بین الاقوامی کرکٹ کونسل

بین الاقوامی کرکٹ کونسل (International Cricket Council) کرکٹ کی انتظامیہ کا نام ہے۔ جو 1909ء میں برطانیہ، آسٹریلیا اور جنوبی افریقہ کے نمائندگان کی طرف سے امپیرئیل کرکٹ کانفرنس کے نام سے شروع کی گئی۔ 1965ء میں اس کا نام تبدیل کر کے انٹرنیشنل کرکٹ کانفرنس رکھا گیا پھر 1989ء میں اس کا نام پھر سے تبدیل کر کے بین الاقوامی کرکٹ کونسل رکھا گیا۔

بین الاقوامی کرکٹ کونسل
International Cricket Council
ICC
International Cricket Council (logo).svg
International Cricket Council members (by status) 2017.svgایسوسی ایٹ ممبران، ون ڈے اسٹیٹس کے ساتھ:

     فل رکن      ایسوسی ایٹ ممبران کو ون ڈے اسٹیٹس کے ساتھ      ایسوسی ایٹ رکن      سابقہ ​​یا معطل ممبران

     رکن نہیں
مخففICC
مقصدکرکٹ فار گڈ.
پیشروامپیریل کرکٹ کانفرنس (1909–1965)
بین الاقوامی کرکٹ کانفرنس (1965–1989)
قیام15 جون 1909؛ 112 سال قبل (1909-06-15)
قسمFederation of national associations
صدر دفاترFlag of متحدہ عرب امارات دبئی, متحدہ عرب امارات (2005-تاحال)
Flag of مملکت متحدہ لندن, مملکت متحدہ (1909-2005)[1]
ارکان
ارکان انٹرنیشنل کرکٹ کونسل
باضابطہ زبانs
انگریزی
Flag of نیوزی لینڈ Greg Barclay[2][3]
Deputy Chairman
Flag of سنگاپور Imran Khwaja[4]
CEO
Flag of آسٹریلیا Geoff Allardice[5]
(Interim)
آمدن(2018[6])
GBP£40.7 ملین
یا INR₹3.97 بلین
یا AUD$74.09 ملین
ویب سائٹwww.icc-cricket.com

بین الاقوامی کرکٹ کونسل کے 104 ارکان ہیں۔ جن میں سے 12 ارکان وہ ہیں جو ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے کی حیثیت رکھتے ہیں ان کو فل ارکان کا نام دیا گیا ہے۔ 92 ارکان ایسوسی ایٹ ارکان ہیں۔ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل ہر قسم کے کرکٹ کے ٹورنامنٹ یا مقابلوں کو ترتیب دیتی ہے۔

بین الاقوامی کرکٹ کونسل کا صدر مقام دبئی میں واقع ہے۔

ارکانترميم

ارکان انٹرنیشنل کرکٹ کونسل

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے ارکان کو تین گروہ میں تقسیم کیا جاتا ہے۔ فل رکن (Full Members) (ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے والے ممالک)، ایسوسی ایٹ رکن (Associate Members) اور افیلی ایٹ رکن (Affiliate Members)۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے ارکان ممالک کی تعداد 104 ہے۔ جن میں سے 12 فل رکن، 92 ایسوسی ایٹ رکن ہیں۔

فل رکنترميم

مکمل ممبران-ٹیموں کی بارہ گورننگ باڈیز جن کو انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے اندر رائے دہندگی کے مکمل حق حاصل ہیں اور وہ ٹیسٹ کے باضابطہ میچ کھیلتے ہیں۔

ٹیم علاقہ رکنیت کی تاریخ
  انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ Europe 1909
  Australia East Asia-Pacific 1909
  South Africa Africa 1909
  ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ Americas 1926
  نیوزی لینڈ کرکٹ East Asia-Pacific 1926
  بھارتی کرکٹ کنٹرول بورڈ Asia 1926
  پاکستان کرکٹ بورڈ Asia 1952
  Sri Lanka Asia 1981
  Zimbabwe Africa 1992
  بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ Asia 2000
  Ireland Europe 2017
  Afghanistan Asia 2017

ایسوسی ایٹ ممبر-ان ممالک میں 92 گورننگ باڈیز جہاں کرکٹ مضبوطی سے قائم اور منظم ہے ، لیکن انہیں ابھی تک مکمل رکنیت نہیں دی گئی ہے۔

آئی سی سی ورلڈ درجہ بندیترميم

مردوں کی ٹیموں کی درجہ بندی ( 22 جون 2021 تک ، ٹاپ 12 ممالک[7][8][9])

درجہ ٹیسٹ ون ڈے انٹرنیشنل ٹی20 انٹرنیشنل
1   نیوزی لینڈ   نیوزی لینڈ   انگلستان
2   بھارت   آسٹریلیا   بھارت
3   انگلستان   بھارت   نیوزی لینڈ
4   آسٹریلیا   انگلستان   پاکستان
5   پاکستان   جنوبی افریقا   آسٹریلیا
6   جنوبی افریقا   پاکستان   جنوبی افریقا
7   ویسٹ انڈیز   بنگلادیش   افغانستان
8   سری لنکا   ویسٹ انڈیز   سری لنکا
9   بنگلادیش   سری لنکا   بنگلادیش
10   زمبابوے   افغانستان   ویسٹ انڈیز
11 -   نیدرلینڈز   زمبابوے
12 -   آئرلینڈ   آئرلینڈ

خواتین کی ٹیم کی درجہ بندی ( 30 مئی 2021 ء تک ، ٹاپ 12 ممالک[10])

درجہ ون ڈے انٹرنیشنل ٹی20 انٹرنیشنل
1   آسٹریلیا   آسٹریلیا
2   جنوبی افریقا   انگلستان
3   انگلستان   بھارت
4   بھارت   نیوزی لینڈ
5   نیوزی لینڈ   جنوبی افریقا
6   ویسٹ انڈیز   ویسٹ انڈیز
7   پاکستان   پاکستان
8   بنگلادیش   سری لنکا
9   سری لنکا   بنگلادیش
10   آئرلینڈ   آئرلینڈ
11 -   تھائی لینڈ
12 -   زمبابوے
  • Reference: [2], 12 March 2021

حوالہ جاتترميم

  1. [1]
  2. "Greg Barclay elected as Independent ICC Chair". International Cricket Council. اخذ شدہ بتاریخ 25 نومبر 2020. 
  3. "Barclay confirmed as the new chairman of ICC". The Telegraph. اخذ شدہ بتاریخ 08 جولا‎ئی 2021. 
  4. "Imran Khwaja beats Ricky Skerritt to remain ICC's deputy chairman". CricBuzz. اخذ شدہ بتاریخ 08 جولا‎ئی 2021. 
  5. "ICC CEO statement". International Cricket Council. اخذ شدہ بتاریخ 08 جولا‎ئی 2021. 
  6. ICC Consolidated Financial Statements 31 December 2018
  7. "ICC Test Match Team Rankings International Cricket Council". www.icc-cricket.com (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 24 جون 2021. 
  8. "ICC Ranking for ODI teams International Cricket Council". www.icc-cricket.com (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 24 جون 2021. 
  9. "ICC Ranking for T20 teams International Cricket Council". www.icc-cricket.com (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 24 جون 2021. 
  10. "ICC Ranking for ODI teams International Cricket Council". www.icc-cricket.com (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 30 مئی 2021. 
  یہ ایک نامکمل مضمون ہے۔ آپ اس میں اضافہ کر کے ویکیپیڈیا کی مدد کر سکتے ہیں۔