علم مصطلح الحديث

اقسامِ حدیث باعتبار مُسند الیہ

حدیث قدسی  · حدیث مرفوع
حدیث موقوف  ·
حدیث مقطوع

اقسامِ حدیث باعتبار تعدادِ سند

حدیث متواتر  · حدیث احاد

اقسامِ اُحاد باعتبار تعدادِ سند

حدیث مشہور  · حدیث عزیز  · حدیث غریب

اقسامِ اُحاد باعتبار قوت و ضعف

حدیثِ مقبول  · حدیثِ مردود

اقسامِ حدیثِ مقبول

حدیثِ صحیح  · حدیثِ صحیح لذاتہٖ · حدیثِ صحیح لغیرہٖ
حدیثِ حسن  ·
حدیثِ حسن لذاتہٖ · حدیثِ حسن لغیرہٖ

اقسامِ حدیثِ مردود

حدیث ضعیف
حدیثِ مردود بوجہ سقوطِ راوی
حدیثِ مردود بوجہ طعنِ راوی

اقسامِ حدیثِ مردود بوجہ سقوطِ راوی

حدیث مُعلق  · حدیث مُرسل
حدیث مُعضل  ·
حدیث منقطع
حدیث مدلس  ·
حدیث مرسل خفی
حدیث معنعن

اقسامِ حدیثِ مردود بوجہ طعنِ راوی

حدیث موضوع  · حدیث متروک
حدیث منکر  ·
حدیث معلل

اقسامِ حدیثِ معلل

حدیث مدرج  · حدیث مقلوب
حدیث مزید فی متصل الاسناد  ·
حدیث مضطرب
حدیث مصحف  ·
حدیث شاذ

طعنِ راوی کے اسباب

مخالفتِ ثقات  · جہالۃ بالراوی
بدعت  ·
سوءِ حفظ

اقسامِ کتبِ حدیث

اربعین  · سنن  · جامع  · مستخرج  · جزو  · مستدرک  · معجم

دیگر اصطلاحاتِ حدیث

اعتبار  · شاہد  · متابع
متصل  ·
متفق علیہ  · مسند · واضح
مسلسل بالید  ·
مسلسل بالاولیہ  · مسلسل بالحلف

علم حدیث میں اس سے مراد حدیث کا وہ خاص شعبۂ علم ہے کہ جس میں سلسلہ روایت اور ضبط حدیث پر بحث ہوئی ہے کہ راوی نے اپنے شیخ سے حدیث کس طرح اور کن الفاظ کے ساتھ روایت کی ہے۔
محدثین نے اس علم کے جو اصول اور قواعد و ضوابط بیان کیے ہیں، ان پر کسی بھی روایت کو پرکھ کر بخوبی اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ بیان کردہ حدیث صحت کے کس معیار کی حامل ہے۔
اس علم کے اصول اور قواعد و ضوابط درج ذیل ہیں۔

  • راوی معروف الحال ہو۔
  • راوی صادق القول اور دیانت دار ہو۔
  • راوی بات کو سمجھنے کی اہلیت رکھتا ہو۔
  • راوی کا حافظہ اچھا ہو۔
  • راوی کو مبالغہ کرنے، خلاصہ نکال کر بیان کرنے یا روایت میں کسی اور طرح کا تصرف کرنے کی عادت نہ ہو۔
  • راوی کا بیان کردہ روایت سے اپنا کوئی خاص ذاتی تعلق نہ ہو کہ جس سے گمان ہو کہ اس سے اس کی روایت متاثر ہو سکتی ہے۔
  • دو اوپر نیچے کے راویوں کا آپس میں ملنا، زمانہ یا حالات کے لحاظ سے قابل تقسیم ہو۔
  • روایت کی تمام کڑیاں محفوظ ہوں اور کوئی راوی اوپر سے، درمیان سے یا نیچے سے چُھٹا ہوا نہ ہو۔

اس فن پر مشتمل کتابوں کے نام یہ ہیں: