رخسانہ پروین (پیدائش 5 مئی 1992) [1] جو رخسانہ پروین کے نام سے بھی جانی جاتی ہیں [2] پاکستان کی خاتون باکسر ہیں۔ سنہ 2016 میں، وہ گوہاٹی، ہندوستان میں ہونے والے ساؤتھ ایشین گیمز میں شریک ہونے پر، وہ دو دیگر ٹیم کے ساتھیوں کے ساتھ بین الاقوامی مقابلے میں حصہ لینے والی پہلی خواتین باکسر بن گئیں۔ [3] ایشین گیمز میں بھیجی گئی پہلی ٹیم میں بھی وہ شامل تھیں۔

ذاتی معلومات
مکمل نامرخسانہ پروین
قومیتپاکستانی
پیدائش5 مئی 1992ء (عمر 29 سال)
پاکستان
قد1.62 میٹر (5 فٹ 4 انچ)
وزن64 کلوگرام (141 پونڈ)
کھیل
کھیلBoxing

کیریئرترميم

پروین نے بتایا ہے کہ وہ ہندوستانی باکسر مریم کوم کی سوانح حیات والی فلم دیکھنے کے بعد باکسنگ کرنے کی تحریک کر رہی ہیں۔ [4] انہوں نے سن 2015 میں اس کھیل میں حصہ لیا تھا اور ہندوستان کے گوہاٹی میں منعقدہ 2016 میں ہونے والے ساؤتھ ایشین گیمز میں شرکت کے لئے منتخب ہونے سے قبل صرف 8 ماہ کے لئے نعمان کریم نے ان کی کوچنگ کی تھی۔

قومیترميم

پنجاب کی نمائندگی کرتے ہوئے، پروین نے 2018 میں لاہور میں منعقدہ پہلی قومی ویمن باکسنگ چیمپینشپ میں ہلکے وزن کے زمرے میں سونے کا تمغہ جیتا تھا۔ [5]

بین اقوامیترميم

ساؤتھ ایشین گیمزترميم

پروین کی کوچنگ شہناز کمال [6] کررہے تھے جب ان کی خوشی بانو اور صوفیہ جاوید کے ساتھ مل کر پاکستان باکسنگ فیڈریشن نے نعرہ لگایا تھا اور ہندوستان کے گوہاٹی میں منعقدہ 2016 میں ہونے والے جنوبی ایشین گیمز میں شرکت کے لئے ٹیم میں شامل کیا گیا تھا۔ پروین 60 میں سیمی فائنل میں پہنچ گئیں کلوگرام کیٹیگری میں اور کانسی کا تمغہ جیتا۔ [7] اس تمغے کے ساتھ، وہ باکسنگ میں بین الاقوامی تمغہ جیتنے والی (صوفیہ جاوید کے بعد) دوسری پاکستانی خاتون بن گئیں۔ نیپال کے کھٹمنڈو میں 2019 میں ہونے والے ساؤتھ ایشین گیمز میں پروین نے ایک اور کانسی کا دعویٰ کرتے ہوئے اپنی کارکردگی کا اعادہ کیا لیکن اس بار 64 میں کلو کیٹیگری میں شامل ہو پائیں۔ [8]

ایشین گیمزترميم

انڈونیشیا کے جکارتہ میں منعقدہ 2018 ایشین گیمز کی تیاری کے لئے، پروین کے ساتھ پانچ دیگر خواتین دارالحکومت اسلام آباد میں منعقدہ تربیتی کیمپ کا حصہ تھیں۔ [9] اس کے بعد وہ رضیہ بانو کے ساتھ براعظم سطح پر مقابلہ کرنے والی پاکستان کی پہلی ٹیم کے حصے کے طور پر [10] منتخب ہوئی جہاں انہوں نے 60 کلو کیٹیگری میں حصہ لیا۔ [11] [12] [13] 16 کے راؤنڈ میں وہ ہندوستانی باکسر پیویترا سے ہار گئیں۔ [14]

حوالہ جاتترميم

  1. "Biography, Olympic Council of Asia". www.ocagames.com. اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2020. 
  2. Aug 25، PTI / Updated:؛ 2018؛ Ist، 18:55. "Asian Games: Boxer Pavitra beats Pakistan's Rukhsana Parveen to make it to quarters". Mumbai Mirror (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2020. 
  3. "Pakistan to hold first-ever women boxing championship | Pakistan Today". www.pakistantoday.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2020. 
  4. Service، Tribune News. "Pak women pugilists inspired by Mary Kom". Tribuneindia News Service (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 15 نومبر 2020. 
  5. "Punjab dominate National Women Boxing". www.thenews.com.pk (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2020. 
  6. "Women boxers warm up for Pakistan's Provincial Games". Arab News (بزبان انگریزی). 2018-03-13. اخذ شدہ بتاریخ 15 نومبر 2020. 
  7. 12th SAF Games - Results Punjab Sports Board. Retrieved 14 November 2020
  8. "Boxing". South Asian Games Nepal 2019 (بزبان انگریزی). 16 نومبر 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2020. 
  9. "Training camp of women boxers underway in Islamabad". www.radio.gov.pk (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 15 نومبر 2020. 
  10. Sports، A. R. Y. (2018-08-10). "PBF announces eight members boxing team for Asian Games 2018". ARYSports.tv. اخذ شدہ بتاریخ 15 نومبر 2020. 
  11. "Pakistan's women boxing team will be done a historical debut in the upcoming Asian Games". ASBCNEWS (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2020. 
  12. "Olympic Council of Asia". www.ocagames.com. اخذ شدہ بتاریخ 14 نومبر 2020. 
  13. "ASIAN GAMES: Rukhsana, Razia named in boxing team". www.thenews.com.pk (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 15 نومبر 2020. 
  14. Aug 25، PTI / Updated:؛ 2018؛ Ist، 19:03. "Asian Games: Boxer Pavitra beats Pakistan's Rukhsana Parveen to make it to quarters". Pune Mirror (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 15 نومبر 2020.