ہلال جرٔات نشان حیدر کے بعد پاکستان کا دوسرا بڑا فوجی اعزاز ہے۔ یہ اعزاز 1957ء میں پاکستان کے اسلامی جمہوریہ بننے کے بعد شروع کیا گیا۔ یہ اعزاز افواج پاکستان کو جنگ میں بہادری اور جرأت کے مظاہرہ پر دیا جاتا ہے۔

ہلالِ جرأت
Official Army Release of the Hilal-i-Ju'rat.jpg
عطا کردہ پاکستان
قسمعسکری اعزاز
اہلیتافواج
(بری فوج, بحریہ اور فضائیہ)
عطا برائے"...فضائی، بری اور فضائیہ افواج کے پہادر سپاہیوں کو دیا جاتا ہے"
صورتحالموجودہ اعزاز
فیتۂ ہک2
عرفیتHJ
شماریات
تاسیس16th مارچ 1957ء[1][2]
دیگر اعزاز
اعلیٰNishan Haider Ribbon.gif
(نشان حیدر)
ادنیSitara Jurat Ribbon.gif
(ستارۂ جرأت)
Tamgha Jurat Ribbon.gif
(تمغۂ امتیاز)

تفصیلترميم

یہ اعزاز پاکستان کی فضائی، بری اور بحری فوج کے بہادر سپاہیوں کو دیا جاتا ہے۔ یہ اعزاز برطانیہ کے "برٹش ڈسٹنگواشڈ سروس آرڈر" (British Distinguished Service Order) اور امریکا کے "یونائیٹڈ سٹیٹس ڈسٹنگواشڈ سروس کراس (United States Distinguished Service Cross) کے برابر ہے۔ اس اعزاز کے ہمراہ بیس ہزار روپے یا پانچ ایکڑ اراضی بھی دی جاتی ہے۔

شکل و صورتترميم

ہلال جرإت سونے كے تمغے كی شكل كا ہوتا ہے جس كی پشت پر عربی رسم الخط میں ہلال جرإت كے الفاظ كندہ ہوتے ہیں۔ اس كے ساتھ یكساں ناپ كی سرخ، سبز اور سرخ رنگ کی 3 پٹیاں آویزاں ہوتی ہیں۔

اعزاز حاصل کرنے والےترميم

ہلال جرأت حاصل کرنے والے پہلے چار سپاہیوں میں

  • _بریگیڈیر حیاء الدین،
  • _بریگیڈیر محمد اسلم خان،
  • _بریگیڈیر نواب زادہ شیر علی خان اور *_میجر جنرل ایوب خان"' شامل ہیں۔

اعزاز حاصل کرنے والوں کی فہرستترميم

پاک فوجترميم

پاکستان/ بنگلہ دیش فوجترميم

پاک فضائیہترميم

  • ایئر مارشل نور خان
  • گروپ کیپٹن ظفر مسعود
  • سکوارڈن لیڈر سرفراز احمد رفیقی
  • ایئر مارشل عبد الرحیم خان
  • ایئر کموڈور انعام الحق خان

پاک بحریہترميم

  • وائس ایڈمرل افضل رحمان خان
  • ریئر ایڈمرل محمد شریف

مزید دیکھیےترميم

بیرونی روابطترميم

حوالہ جاتترميم

  1. Robertson، Megan. "Crescent of Courage (Hilal-i-Jur'at)". Medals.org. 07 جنوری 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 06 جون 2009.