ڈاکٹر رام منہور لوہیا اودھ یونیورسٹی

ڈاکٹر رام منوہر لوہیا اودھ یونیورسٹی یا اودھ یونیورسٹی کے نام سے بھی مشہور ہیں نیشنل ہائی وے 96 (بھارت). قومی ہائی وے 96 پر ضلع فیض آباد، اتر پردیش، بھارت میں واقع ہے۔ اس کو اتر پردیش حکومت نے 1975 میں قائم کیا تھا۔[1]

ڈاکٹر رام منہور لوہیا اودھ یونیورسٹی
Dr. Ram Manohar Lohia Avadh University logo.jpg
اودھ یونیورسٹی کا نشان
لاطینی: Dr. Ram Manohar Lohia Avadh University
سابقہ نام
اودھ یونی ورسٹی
شعارسچ کے لئے وقف
اردو میں شعار
Dedicated to Truth
قسمسوبائی یونی ورسٹٰی
قیام1975
چانسلرگورنر اتر پردیش
طلبہ15000+
مقامفیض آباد، اتر پردیش، بھارت
کیمپسشہری علاقہ
112.24 acre (45.42 ha)
وابستگیاںیونیورسٹی گرانٹس کمیشن (بھارت), قومی تشخیص اور ایکریڈیشن کونسل, بھارتی یونیورسٹیوں کی تنظیم (AIU)
ویب سائٹwww.rmlau.ac.in
Dr. Ram Manohar Lohia Avadh University logo.jpg

تاریخترميم

 
اودھ یونیورسٹی

اترپردیش کی حکومت نے اسے اودھ یونیورسٹی فیض آبادکے نام سے ابتدائی طور پر ایک باضابطہ یونیورسٹی کے طور پر، اس کی نوٹیفیکیشن نمبر 1192 / پندرہ -10-46 (6) -1975 4 مارچ 1975 ء اور پروفیسر ڈاکٹر سرینھن سنگھ کی حیثیت سے اپیل پہلا وائس چانسلر مقرر کیا تھا۔1993-94 میں، اسےمشہور مجاہد آزادی،قومی رہنما ڈاکٹر رام منوہر لوہیا کے نام پر ڈاکٹر رام منوہر لوہیا اودھ یونیورسٹی کے طور پر تبدیل کر دیا گیا ۔[2] ابتدائی طور پر یونیورسٹی نے سول لائنز فیض آباد میں رینٹل عمارت میں اپنا دفتر شروع کیا۔ایک سال کے رسمی دفتر کے لیے زمین کے حصول کے عمل کا آغاز 1976 میں شروع ہوا۔ آخر میں، ریاست کے بعد کے صدر اور گورنر گورنر جی.ڈی. تاپسے نے 2 مئی 1978 کو یونیورسٹی کی موجودہ انتظامی عمارت کی بنیاد رکھی۔[3]

کیمپس اور بنیادی ڈھانچےترميم

اودھ یونیورسٹی کا رقبہ 112.24 ایکڑ علاقے پر پھیلا ہے۔ اس میں 23 عمارتیں شامل ہیں جن میں انتظامی عمارتیں، چانکیہکے نام سے موسوم انتظامیہ کی عمارت، امتحان ہال، ایک زیر تعمیر آڈیٹوریم، صحت مرکز، مرکزی لائبریری، داخلہ امتحان سیل، فزکس اور الیکٹرانکس کی عمارت، مہمان گھر، آئی ٹی مرکز وغیرہ شامل ہیں۔چار لڑکوں کے میزبان اور فیکلٹی ہاؤسنگ ہیں۔[4]

محکمہ اورانسٹی ٹیوٹترميم

  • انجینئری ٹیکنالوجی کے انسٹی ٹیوٹ (IET)
  • الیکٹرانکس اینڈ مواصلاتی انجینئری ڈپارٹمنٹ
  • مکینیکل انجینئری ڈپارٹمنٹ
  • کمپیوٹر سائنس اور انجنیئرنگ ڈپارٹمنٹ
  • انفارمیشن ٹیکنالوجی کےڈپارٹمنٹ
  • ماسٹر آف کمپیوٹر آف ایپلی کیشن (.M.C.A)
  • بزنس مینجمنٹ اور انٹرپرائز کی ڈپارٹمنٹ
  • ماس مواصلات اور صحافیت کے سیکشن
  • طبیعیات اور الیکٹرانکس ڈپارٹمنٹ
  • ریاضی اور اعداد و شمار کے سیکشن
  • بایو کیمسٹری ڈپارٹمنٹ
  • مائکرو بولوجیولوجی ڈپارٹمنٹ
  • ماحولیاتی سائنس کے محکمہ
  • اقتصادیات اور دیہی ترقی کے سیکشن
  • تاریخ ثقافت اور آثار قدیمہ کے محکمہ
  • بالغ، مسلسل اور توسیع کی تعلیم کا محکمہ
  • ماسٹر سوشل ماسٹر ڈپارٹمنٹ
  • جسمانی تعلیم کا محکمہ
  • بی ایس سی سی زراعت کے سیکشن[5]

پروگرامترميم

اودھ یونیورسٹی مندرجہ ذیل کورس میں انڈرگریجویٹ اور گریجویٹ کورسز پیش کرتا ہے۔[6]

انڈرگریجویٹترميم

  • بیچلر آف آرٹ
  • بزنس ایڈمنسٹریشن (بی بی اے)
  • بیچلر آف کمپیوٹر ایپلی کیشنز (بی سی اے)
  • بیچلر آف لائبریری اینڈ انفارمیشن سائنس (بی ایل. سی ایس سی)
  • بیچلر آف ٹیکنالوجی
  • جسمانی تعلیم کے بیچلر (بی پی ای ڈی)
  • بیچلر سائنس (بی ایس سی)

گریجویٹترميم

  • ماسٹر آف سائنس (ایم ایس سی)
  • ماسٹر آرٹس (ایم اے.)
  • ماسٹر لائبریری اور انفارمیشن سائنسز (ایم ایل آئی ایس سی)
  • ماسٹر آف سوشل کام
  • سیاحت آف ماسٹر ایڈمنسٹریشن
  • فیشن ڈیزائننگ میں ڈپلوما
  • ماسٹر فیزیکل تعلیم (ایم پی.ڈی.ڈی.)
  • ایم ایڈ

کالجترميم

اودھ یونیورسٹی سے گیارہ اضلاع کے سینکڑوں کالج ملحق ہے ۔ بہرائچ امبیڈکر نگر، امیٹھی، بلرام پور، بارہ بنکی،، فیض آباد، گونڈہ، لکھنؤ، پرتاپ گڑھ، شراوستی اور سلطان پورقابل ذکر ہیں۔[7]

  • کسان ڈگری کالج بہرائچ[8]
  • نندنی نگر ڈگری کالج
  • پی ٹی. رام لکھن شکلا راجکیہ گریجویٹ کالج الاپور
  • RMRS پی جی کالج
  • SLJB پی جی کالج
  • سری رامچندر سنگھ مہیایایا، لوہا سارہیا

بیرونی روابطترميم

حوالہ جاتترميم