نزاکت علی خان

پاکستانی کلاسیکی گائیک

استاد نزاکت علی خان (پیدائش: 1932ء - وفات: 14 جولائی، 1983ء) پاکستان سے تعلق رکھنے والے شام چوراسی گھرانے کے نامور کلاسیکی گائیک اور استاد سلامت علی خان کے بڑے بھائی تھے۔

استاد نزاکت علی خان
صدارتی اعزاز برائے حسن کارکردگی
معلومات شخصیت
پیدائش 1932ء
شام چوراسی، ضلع ہوشیارپور، صوبہ پنجاب
وفات جولائی 14، 1983(1983-07-14)ء
راولپنڈی، پاکستان
قومیت Flag of پاکستانپاکستانی
عملی زندگی
پیشہ گلو کار  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ شہرت گلوکاری
صنف کلاسیکل، دھرپد، خیال
اعزازات
صدارتی اعزاز برائے حسن کارکردگی

حالات زندگیترميم

استاد نزاکت علی خان 12 دسمبر، 1934ء کو شام چوراسی، ضلع ہوشیارپور، صوبہ پنجاب (برطانوی ہند) میں پیدا ہوئے۔ شام چوراسی نامی قصبہ موسیقی کے گھرانے کی وجہ سے پورے برصغیر پاک و ہند میں مشہور ہے۔ ان کا سلسلہ نسب استاد چاند خان، سورج خان سے ملتا ہے جو دربار اکبری کے نامور گائیک اور میاں تان سین کے ہم عصر تھے۔ استاد نزاکت علی خان کے والد استاد ولایت علی خان بھی اپنے زمانے کے نامور موسیقار تھے اور دھرپد گائیکی میں اختصاص رکھتے تھے۔[1]۔

استاد نزاکت علی خان نے اپنے چھوٹے بھائی استاد سلامت علی خان (1934ء۔ 2001ء) کے ساتھ اپنے والد ولایت علی خان سے اکٹھے تعلیم حاصل کی اور نہایت کم عمری میں اپنی گائیکی کی وجہ سے ہندوستان بھر میں مشہور ہو گئے۔ تقسیم ہند کے بعد انہوں نے پہلے ملتان اور پھر لاہور میں اقامت اختیار کی اور پاکستان کے معروف موسیقاروں اور گائیکوں میں شمار ہونے لگے۔[1]

اعزازاتترميم

حکومت پاکستان نے استاد نزاکت علی خان کی فنی خدمات کے اعتراف کے طور پر انہیں صدارتی اعزاز برائے حسن کارکردگی عطا کیا۔[1]

وفاتترميم

استاد نزاکت علی خان 14 جولائی، 1983ء کو راولپنڈی، پاکستان میں وفات پاگئے۔ وہ لاہور میں آسودہ خاک ہیں۔[1]

حوالہ جاتترميم

  1. ^ ا ب پ ت ص 544، پاکستان کرونیکل، عقیل عباس جعفری، ورثہ / فضلی سنز، کراچی، 2010ء