–12.8 ملین[1][2]
گنجان آبادی والے علاقے
Flag of Russia.svg روس5,319,877 (جمہوریہ کریمیا کو چھوڑ کر)[حوالہ درکار]
Flag of Uzbekistan.svg ازبکستان477,875[حوالہ درکار]
Flag of Ukraine.svg یوکرین319,377 (کریمیا سمیت)[3]
Flag of Kazakhstan.svg قازقستان240,000[حوالہ درکار]
Flag of Turkey.svg ترکی150,000–6,000,000[2]
Flag of Turkmenistan.svg ترکمانستان36,355[حوالہ درکار]
Flag of Kyrgyzstan.svg کرغیزستان28,334[حوالہ درکار]
 آذربائیجان25,900[حوالہ درکار]
 رومانیہ20,282[4]
Flag of Mongolia.svg منگولیا18,567[حوالہ درکار]
Flag of Israel.svg اسرائیل15,000[حوالہ درکار]
Flag of Belarus.svg بیلاروس7,300[حوالہ درکار]
Flag of France.svg فرانس7,000[حوالہ درکار]
Flag of Lithuania.svg لتھووینیا6,800-7,200[حوالہ درکار]
Flag of the People's Republic of China.svg چین5,000[حوالہ درکار]
Flag of Canada.svg کینیڈا4,825[5]
(مخلوط نسب شامل ہے)
Flag of Estonia.svg استونیا1,981[حوالہ درکار]
Flag of Poland.svg پولینڈ1,916[حوالہ درکار]
Flag of Bulgaria.svg بلغاریہ1,803[حوالہ درکار]
Flag of Finland.svg فن لینڈ1,000[حوالہ درکار]
Flag of Japan.svg جاپان600-2,000[6]
Flag of Australia.svg آسٹریلیا500+[7]
Flag of the Czech Republic.svg چیک جمہوریہ300+[8]
Flag of Switzerland.svg سویٹزرلینڈ150[9]
زبانیں
روسی زبان، تاتاری زبان، سربیائی تاتاری، کریمیائی تاتاری زبان
مذہب
بنیادی طور پر اہل سنت
مشرقی راسخ الاعتقاد کلیسیا اور شمن پرستی اقلیتیں[10]
متعلقہ نسلی گروہ
دیگر ترک

تاتاری خانہ بدوش قبائل کی صورت میں گلوں کو لیکر صحرا میں پھرتے تھے۔ لیکن اب باقاعدہ کھیتی باڑی کرنے لگے ہیں۔ سلطان شمس الدین التمش کے زمانے میں جبکہ تاتاریوں نے چنگیز خان کی قیادت میں سارے ایشیا میں قتل و غارت کا بازار گرم کر رکھا تھا۔ جلال الدین خوارزم کے تعاقب میں تاتاری منگول افغانستان کو تباہ و برباد کرتے ہوئے پشاور تک پہنچ گئے۔ جلال الدین سلطنت خوارزم کا بادشاہ تھا۔ جو تاتاریوں کے حملے کے وقت جان بچا کر سندھ بھاگ نکلا تھا۔ جلال الدین سلطان التمش کا اشارہ پا کر کیچ مکران کے راستے ہندوستان سے باہر چلا گیا۔ اس کے ساتھ منگولوں کی فوج بھی واپس چلی گئی۔ اس وقت تک یہ لوگ مسلمان نہ ہوئے تھے۔

مزید دیکھیےترميم

نگار خانہترميم

حوالہ جاتترميم

  1. "Tatars facts, information, pictures – Encyclopedia.com articles about Tatars". www.encyclopedia.com. 
  2. ^ ا ب "Crimean Tatars and Noghais in Turkey". 
  3. "About number and composition population of Ukraine by data All-Ukrainian census of the population 2001". Ukraine Census 2001. State Statistics Committee of Ukraine. اخذ شدہ بتاریخ 27 ستمبر 2012. 
  4. "Ethnic composition of Romania 2011". 
  5. "Census Profile, 2016 Census – Canada [Country] and Canada [Country]". 2017-02-08. 
  6. Представитель культурной ассоциации «Идель-Урал» считал، что количество татар в Японии в 1930-е годы могло достигать 10000 человек
  7. http://www.australiantatars.com/tatarsau/default.aspx
  8. "Президент РТ". 
  9. "Rustam Minnikhanov meets representatives of the Tatar Diaspora in Switzerland". 
  10. "Tatars". World Culture Encyclopedia. اخذ شدہ بتاریخ 14 مارچ 2018.